kashmeerkhan

Members
  • Content count

    367
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    24

kashmeerkhan last won the day on September 30 2017

kashmeerkhan had the most liked content!

Community Reputation

53 Excellent

About kashmeerkhan

  • Rank
    Baghdadi Member

Profile Information

  • Gender

Previous Fields

  • Madhab

Recent Profile Visitors

744 profile views
  1. molvi ke mojodgi lazmi nahe hae.,. gawah 2 mard ya 1 mard+2 ortay hoon. aaqil baaligh aorr ijab o qbool ke time gwahoo ke mojodgi lazim hae. Ye dekh lena ky baligh female ny agr gher-kufw me wali ki consent ke bgher nikah kea tu nahi hoga.
  2. Salam Hazrat Nikaah ki baqi shraaait pori honi chiaey. Aorat apne pori marzi sy apne saray hqooq maaf kar de, tu gunjaesh he jaiz hone ke. BUT keep it in mind that Nikah ka maqsad pori zindgi ka baham mazboot rishta hota he, if non-serious then nikah kro he na.
  3. غیر مقلد اس فتوی پر کیا اعتراض رکھتا ہے؟ قرآن وسنت کی روشنی میں اپنا دعوی ثابت کرے نا اس صورت میں بیوی کیوں حرام ہوجائے گی ؟ غیرمقلدوں کو ذرا بھی حیا نہیں، بات بات پر بیوی حرام کرانے پر کیوں تل جاتے ہیں؟؟۔،۔
  4. سلفی جی اب ادھر نظر نہیں آنے یقینا ۔،،۔،۔،۔
  5. سلفی جی اتنا زیادہ خیانتیں اور وہ بھی ایک پوسٹ میں ۔،۔ کراہت کو حرمت بنانے والی مشین لگتے آپ۔،۔۔ لانہ لا حق للخلق علی اللہ تعالیٰ کی سمجھ آئی یا ایسے ہی لکھ مارا؟؟ اس بےحد گھسے پٹے اعتراض کا جواب فورم پر موجود ہے،۔، مگر سلفیوں کو کچھ اور چاہیے بجائے جواب کے ،۔، عقل مند کو اشارہ کافی ۔،
  6. حضرت معاویہ رضی اﷲ عنہ نے فرمایا میرا حضرت علی رضی اﷲ عنہ سے اختلاف صرف حضرت عثمان رضی اﷲ عنہ کے قصاص کے مسئلہ میں ہے اور اگر وہ خون عثمان رضی اﷲ عنہ کا قصاص لے لیں تو اہل شام میں ان کے ہاتھ پر بیعت کرنے والا سب سے پہلے میں ہوں گا (البدایہ و النہایہ ج 7‘ص 259)
  7. 1 امام احمد رضا نے جو تعزیہ جائز کہا، اسمیں اور شیعہ کے تعزیہ میں زمین آسمان کا ڈفرینس ہے۔،۔ ۲ شیعہ کا تعزیہ جائز نہیں تو منہ جدھر مرضی کرو، ناجائز رہنا پھر بھی ۳ وہ ۱۳۹۸ میں بھی انڈیا آیا تھا، پیدائش نو اپریل ۱۳۳۶ اور وفات ۱ٹھارہ فروری ۱۴۰۵ تھی۔،۔ ،۔، اس انفو کا کیا کرنا ہے؟ ۴ مولوی صاحب سے یہ سوال کرنے کا حق آپکو کس نے دیا؟؟۔،۔ ۵ حکم ہر صورت کا الگ ہوتا مگر شیعہ کا تعزیہ منکرات سے خالی نہیں۔،، اور جو فرقہ ضروریات کا منکر ہے، وہ جائز تعزیہ کرلے تو کونسا کارنامہ سرانجام دیا؟۔،۔ ۶ ہم منکرات کے خلاف ہیں۔۔،۔ کوئی کسی عرس میں شادی میں ناجائز کام کرے تو ہم ذمہ دار نہیں،۔،۔، جو غلط ہے وہ غلط رہے گا،۔، نفس تعزیہ شیعہ کوئی اٹل چیز نہیں، مختلف خرافات کا مجموعہ ہے۔،
