tanwir ul zafar

Members
  • Content count

    5
  • Joined

  • Last visited

Community Reputation

0 Neutral

About tanwir ul zafar

  • Rank
    Newbie

Previous Fields

  • Madhab
    Shia
  1. pehli baat to yay kay jub ap jamaat ahmadiyya par hamla kar rahay hein lekin Jammat ahmadiyya ki taraf say jo jawab dya jay us ko ap edit kar kay delete kar detay hein kay ji Ahmadiyon ki website ka link nahin dena to kya is say yay sabit nahin hota kay ap log sach chupana chahtay hein??? doosri baat ap nay kaha kay ji pehlay hum yay dekh lein kay ap kay pas konsay scholar authentic hein to arz hay kay yay tamam scholar aur in kay firqay ap kay sath 1974 mein qaumi assembly mein baithay thay us waqt ap nay kyon nahin kaha kay yay to authentic hi nahin hein yahin say 73 firqon wali hadith sabit ho jati hay kay poori ho gai kay 72 jammat ahmadiyya kay khilaf to akthay hein lekin apas mein bahmi phoot aur ikhtalaf is qadar hay kay aik doosray kay hawalay bhi bardasht nahin kartay
  2. ہاں مشرکین ملاعنہ منکرین بعث اسے محال جانتے ہیں اور دربارہ مسیح علیہ الصلوٰۃ والسلام قادیانی بھی اس قادر مطلق عزّ جلالہ کو معاذ اﷲ صراحۃً عاجز مانتا اور دافع البلاء کے صفحہ ۳۴ پر یوں کفر بکتا ہے: خدا ایسے شخص کو پھر دنیا میں نہیں لا سکتا جس کے پہلے فتنے ہی نے دنیا کو تباہ کردیا ہے۵؂۔ (۵؂دافع البلاء مطبوعہ ربوہ ص ۳۴) Is link par dafay ul bala kay safhat ki kul taadad dekh lein Ruhani khazain safa 244 par is ka safa number 24 hay aur yay khatam ho rahi hay aur ap hawala day rahay hein safa number 32 ka ap kay han safa number 32 kaisay ban gya?? ************************************************************************* (۵؂دافع البلاء مطبوعہ ربوہ ص ۳۴) مشرک و قادیانی دونوں کے رد میں اﷲ عزوجل فرماتا ہے:اَفَعَیینَا بِا لْخَلْقِ الْاَوَّلِ بَلْ ھُمْ فیِ لَبِسٍ مِّنْ خَلْقٍ جَدِید۱؂۔ (تو کیا ہم پہلی بار بنا کر تھک گئے بلکہ وہ نئے بننے سے شُبہ میں ہیں۔ت) (۱؂القرآن الکریم ۵۰/ ۱۵) Bhai yay ayat to hamaray haq mein ja rahi hay hum to kehtay hein kay Allah tallah kay lyay koi mushkil nahin kay wo nahin cheez banay balkay us ki yay sunnat hay kay woh kisi puranay ko wapas nahin bhejta so Hadhrat Messiah Nasri as jo purranay hein aur Ummat-e-Muswaya kay Nabi hein woh dubara nahin ayein gay balkay Ummat-e-Muhammadya mein say Ummat-E-Mohammadya kay lyay aik nay Masih nay maboos hona tha aur woh ho gay hein (۱؂القرآن الکریم ۵۰/ ۱۵) جب صادق و مصدوق صلی اللہ تعالی علیہ وسلم نے ان کے نزول کی خبر دی اور وہ اپنی حقیقت پر ممکن و داخل زیر قدر ت و جائز، تو انکار نہ کرے گا مگر گمراہ۔ (۳) اگر وہ حکم افراد کو بھی عام مانا جائے تو موت بعدِ استیفائے اجل کے لئے ہے، اس سے پہلے اگر کسی وجہ خاص سے اماتت ہو تو مانع اعادت نہیں بلکہ استیفائے اجل کے لئے ضرور اور ہزاروں کے لئے ثابت ہے، قال اﷲ تعالٰی:اَلَمْ تَرَ اِلَی الَّذِین خَرَجُوْا مِنْ دِیارِھِمْ وَھُمْ اُلُوف حَذَرَ الْمَوْتِ فَقَالَ لَھُمُ اﷲ مُوْتُوْا ثُمَّ اَحْیاھُمْ۲؂ (۲؂القرآن الکریم ۲/ ۲۴۳) Is mein koi shak nahin kay sadiq o masdooq sa nay un kay nazool ki baat kit hi magar Nazool ka matlab kya hay yay samajhnay kay lyay haemin Quran-e-Majid mein lafzay Nazool ka zikar dekhna