  8. سبحان اللہ،۔،۔ اب کی بار وہابڑوں کو عطائی غیب پر علم کے اطلاق میں کوئی اعتراض نہیں پلس غیب کی ذاتی عطائی تقسیم بھی کرنے لگے،۔، ایسی بدعقیدہ قوم میں رہنا کیسے گوارہ کرلیتے یہ لوگ۔،۔، اگر کوئی شخص وقت نکالے اور وہابڑوں کے تمام اختلافی مسائل تو نہیں صرف ایک علم غیب کو ہی پڑھنا شروع کرے تو کنفرم ہے کہ بھونڈا سا ملغوبہ بنے گا، یہ لوگ ایک دوسرے کے قطعی عقیدوں کی رو سے کافر قرار پاتے ہیں
  9. اس موقع پر سیدنا ابو بکر الصدیق رضی اللہ عنہ نے ‘‘وما محمد إلا رسول قد خلت من قبلہ الرسل’’ الخ[آل عمران: ۱۴۴] والی آیت تلاوت فرمائی تھی۔ ان سے یہ آیت سن کر (تمام) صحابہ کرام نے یہ آیت پڑھنی شروع کر دی۔(البخاری: ۱۲۴۱ ، ۱۲۴۲)سیدنا عمر رضی اللہ عنہ نے بھی اسے تسلیم کر لیا۔ دیکھئے صحیح البخاری (۴۴۵۴) معلوم ہوا کہ اس پر صحابہ کرام رضی اللہ عنہم اجمعین کا اجماع ہے کہ نبی ﷺ فوت ہو گئے ہیں۔ آپ ﷺ نے دنیا کے بدلے آخرت کو اختیار کر لیا۔ یعنی آپ ﷺ کی وفات کے بعد آپ کی زندگی اُخروی زندگی ہے جسے بعض علماء برزخی زندگی بھی کہتے ہیں۔ چلو کوئی ایسا بندہ تو آیا جو خود کو قصہ کہانی فروش یعنی اہلحدیث کہلوا رہا ہے،۔، مجھے یقین ہے کہ یہ خود کو ’’ومن الناس میں یشتری لھو الحدیث لیضل عن سبیل اللہ‘‘ والی الحدیث کا اہل ثابت کروا کے جائے گا۔،۔ بس اتنا سا بتا دو کہ وفات کا شرعی معنی ہے کیا؟؟ جب محض قرآن و سنت کی اتباع کا دعوی ہے تو غیر معصوم لوگوں کے اقوال مت لانا پلیز تنبیہ: میر محمد کتب خانہ باغ کراچی کے مطبوعہ رسالے‘‘جمال قاسمی’’ میں غلطی سے ‘‘ارواح’’ کی بجائے‘‘ازواج’’ چھپ گیاہے۔ اس غلطی کی اصلاح کے لئے دیکھئے سرفراز خان صفدر دیوبندی کی کتاب‘‘تسکین الصدور’’ (ص ۲۱۶)محمد حسین نیلوی مماتی دیوبندی کی کتاب‘‘ندائے حق’’ (ج ۱ص۵۷۲و ص ۶۳۵) یعنی بقولِ رضوی بریلوی ، احمد رضا خان بریلوی کا وفات النبی ﷺ کے بارے میں وہ عقیدہ نہیں جو محمد قاسم نانوتوی کا ہے۔ جب بندے کو پتہ ہی نہ ہو کہ بات کس سے کرنی ہے اور کیا کرنی ہے تو ایسا ہی ہوتا ہے۔،۔، چلو بیٹھے بٹھائے تفریح کا سامان ہو گیا ہمارے دعوی کی نفی کیسے سمجھ آئی آپکو ان سے؟؟،۔،، قیاس بھی کرنے لگے ہیں اب اہلحدیث اور اب اول من قاس کا سبق بھلا دیا؟۔،۔،۔،۔،۔ پھر آگے وہ یہ فلسفہ لکھتے ہیں کہ یہ زندگی نہ تو ہر لحاظ سے دنیاوی ہے اور نہ ہر لحاظ سے جنتی ہے بلکہ اصحاب کہف کی زندگی سے مشابہ ہے۔(ایضاً ص۱۶۱) حالانکہ اصحابِ کہف دنیاوی زندہ تھے جبکہ نبی کریم ﷺ پر بہ اعتراف حافظ ذہبی وفات آچکی ہے لہذا صحیح یہی ہے کہ آپ ﷺ کی زندگی ہر لحاظ سے جنتی زندگی ہے۔ یاد رہے کہ حافظ ذہبی بصراحت خود آپ ﷺ کے لئے دنیاوی زندگی کے عقیدے کے مخالف ہیں۔ معلوم ہوا کہ نبی کریم ﷺ زندہ ہیں لیکن آپ کی زندگی اُخروی و برزخی ہے، دنیا وی نہیں ہے۔ ہم تو حیات دنیوی برزخی اخروی سب مانتے ہیں بلکہ تمام عالمین کے مناسب حیات، تمہارے ان حوالوں سے تو ہمارا پوائنٹ مزید قوی ہوگیا۔،۔ مزے کی بات یہ ہے کہ ’’اہل حدیث کے دو اصول۔قرآن و حدیث‘‘ والے اب غیر معصوم لوگوں کے اقوال پیش کرنے پر اتر آئے اس کا راوی محمد بن مروان السدی: متروک الحدیث(یعنی سخت مجروح) ہے۔ (کتاب الضعفاء للنسائی: ۵۳۸) اس پر شدید جروح کے لئے دیکھئے امام بخاری کی کتاب الضعفاء (۳۵۰) مع تحقیقی : تحفۃ الاقویاء (ص۱۰۲) و کتب اسماء الرجال۔حافظ ابن القیم نے اس روایت کی ایک اور سند بھی دریافت کر لی ہے۔ ‘‘عبدالرحمن بن احمد الاعرج: حد ثنا الحسن بن الصباح: حد ثنا ابو معاویۃ: حد ثنا الاعمش عن ابی صالح عن ابی ہریرہ’’ الخ(جلاء الافھام ص ۵۴بحوالہ کتاب الصلوۃ علی النبی ﷺ لابی الشیخ الاصبہانی) اس کا راوی عبدالرحمن بن احمد الاعرج غیر موثق (یعنی مجہول الحال) ہے۔ سلیمان بن مہران الاعمش مدلس ہیں۔(طبقات المدلسین:۵۵؍۲والتلخیصالحبیر ۳؍۴۸ح۱۱۸۱و صحیح ابن حبان، الاحسان طبعہ جدیدہ ۱؍۱۶۱و عام کتب اسماء الرجال) اگر کوئی کہے کہ حافظ ذہبی نے یہ لکھا ہے کہ اعمش کی ابو صالح سے معنعن روایت سماع پر محمول ہے۔(دیکھئے میزان الاعتدال ۲؍۲۲۴)تو عرض ہے کہ یہ قول صحیح نہیں ہے۔ امام احمد نے اعمش کی ابو صالح سے (معنعن) روایت پر جرح کی ہے۔ دیکھئے سنن الترمذی (۲۰۷بتحقیقی) اس مسئلے میں ہمارے شیخ ابو القاسم محب اللہ شاہ الراشدی رحمہ اللہ کو بھی وہم ہوا تھا۔ صحیح یہی ہے کہ اعمش طبقہ ثالثہ کے مدلس ہیں اور غیر صحیحین میں اُن کی معنعن روایات ، عدمِ تصریح و عدمِ متابعت کی صورت میں ، ضعیف ہیں، لہذا ابو الشیخ والی یہ سند بھی ضعیف و مردود ہے۔ یہ روایت‘‘من صلی علی عند قبری سمعتہ’’ اس صحیح حدیث کے خلاف ہے جس میں آیا ہے کہ: ‘‘إن للہ فی الارض ملائکۃ سیاحین یبلغونی من أمتی السلام’’ بے شک زمین میں اللہ ے فرشتے سیر کرتے رہتے ہیں۔ وہ مجھے میری امت کی طرف سے سلام پہنچاتے ہیں۔(کتاب فضل الصلوۃ علی النبی ﷺ للإمام إسماعیل بن إسحاق القاضی: ۲۱ و سندہ صحیح ، والنسائی ۳؍۴۳ح ۱۲۸۳، الثوری صرح بالسماع) اس حدیث کو ابن حبان(موارد:۲۳۹۲)و ابن القیم (جلاء الافہام ص ۶۰) و غیر ہما نےصحیح قرار دیا ہے واقعی یہ بندہ اہل حدیث ہی ہوا۔،۔، عقل چیک کرو اسکی، ایک تو غیرمتعلقہ ٹاپک میں اور دوسرا ایک پورا ایسا فن جسکا قرون ثلثہ میں ثبوت نہیں، سے دلیل پکڑ رہا۔،۔،۔ اہلحدیث کے صرف دو اصول کا سبق بھی یاد نہیں رہا۔،۔،۔ ائمہ کی تقلید کو شرک کہنے والا خود ائمہ کے اقوال کو حجت بنا رہا، کمال ہی کمال ۔