paray ga kay kaisay hua hay ثُمَّ اَنۡزَلَ اللّٰہُ سَکِیۡنَتَہٗ عَلٰی رَسُوۡلِہٖ وَ عَلَی الۡمُؤۡمِنِیۡنَ وَ اَنۡزَلَ جُنُوۡدًا لَّمۡ تَرَوۡہَا وَ عَذَّبَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا ؕ وَ ذٰلِکَ جَزَآءُ الۡکٰفِرِیۡنَ ﴿۲۶﴾ ﴿009:026﴾ ‏ [جالندھری]‏ پھر خدا نے اپنے پیغمبر صلی اللہ علیہ وسلم پر اور مومنوں پر اپنی طرف سے تسکین نازل فرمائی اور (تمہاری مدد کو فرشتوں کے) لشکر جو تمہیں نظر نہیں آتے تھے (آسمان سے) اتارے اور کافروں کو عذاب دیا۔ اور کفر کرنے والوں کی یہی سزا ہے۔ ‏ ‎[Abdullah Yousuf Ali]‎ But Allah did pour His calm on the Messenger and on the Believers, and sent down forces which ye saw not: He punished the Unbelievers; thus doth He reward those without Faith. pas in sab say yay sabit hota hay kay nazool say maurad asman say nazool nahin ha
  3. baqi ka jawab pura karnay say pehlay mein logon kay samnay yay haqeeqat byan karna chahta hoon kay apnay pichlay comment mein main nay sunnion ki website par maujood Quran-e-Karim ki ayat ka tarjama dikhanay kay lyay link dya tha is link ko delete kar dya gya aur waja yay batai gai kay sunni website ka link denay ki ijazat nahin is ki kya wajah hay bhai kya ap haqeeqat ko chupana chahtay hein?? agar sachay hein to is link ko qaim rakhein لۡ یَتَوَفّٰىکُمۡ مَّلَکُ الۡمَوۡتِ الَّذِیۡ وُکِّلَ بِکُمۡ ثُمَّ اِلٰی رَبِّکُمۡ تُرۡجَعُوۡنَ ﴿٪۱۱﴾ ﴿032:011﴾‏ [جالندھری]‏ کہہ دو کہ موت کا فرشتہ جو تم پر مقرر کیا گیا ہے تمہاری روحیں قبض کر لیتا ہے پھر تم اپنے پروردگار کی طرف لوٹائے جاؤ گے Quran with tafseer 1.0 software downloadable from cnet downloads کہہ دو تمہاری جان موت کا وہ فرشتہ قبض کرے گا جو تم پر مقرر کیا گیا ہے پھر تم اپنے رب کے پاس لوٹائے جاؤ گے (۱۱) آپ فرما دیجیئے کہ تمہاری جان موت کا فرشتہ قبض کرتا ہے جو تم پر متعین ہے پھر تم اپنے رب کی طرف لوٹا کر لائے جاؤ گے۔ (۱۱) کہہ دو کہ موت کا فرشتہ جو تم پر مقرر کیا گیا ہے تمہاری روحیں قبض کر لیتا ہے پھر تم اپنے پروردگار کی طرف لوٹائے جاؤ گے (۱۱) urdu tarjama Ahmad Ali, Ashraf Ali thanwi aur jalandhari in tarjamon ko ap yahan say dekh saktay hein is kay baad mein nay yay link dya thaaur jo scientific research ka mein nay guzashta comment mein zikar kya tha woh yay hay ya to woh link bhi delete kar dya gya ya mein dena bhool gya wallaho aalamo bahar hal yahan par day raha hoon is ko dekhein is kay ilawa Hadhrat Eisa as nay Kashmir ki taraf hijrat ki yay nahin is ka saboot bhi dekhein khood esai kya keh rahay hein aur Imam bukhari ka kaul bhi (فائدہ نمبر ۴ میں آئے گا کہ نزول حضرت عیسٰی علیہ السلام اہلسنّت کا اجماعی عقیدہ ہے) نہ ہرگز وفاتِ مسیح ان مرتدین کو مفید، فرض کر دم کہ رب عزوجل نے ان کو اس وقت وفات ہی دی، پھر اس سے انکا نزول کیونکر ممتنع ہوگیا؟ Bhai Hadhrat Eisa as kay nazool ki to Huzoor saw nay khushkhabri di lekin han asman say nazool ka kahin zikar nahin hay na Quran sharif mein aur na ahadith mein. Bhai ap isi lyay hi wafat-e-Masih par bat karnay say kutratay hein kyonkay Hadhrat Eisa as ki wafat sabit ho janay say ap ka yay aqeedah kay usi Hadhrat Eisa as nay wapas ana hay jo bani Israel kay Nabi thay batil sabit ho jata hay. Bhai unhi Eisa as ka asman say Nazool is lyay mumtanay ho gya kay ٱللَّهُ يَتَوَفَّى ٱلۡأَنفُسَ حِينَ مَوۡتِهَا وَٱلَّتِى لَمۡ تَمُتۡ فِى مَنَامِهَا‌ۖ فَيُمۡسِكُ ٱلَّتِى قَضَىٰ عَلَيۡہَا ٱلۡمَوۡتَ وَيُرۡسِلُ ٱلۡأُخۡرَىٰٓ إِلَىٰٓ أَجَلٍ۬ مُّسَمًّى‌ۚ إِنَّ فِى ذَٲلِكَ لَأَيَـٰتٍ۬ لِّقَوۡمٍ۬ يَتَفَكَّرُونَ (٤٢ surat al -zumar ayat 42 خدا لوگوں کے مرنے کے وقت ان کی روحیں قبض کرلیتا ہے اور جو مرے نہیں (ان کی روحیں) سوتے میں (قبض کرلیتا ہے) پھر جن پر موت کا حکم کرچکتا ہے ان کو روک رکھتا ہے اور باقی روحوں کو ایک وقت مقرر تک کے لئے چھوڑ دیتا ہے۔ جو لوگ فکر کرتے ہیں ان کے لئے اس میں نشانیاں ہیں (۴۲) yay tarjama Urdu Jalandhari-Audio hay jo yahan par dya gya hay is ko yahan say dekha ja sakta hay link delete karo gay to tumhara jhoot aur sach samnay a jay ga yay yaad rakhna is ayat mein Allah tallah saf taur par farma raha hay kay jin nafson ki wafat waqay ho jati hay woh wapas nahin atay ab ap kahein gay kay nazool ki to peshangoi maujood hay to bhai asman say nazool ki kahin peshgoi maujood nahin hay han nazool ka zikar hay to ab dekhna parray ga kay nazool ka lafz Quran-e-karim mein kis tarah istamal hua hay ثُمَّ أَنزَلَ عَلَيۡكُم مِّنۢ بَعۡدِ ٱلۡغَمِّ أَمَنَةً۬ نُّعَاسً۬ا يَغۡشَىٰ طَآٮِٕفَةً۬ مِّنكُمۡ‌ۖ وَطَآٮِٕفَةٌ۬ قَدۡ أَهَمَّتۡہُمۡ أَنفُسُہُمۡ يَظُنُّونَ بِٱللَّهِ غَيۡرَ ٱلۡحَقِّ ظَنَّ ٱلۡجَـٰهِلِيَّةِ‌ۖ يَقُولُونَ هَل لَّنَا مِنَ ٱلۡأَمۡرِ مِن شَىۡءٍ۬‌ۗ قُلۡ إِنَّ ٱلۡأَمۡرَ كُلَّهُ ۥ لِلَّهِ‌ۗ يُخۡفُونَ فِىٓ أَنفُسِہِم مَّا لَا يُبۡدُونَ لَكَ‌ۖ يَقُولُونَ لَوۡ كَانَ لَنَا مِنَ ٱلۡأَمۡرِ شَىۡءٌ۬ مَّا قُتِلۡنَا هَـٰهُنَا‌ۗ قُل لَّوۡ كُنتُمۡ فِى بُيُوتِكُمۡ لَبَرَزَ ٱلَّذِينَ كُتِبَ عَلَيۡهِمُ ٱلۡقَتۡلُ إِلَىٰ مَضَاجِعِهِمۡ‌ۖ وَلِيَبۡتَلِىَ ٱللَّهُ مَا فِى صُدُورِڪُمۡ وَلِيُمَحِّصَ مَا فِى قُلُوبِكُمۡ‌ۗ وَٱللَّهُ عَلِيمُۢ بِذَاتِ ٱلصُّدُورِ (١٥٤ پھر خدا نے غم ورنج کے بعد تم پر تسلی نازل فرمائی (یعنی) نیند کہ تم میں سے ایک جماعت پر طاری ہو گئی اور کچھ لوگ جن کو جان کے لالے پڑ رہے تھے خدا کے بارے میں ناحق (ایام) کفر کے سے گمان کرتے تھے اور کہتے تھے بھلا ہمارے اختیار کی کچھ بات ہے؟ تم کہہ دو کہ بےشک سب باتیں خدا ہی کے اختیار میں ہیں یہ لوگ (بہت سی باتیں) دلوں میں مخفی رکھتے ہیں جو تم پر ظاہر نہیں کرتے تھے کہتے تھے کہ ہمارے بس کی بات ہوتی تو ہم یہاں قتل ہی نہ کیے جاتے کہہ دو کہ اگر تم اپنے گھروں میں بھی ہوتے تو جن کی تقدیر میں مارا جانا لکھا تھا وہ اپنی اپنی قتل گاہوں کی طرف ضرور نکل آتے اس سے غرض یہ تھی کہ خدا تمہارے سینوں کی باتوں کو آزمائے اور جو کچھ تمہارے دلوں میں ہے اس کو خالص اور صاف کر دے اور خدا دلوں کی باتوں سے خوب واقف ہے (۱۵۴ surat Al-e-Imran verse 154 ab bataein kya ap nay kabhi neend ko asman say nazil hotay dekha hay?? خَلَقَكُم مِّن نَّفۡسٍ۬ وَٲحِدَةٍ۬ ثُمَّ جَعَلَ مِنۡہَا زَوۡجَهَا وَأَنزَلَ لَكُم مِّنَ ٱلۡأَنۡعَـٰمِ ثَمَـٰنِيَةَ أَزۡوَٲجٍ۬‌ۚ يَخۡلُقُكُمۡ فِى بُطُونِ أُمَّهَـٰتِڪُمۡ خَلۡقً۬ا مِّنۢ بَعۡدِ خَلۡقٍ۬ فِى ظُلُمَـٰتٍ۬ ثَلَـٰثٍ۬‌ۚ ذَٲلِكُمُ ٱللَّهُ رَبُّكُمۡ لَهُ ٱلۡمُلۡكُ‌ۖ لَآ إِلَـٰهَ إِلَّا هُوَ‌ۖ فَأَنَّىٰ تُصۡرَفُونَ (٦) اس نے تم لوگوں کو تنِ واحد (یعنی آدمؑ سے) پیدا کیا پھر اس سے اس کا جوڑا بنایا اور (بعد اس حدوث کے) تمہارے (نفع بقا کے) لیے آٹھ نر اور مادہ چار پایوں کے پیدا کیے تمکو ماؤں کے پیٹ میں ایک کیفیت کے بعد دوسری کیفیت پر بناتا ہے تین تاریکیوں میں ․یہ ہے الله تمہارا رب اس کی سلطنت ہے اس کے سواکوئی لائق عبادت نہیں سو ان دلائل کے بعد تم کہاں (حق سے) پھرے جا رہے ہو۔ Ab bataein kay yahan par nazool ka kya tarjama ap kay maulvi sahib kar rahay hein paida karna يَـٰبَنِىٓ ءَادَمَ قَدۡ أَنزَلۡنَا عَلَيۡكُمۡ لِبَاسً۬ا يُوَٲرِى سَوۡءَٲتِكُمۡ وَرِيشً۬ا‌ۖ وَلِبَاسُ ٱلتَّقۡوَىٰ ذَٲلِكَ خَيۡرٌ۬‌ۚ ذَٲلِكَ مِنۡ ءَايَـٰتِ ٱللَّهِ لَعَلَّهُمۡ يَذَّكَّرُونَ (٢٦) اے اولاد آدمؑ کی ہم نے تمھارے لیے لباس پیدا کیا جو کہ تمھاری پردہ داریوں کو بھی چھپاتا ہے اور موجب زینت بھی ہے اور تقویٰ کا لباس یہ اس سے بڑھ کر ہے یہ الله تعالیٰ کی نشانیوں میں سے ہے تاکہ یہ لوگ یاد رکھیں yahan bhi dekhein libas ko nazil karnay ka tarjama khud ap kay maulvi sahib libas ko paida karna kar rahay hein yay tarjamay ashraf thanwi sahib kay hein http://www.quranexplorer.com/Quran/Default.aspx such ko chupanay kay lyay agar link delete karein gay to logon par wazah ho jay ga انبیاء علیہم الصلوٰۃ والسلام کی موت محض ایک آن کو تصدیق وعدہ الہٰیہ کے لئے ہوتی ہے، پھر وہ ویسے ہی حیاتِ حقیقی دنیاوی و جسمانی سے زندہ ہوتے ہیں جیسے اس سے پہلے تھے، زندہ کا دوبارہ تشریف لانا کیا دشوار؟ رسول اﷲ صلی اللہ تعالی علیہ وسلم فرماتے ہیں:اَلْاَ نْبِیاءُ اَحْیاء فِیْ قُبُوْرِھِمْ یصلُّوْنَ۱؎ترجمہ : انبیاء زندہ ہیں اپنی قبروں میں، نماز پڑھتے ہیں۔ (۱ ؎ مسند ابو یعلٰی مروی از انس رضی اﷲ تعالٰی عنہ حدیث ۳۴۱۲، موسسہ علوم القرآن بیروت۳/ ۳۷۹ Kya ap anbiya alaihumusalam ko insan nahin mantay naoozobillah?? kya un ka nafs nahin tha agar tha to Allah tallah to jaisa kay mein pehlay byan kar chuka hoon farmata hay kay jis nafs ki wafat ho jay wo wapas nahin ata agar anbiya kisi bhi tarah say is Allah tallah kay qanoon kay tehat nahin atay to us ayat mein wazah taur par byan hona chahyay tha kay saway Anbiya kay anfoos kay baqi tamam nafs kyonkay Anbiya as bahar hal insan thay aur un kay nafs bhi thay. Bhai is hadith say milti julti aik ayat bhi Quran-e-Karim mein hay jo shohada kay baray mein hay وَلَا تَقُولُواْ لِمَن يُقۡتَلُ فِى سَبِيلِ ٱللَّهِ أَمۡوَٲتُۢ‌ۚ بَلۡ أَحۡيَآءٌ۬ وَلَـٰكِن لَّا تَشۡعُرُونَ (١٥٤) اور جو لوگ خدا کی راہ میں مارے جائیں ان کی نسبت یہ نہ کہنا کہ وہ مرے ہوئے ہیں (وہ مردہ نہیں) بلکہ زندہ ہیں لیکن تم نہیں جانتے (۱۵۴) Surat Baqra verse number 154 yay tarjama urdu jalandhari audio hay dubara apna hi link lein aur bataein kay kis zindagi ka yahan par zikar ho raha hay?? roohani ya jismani agar Ap An Hadhrat saw ki hadith say maurad zahiri zindagi lay rahay hein to phir is ayat mein Shohda ki zindagi ko bhi zahiri zindagi kay taur par tasleem karna parray ga aur phir ap ko yay bhi manna paray ga kay shohda bhi wapas a saktay hein ab bataein kya tasleem kartay hein is baat ko??kyonkay agar Huzoor saw Hadith mein Anbiya ko zinda farma rahay hein to Allah tallah ayat mein shohda ko zinda farma raha hay aur unko murda kehnay ki ijazat bhi nahin day raha. doosri baat qabron mein namaz parhnay say saf zahir hay kay roohani zindagi aur roohani namaz hay kya ap bata saktay hein kay agar hadith mein jismani namaz ka zikar ho raha hay to bhai woh rakooh o sajood o qayam kaisay kartay hein phir wazooh kaisay kartay hein?? kya qabar kay andar yay sab mumkin hay?? یک شہر کے لئے ہے، بعض افراد کا بعد موت دنیا میں پھر آنا خود قرآن کریم سے ثابت ہے جیسے سیدنا عزیر علیہ الصلوٰۃ والسلام ۔