،۔،۔ کسی امام نے اگر کسی شخص کو ضعیف یا مجہول کہہ دیا تو وہ لوگ بھی اسے حق ماننے لگ گئے جن کے ہاں قول صحابی تک حجت نہیں۔،۔،۔ الگ سے ٹاپک بناو اہلحدیث جی اسکے لیے، ویسے آپکی قصے کہانیوں ناولوں کی دکان یہاں نہیں چلنے والی سبحان اللہ۔،۔۔ آپ اسے تحقیق کہتے ہیں؟؟؟ تحقیق کا موضوع ہی بتا دو تو مان جائیں۔،۔، ایک بات کہیں جارہی تو دوسری اسکے بالکل اپوزیٹ۔،۔، اقول خلاصۃ التحقیق: اسلامی محفل پر @Ahlehadees صاحب نے تین گھنٹے قبل اپنے ہوش و حواس میں نہ رہتے ہوئے ایک پوسٹ کی ہے صرف میں ایسا نہیں کہتا، تمہارا کوئی قصہ کہانی فروش یعنی اہلحدیث بھائی بھی اسکی تصدیق کرے گا تمہاری پوسٹ دیکھ کر
  10. جزاک اللہ خیرا،۔۔ حضرت مجدد الف ثانی سرکار رحمہ اللہ پر یہ اعتراض میں نے بھی سنا تھا حال میں ہی، مگر آپ نے ہر پہلو کو واضح انداز سے بتایا وہ بھی مستند فتاوی کی روشنی میں، سارا مسئلہ حل ہو گیا۔، جزاک اللہ خیرا بھئی جان
  11. قبلہ عسقلانی بھئی، بحث برائے بحث سے بچنے کیلئے مختصر سی بات لکھوں گا۔ نہ کوئی ایڈمن مجھے پروٹیکٹ کررہا اور نہ آپکو لاک، کوئی تکنیکی ایرر وجہ ہوگی۔ میں نے کسی عالم کی محض تقریظ سے استدلال نہیں کیا، بلکہ انہوں (علامہ غلام رسول رضوی شیخ الحدیث) نے خود لکھ دیا کہ انہوں نے بغور کتاب کا مطالعہ کیا اور اسمیں تمام کے تمام حوالہ جات مستند و دلائل قاہرہ ہیں۔ کتاب لکھنے والے (علامہ حافظ احسان الحق صاحب) بھی غیر عالم نہیں ہیں۔مزید دو بار تصحیح بھی ایک عالم (علامہ مختار اشرفی صاحب) نے فرمائی ہے۔،۔ آپ کی یہ بات (کتاب تو مستند نہیں ہو گی لیکن پھر بھی علماء اہل سنت نے اس سے دلیل لی ہو گی) میری دلیل کا جواب ہرگز نہیں (کیونکہ میں نے جن علما کا حوالہ دیا ہے، وہ جواہر خمسہ میں سے محض حوالہ نہیں دے رہے بلکہ اسے مستند و دلائل قاہرہ میں شمار کرتے ہیں)، میں نے جواہر خمسہ کا مستند ہونا سنی عالم کی تحقیق سے دکھایا ہے تو آپ بھی سنی عالم کی تحقیق سے جواہر خمسہ کا غیر مستند ہونا ثابت کریں اور بس۔ پوسٹ سنگل بنانی ہے بھئی
  12. wo topic behs braey behs ko prevent karney ky leay lock kya gea hy AND i think it was an excellent step bcz discussion complete ho gae the AND reader can easily decide what z right r wrong.,. I have given material 4m authentic sunni book+these r not my words.,. so ur post should also b 4m authentic sunni book+not ur own words., No more behs braey behs
  13. wa_alaikom_us_salam May your mother rest in peace and ur family come to a point of patience upon this loss u r welcome on this site, give a read to the article Chaliswan