قال اﷲ تعالٰی:فَاَ مَاتَہُ اﷲ مِائَۃَ عَامٍ ثُمَّ بَعَثَہ ط ۳؂ (تو اﷲ نے اسے مردہ رکھا سو برس، پھر زندہ کردیا۔ is ki tashreeh yahan say parh li jyay yahi hamara jawab hay aur waisay bhi jab pehlay Allah tallah farma raha hay kay jis nafs par maut warid ho jay usay wapas nahin bheja jata to is ayat ko usi context mein dekhna chahyay الصلوٰۃ والسلام، قال اﷲ تعالٰی:ثُمَّ اجْعَلْ عَلٰی کُلِّ جَبَلٍ مِنْھُنَّ جُزْءً ا ثُمَّ ادْعُھُنَّ یاتِینکَ سَعْیا۴؂(پھر ان کا ایک ایک ٹکڑا ہر پہاڑ پر رکھ دے، پھر انہیں بلا، وہ تیرے پاس چلے آئیں گے دوڑتے ہوئے۔ت) ayay dekhtay hein kay ap kay maulvi sahib is ka kya tarjama kartay hein اور جب ابراہیم نے (خدا سے) کہا کہ اے پروردگار مجھے دکھا کہ تو مردوں کو کیونکر زندہ کرے گا۔ خدا نے فرمایا کیا تم نے (اس بات کو) باور نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کیوں نہیں۔ لیکن (میں دیکھنا) اس لئے (چاہتا ہوں) کہ میرا دل اطمینان کامل حاصل کرلے۔ خدا نے فرمایا کہ چار جانور پکڑوا کر اپنے پاس منگا لو (اور ٹکڑے ٹکڑے کرادو) پھر ان کا ایک ٹکڑا ہر ایک پہاڑ پر رکھوا دو پھر ان کو بلاؤ تو وہ تمہارے پاس دوڑتے چلے آئیں گے۔ اور جان رکھو کہ خدا غالب اور صاحب حکمت ہے۔ (۲۶۰) ab dekhtay hein kay ayat kay asal alfaz kya hein وَإِذۡ قَالَ إِبۡرَٲهِـۧمُ رَبِّ أَرِنِى ڪَيۡفَ تُحۡىِ ٱلۡمَوۡتَىٰ‌ۖ قَالَ أَوَلَمۡ تُؤۡمِن‌ۖ قَالَ بَلَىٰ وَلَـٰكِن لِّيَطۡمَٮِٕنَّ قَلۡبِى‌ۖ قَالَ فَخُذۡ أَرۡبَعَةً۬ مِّنَ ٱلطَّيۡرِ فَصُرۡهُنَّ إِلَيۡكَ ثُمَّ ٱجۡعَلۡ عَلَىٰ كُلِّ جَبَلٍ۬ مِّنۡہُنَّ جُزۡءً۬ا ثُمَّ ٱدۡعُهُنَّ يَأۡتِينَكَ سَعۡيً۬ا‌ۚ وَٱعۡلَمۡ أَنَّ ٱللَّهَ عَزِيزٌ حَكِيمٌ۬ (٢٦٠) aur aik aik kar kay in alfaz ka tarjama kartay hein wa iz aur jab qala kaha Ibrahima Ibrahim nay Rabbay ay merray Rab arayni dikha mujhay kaifa kaisay tohyil mauta hayat deta hay murdon ko kala kaha awalum kya tum nahin tomeno aiman rakhtay qala bala kaha kyon nahin layatmain alqalbi apnay dil kay itmenan kay lyay kala fakhaz arbatan kaha pas nikal char min altair parindon mein say fasurhuna alaika phir unhein manoos kar lay apnay ap say sum aj al ala kullay jablin phir pahar par chor day minhuna juzan un meins ay har juz ko sum ud ahuna phir bulao unhein yaateenaka sayan woh jaldi kartay huay tumhari taraf chalay aein gay ab bataein is mein kya tarjama banta hay yahi nahin banta اور (کیا تُو نے اس پر بھی غور کیا) جب ابراہیم نے کہا اے میرے ربّ مجھے دکھلا کہ تُو مُردوں کو کیسے زندہ کرتا ہے۔ اُس نے کہا کیا تو ایمان نہیں لا چکا؟ اُس نے کہا کیوں نہیں مگر اس لئے (پوچھا ہے) کہ میرا دل مطمئن ہو جائے۔ اس نے کہا تُو چار پرندے پکڑ لے اور انہیں اپنے ساتھ مانوس کر لے۔ پھر ان میں سے ایک ایک کو ہر پہاڑ پر چھوڑ دے۔ پھر انہیں بُلا، وہ جلدی کرتے ہوئے تیری طرف چلے آئیں گے۔ اور جان لے کہ اللہ کامل غلبہ والا (اور) بہت حکمت والا ہے۔ ab bataein kay ap nay tukray kaisay bana dyay??
  4. صدہا درجہ سے منکر ضروریاتِ دین تھا aayay dekhtay hein kay is baray mein shadeed tareen mukhalfin Hadhrat Masih-e-Maood as kya kehtay hein MAULVI MUHAMMAD HUSSEIN BATALWI "In our opinion this book, at this time and in view of the present circumstances, is such that the like of it has not appeared in Islam up to now, while nothing can be said about the future. Its author too has been so constant in the service of Islam, with his money, life, pen and tongue, and personal experience, that very few parallels can be found in the Muslims. If anyone considers our words to be an Asian exaggeration, let him show us at least one such book which so vigorously fights all the opponents of Islam, especially the Arya and Brahamo Samaj, and let him name two or three persons who have supported Islam, not only with their wealth, lives, pen and tongue, but also by personal spiritual experience, and who have boldly thrown the challenge to all the opponents of Islam and the deniers of Divine revelation, that whoever doubts the truth of God speaking to man, he may come and observe it for himself, thus giving other religions a taste of this experience." (Isha’at as-Sunna, vol. vii, no. 6, June to August 1884, pp. 169-170) "According to the experience and observation of friend and foe alike, the author of Barahin Ahmadiyya lives by the Shari’ah of Islam, is God-fearing and truthful by habit." (ibid., p. 284) "The excellence of this book, and the benefit accruing to Islam from it, will not remain hidden to those who read it with a fair mind, or to the readers of this review. Therefore, in accordance with the Divine command, ‘Is not the reward for good but good’, all the followers of Islam, be they Ahl-i Hadith, Hanafi, Shiah or Sunni, are obliged to support this book and its printing. The author of Barahin Ahmadiyya has saved the honour of the Muslims. He has challenged the opponents of Islam throughout the world that anyone who doubts the truth of Islam should come to him and see for himself its truth by logical arguments drawn from the Quran, and by miracles of the Prophethood of Muhammad, by which he means the revelations and signs granted to the author of Barahin." (ibid., p. 348 MAULANA SANAULLAH AMRATSARI A staunch opponent of Ahmadiyyat, Molvi Sana-Ullah Amratsari wrote in his book, “Tareekh-e-Mirza” that he had such a great respect and honor for him that he used to visit him in Qadian on foot. اور اس کے پس ماندے حیات و وفاتِ سیدنا عیسٰی رسول اﷲ علی نبیّنا الکریم وعلیہ صلوات اﷲ وتسلیمات اﷲ کی بحث چھیڑتے ہیں، جو ایک فرعی مسئلہ خود مسلمانوں میں ایک نوع کا اختلافی مسئلہ ہے جس کا اقرار یا انکار کفر تو درکنار ضلال بھی نہیں YAHAN PAR AP SHAID YAY KEHNA CHAHTAY HEIN KAY AN HUZOOR SAW NAY JIS MASIH KAY ANAY KA WAADA KYA THA US KA INKAR YA IKRAR SAY KOI FARAK NAHIN PARHTA AUR IS SAY HUZOOR SAW KI KOI NAFARMANI NAHIN HOTI INA LILLAHAY WA INA ALAIHAY RAJAEOON BAQI KAL INSHALLAH
  5. +Qadyani / Ahmadi / Mirzai - Zindeek (زندیق) +usman riaz WAFAT-E-MASIH Wafat-e-Masih ko hum Ayat-e-Quranya, Ahadith aur Jadeed Scientific tehkeek say sabit karein gay Is silsalay mein pehlay mein Jammat Ahmadiyya ka aqeeda wazah kar doon kay Jammat Ahmadiyya kay nazdeeq Hadhrat Eisa as ki wafat Saleeb par nahin hui aur na hi ap as bajismay ansari asman par uthay gay balkay Allah tallah nay ap ko aik laanati maut say bachaya aur ap nay bani Israel ki gumshuda bhairon ki talash mein Kashmir ki taraf hijrat ki aur wahan par aik tabi wafat pai aur Kashmir Mohallah Khanyar mein ap as ka Mazar wakya hay QURAN E KARIM AUR HADITH اِذۡ قَالَ اللّٰہُ یٰعِیۡسٰۤی اِنِّیۡ مُتَوَفِّیۡکَ وَ رَافِعُکَ اِلَیَّ وَ مُطَہِّرُکَ مِنَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا وَ جَاعِلُ الَّذِیۡنَ اتَّبَعُوۡکَ فَوۡقَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡۤا اِلٰی یَوۡمِ الۡقِیٰمَۃِ ۚ ثُمَّ اِلَیَّ مَرۡجِعُکُمۡ فَاَحۡکُمُ بَیۡنَکُمۡ فِیۡمَا کُنۡتُمۡ فِیۡہِ تَخۡتَلِفُوۡنَ surat Al Imran ayat number 55 جب اللہ نے کہا اے عیسیٰ! یقیناً میں تجھے وفات دینے والا ہوں اور اپنی طرف تیرا رفع کرنے والا ہوں اور تجھے ان لوگوں سے نتھار کر الگ کرنے والا ہوں جو کافر ہوئے، اور ان لوگوں کو جنہوں نے تیری پیروی کی ہے ان لوگوں پر جنہوں نے انکار کیا ہے قیامت کے دن تک بالادست کرنے والا ہوں۔ پھر میری ہی طرف تمہارا لوٹ کر آنا ہے جس کے بعد میں تمہارے درمیان اُن باتوں کا فیصلہ کروں گا جن میں تم اختلاف کیا کرتے تھے۔ مَا قُلۡتُ لَہُمۡ اِلَّا مَاۤ اَمَرۡتَنِیۡ بِہٖۤ اَنِ اعۡبُدُوا اللّٰہَ رَبِّیۡ وَ رَبَّکُمۡ ۚ وَ کُنۡتُ عَلَیۡہِمۡ شَہِیۡدًا مَّا دُمۡتُ فِیۡہِمۡ ۚ فَلَمَّا تَوَفَّیۡتَنِیۡ کُنۡتَ اَنۡتَ الرَّقِیۡبَ عَلَیۡہِمۡ ؕ وَ اَنۡتَ عَلٰی کُلِّ شَیۡءٍ شَہِیۡدٌ ﴿۱۱۷﴾ ab ap yahan par zaroor yay kahein gay kay mutawafi ka ap tarjama wafat kaisay kartay hein to is silsalay mein arz hay kay. Imam Bukhari nay Sahi Bukhari jo kay Quran-e-karim kay baad sab say sahih kitab mani jati hay mein Hadhrat Ibn-e-Abas ra say marwi kya hay surat Al Maida ki ayat 117 kay hawalay say "Qaala Ibno Abbasin Mutawaffeeka Mumeetoka" Hadhrat Ibn-e-Abas ra nay farmaya mutawafi ka matlab wafat hay Imam Bukhari has named a Bab (Chapter)--Babo Tawaffiyo Rasool-ullahi Sallallaho Alaihi Wa Sallam, in which the Holy Prophet (peace and blessings of God be on him) has connoted the meaning of Hazrat Jesus'AS Tawaffee as that of his own Tawaffee. The Holy ProphetSAW said: "On the day of Qiyamat some people of my Ummat would be taken towards Hell. Then I shall say, `O my Lord! these are my companions', Then it would be said! `thou don't know what they innovated after thee'. Then, I shall say as the righteous servant said: `I was a witness over them as long as I remained among them, but since Thou didst cause me to die, Thou hast been the Watcher over them.'" (Bukhari Kitabul Tafseer, Vol. 3, p. 79, Vol. II, p. 159) Aur phir ai k aur ayat ka tarjama kartay huay ap kay mullah khud tawaffi ka matlab wafat kartay hein to phir Hadhrat Eisa as kay moamlay mein kyon matlab tabdil kar detay hein قُلۡ یَتَوَفّٰىکُمۡ مَّلَکُ الۡمَوۡتِ الَّذِیۡ وُکِّلَ بِکُمۡ ثُمَّ اِلٰی رَبِّکُمۡ تُرۡجَعُوۡنَ ﴿٪۱۱﴾ ﴿032:011﴾‏ [جالندھری]‏ کہہ دو کہ موت کا فرشتہ جو تم پر مقرر کیا گیا ہے تمہاری روحیں قبض کر لیتا ہے پھر تم اپنے پروردگار کی طرف لوٹائے جاؤ گے Quran with tafseer 1.0 software downloadable from cnet downloads کہہ دو تمہاری جان موت کا وہ فرشتہ قبض کرے گا جو تم پر مقرر کیا گیا ہے پھر تم اپنے رب کے پاس لوٹائے جاؤ گے (۱۱) آپ فرما دیجیئے کہ تمہاری جان موت کا فرشتہ قبض کرتا ہے جو تم پر متعین ہے پھر تم اپنے رب کی طرف لوٹا کر لائے جاؤ گے۔ (۱۱) کہہ دو کہ موت کا فرشتہ جو تم پر مقرر کیا گیا ہے تمہاری روحیں قبض کر لیتا ہے پھر تم اپنے پروردگار کی طرف لوٹائے جاؤ گے (۱۱) urdu tarjama Ahmad Ali, Ashraf Ali thanwi aur jalandhari in tarjamon ko ap yahan say dekh saktay hein ab bataein kay ap kay Maulwi hadhrat hadhrat Eisa kay moamlay mein dhandli kyon kartay hein halankay lafaz aik hi dono jagha par use ho raha hay SCIENTIFIC RESEARCH is mein ap ki is tehreer ka kuch had tak jawab maujood hay جمہورائمہ کرام کا مذہب یہی ہے کہ سیدنا عیسٰی علیہ الصلوۃ والسلام نے ابھی انتقال نہ فرمایا، قریب قیامت نزول فرمائیں گے، دجال کو قتل کریں گے، برسوں رہ کر انتقال فرمائیں گے ، روضہ پاک حضور سید عالم صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم میں ایک مزار کی جگہ خالی ہے وہاں دفن ہوں گے۔ اُس کا وہ جاہلانہ احمقانہ خیال تو یہیں سے دفع ہوگیا۔ اوفقط آسمان پر ہونا اگر موجبِ فضل ہو تو فرشتوں کو توآسمان پر مانے گا۔قال تعالٰی وکم من ملک فی السمٰوٰت ۱؂آسمانوں میں بہتیرے فرشتے ہیں۔ خود حضور اقدس صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم کو دونوں عالم سے افضل کہہ رہا ہے کیا ملائکہ سے افضل نہ مانے گا یا حضور کے وفات پا کر زمین پر رہنے اور ملائکہ کے آسمان پر ہونے سے معاذ اﷲ شانِ اقدس کا گھٹ ناجانے گا، اور فرشتے بھی نہ سہی چاند سورج ستارے تو آسمان پر سے افضل ہے خصوصاً محلِ تربت اقدس کہ عرشِ اعظم سے بھی اعلٰی وافضل ہے اندھوں نے جہت میں اوپر نیچے دیکھ لیا اور یہ نہ جانا کہ دل تمام اعضاء کا سلطان اور سب سے افضل ہے اگرچہ بہت اعضاء اس سے اوپر ہیں۔ واﷲ تعالٰی اعلم۔ jamhoor aima kay kaul ki haqeeqat Imam bukhari kay qaul say wazah hay اوفقط آسمان پر ہونا اگر موجبِ فضل ہو تو فرشتوں کو توآسمان پر مانے گا۔قال تعالٰی وکم من ملک فی السمٰوٰت ۱؂آسمانوں میں بہتیرے فرشتے ہیں kya ya farishtay zameen say utha kar asman par lay jay gay hein jay خود حضور اقدس صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم کو دونوں عالم سے افضل کہہ رہا ہے کیا ملائکہ سے افضل نہ مانے گا یا حضور کے وفات پا کر زمین پر رہنے اور ملائکہ کے آسمان پر ہونے سے معاذ اﷲ شانِ اقدس کا گھٹ ناجانے گا، اور فرشتے بھی نہ سہی چاند سورج ستارے تو آسمان پر سے افضل ہے خصوصاً محلِ تربت اقدس کہ عرشِ اعظم سے بھی اعلٰی وافضل ہے اندھوں نے جہت میں اوپر نیچے دیکھ لیا اور یہ نہ جانا کہ دل تمام اعضاء کا سلطان اور سب سے افضل ہے اگرچہ بہت اعضاء اس سے اوپر ہیں۔ واﷲ تعالٰی اعلم۔ chand sooraj farishtay kya yay sab zameen say utha kar asman par lay gay hein baat yay ho hi nahin rahi jo tum keh rahay ho baat yay ho rahi hay kay Eisa as jo kay Hazoor saw say bohot kam darja rakhtay hein un ko to Allah tallah nay zameen say utha kar asman par pohoncha dya magar Huzoor saw zameen mein hi madfoon rahay yay baat ho rahi hay baqi yay chand sooraj farishtay wagharia to zameen par thay hi nahin to in ka afazal hona sabit nahin hota kyonkay inhein zamen say utha kar asmanon ki y bulandyon par nahin lay jay