Jump to content

Aquib Rizvi

Members
  • Posts

    81
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    8

Aquib Rizvi last won the day on May 30 2022

Aquib Rizvi had the most liked content!

1 Follower

About Aquib Rizvi

Previous Fields

  • Hanafi

Recent Profile Visitors

The recent visitors block is disabled and is not being shown to other users.

Aquib Rizvi's Achievements

Collaborator

Collaborator (7/14)

  • First Post
  • Collaborator
  • Conversation Starter
  • Week One Done
  • One Month Later

Recent Badges

23

Reputation

  1. صحابہ کرام کا ذکر ہو تو خاموش رہنا امام الائمہ حافظ عبدالرزاق بن ہمام صنعانی م211ھ رحمه الله فرماتے ہیں أخبرنا أبو علي إسماعيل، ثنا أحمد، ثنا عبد الرزاق، أنا معمر، عن ابن طاووس، عن أبيه، قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: «إذا ذكر أصحابي فأمسكوا، وإذا ذكر القدر فأمسكوا، وإذا ذكر النجوم فأمسكوا» ( كتاب الأمالي في آثار الصحابة لعبد الرزاق الصنعاني :- 51 ) ترجمہ :- طاؤوس بن کیسان ( تابعی ) رحمہ اللہ بیان فرماتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : جب میرے صحابہ کا تذکرہ ہو تو خاموش رہنا ، جب ستاروں کا ذکر ہو تو خاموش رہنا اور جب تقدیر کے مسئلے کا ذکر ہو تو خاموش رہنا ” میں ( راقم الحروف ) کہتا ہوں یہ سند صحیح ہے ماسوائے اس کے کہ یہ روایت مرسل ہے مگر امام طاوؤس بن کیسان رحمہ اللہ کی مراسیل عند الآئمۃ الحدیث کم از کم حسن درجہ کی ہوتی ہیں ﴿ مقدمة تحقيق المراسيل ص 7 ﴾ نیز یہ کہ اس حدیث کے کئی شواہد و متابعات بھی ہیں جو اس حدیث کو مزید تقویت دیتے ہیں درج ذیل کتب میں یہ حدیث مختلف اسانید سے مروی ہے ( كتاب حلية الأولياء وطبقات الأصفياء - ط السعادة 4/108 ) ( كتاب التمهيد - ابن عبد البر - ت بشار 4/62 ) ( كتاب مساوئ الأخلاق للخرائطي ص350 ) ( كتاب المعجم الكبير للطبراني 2/96 ) ( كتاب شرح أصول اعتقاد أهل السنة والجماعة 1/142 ) ( كتاب المعجم الكبير للطبراني 10/198 ) ( كتاب القضاء والقدر - البيهقي ص291 ) ( كتاب الإبانة الكبرى - ابن بطة 3/239 ) ( كتاب أصول السنة لابن أبي زمنين ص266 ) ( كتاب الترغيب والترهيب لقوام السنة 1/367 ) ( كتاب مسند الحارث = بغية الباحث عن زوائد مسند الحارث 2/748 ) ( ثلاثة مجالس من الأمالي 2/191 ) ( تاريخ جرجان :- 315 ) اس کے علاوہ بھی دیگر کتب احادیث میں یہ حدیث مختلف اسانید سے مذکور ہے سلفیوں کے محدث اعظم شیخ محمد ناصر الدین البانی نے بھی اس حدیث کی تحسین کی ہے ( كتاب سلسلة الأحاديث الصحيحة وشيء من فقهها وفوائدها 1/75 ) ھذا ما عندی والعلم عند الله خادم الحدیث النبوی ﷺ سید محمد عاقب حسین
  2. امام محمد باقر ابن علی علیہما السلام اور تعویذ امام محمد باقر علیہ السلام سے باسند صحیح ثابت ہے کہ آپ وہ تعویذ جس میں قرآن مجید لکھا ہوا ہو اسکو گلے میں لٹکانا جائز سمجھتے تھے ۔ الإمام أبو بكر بن أبي شيبة م235ھ رحمه الله فرماتے ہیں : حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ، عَنْ حَسَنٍ، عَنْ جَعْفَرٍ، عَنْ أَبِيهِ «أَنَّهُ كَانَ لَا يَرَى بَأْسًا أَنْ يَكْتُبَ الْقُرْآنَ فِي أَدِيمٍ ثُمَّ يُعَلِّقُهُ» امام جعفر صادق علیہ السلام اپنے والد محترم امام محمد باقر علیہ السلام سے روایت کرتے ہیں کہ وہ اس بات میں کوئی حرج محسوس نہیں کرتے تھے کہ قرآن مجید کو چمڑے میں لکھا جائے اور پھر اسکو گلے میں لٹکایا جائے . ( كتاب المصنف - ابن أبي شيبة - ت الحوت 5/44 ) میں (راقم الحروف) کہتا ہوں اس اثر کی سند_صحیح ہے سند کے رجال کی تحقیق ① پہلے راوی خود امام ابن ابی شیبہ ہیں جو بالاتفاق ثقہ حافظ صاحب تصانیف ہیں ۔ ( تقريب التهذيب :- 3575 ) ② عبيد الله بن موسى العبسي یہ بھی ثقہ راوی ہے ۔ ( تقريب التهذيب :- 4361 ) ③ الحسن بن صالح الثوري یہ بھی ثقہ فقیہ عابد راوی ہے ۔ ( سير أعلام النبلاء 7/362 ) ④ إمام من أئمة المسلمين وعالم جليل وعابد فاضل من ذرية الحسين بن علي بن أبي طالب جعفر بن محمد الصادق بالاتفاق ثقہ مامون اولاد علی بن ابی طالب علیہ السلام ۔ ( سير أعلام النبلاء 6/255 ) اس تفصیل سے ثابت ہوا یہ اثر صحیح ہے ۔ سید شہداء امام حسین علیہ السلام کے پوتے امام محمد باقر علیہ السلام قرآنی تعویذ کو جائز سمجھتے تھے ۔ والحمدللہ محمد عاقب حسین
  3. امام ملا علی قاری الحنفی رحمہ اللہ تعالی مشہور حسن صحیح حدیث کے رسول اللہ ﷺ نے فرمایا جس نے علی رضی اللہ عنہ پر سب کیا اس نے مجھ پر سب کیا کے تحت فرماتے ہیں یہ حدیث اس بات کا تقاضہ کرتی ہے کہ مولا علی رضی اللہ عنہ پر "سب" کرنا کفر ہے
  4. شہادت امام حسن مجتبیٰ علیہ السلام امام المحدثین حافظ ابو الفرج عبدالرحمن ابن الجوزی م597ھ رحمہ اللہ فرماتے ہیں : امام حسن مجتبیٰ ابن علی المرتضیٰ علیہما السلام کی شہادت 5 ربیع الاول بمطابق 50ھ میں ہوئی . یہی تاریخ شہادت امام جلال الدین سیوطی م911ھ رحمہ اللہ نے بھی نقل کی اپنی کتاب تاریخ الخلفاء میں . 28 صفر المظفر شیعوں کے نزدیک ہے اہلسنت کے نزدیک نہیں خادم الحدیث النبوی ﷺ سید محمد عاقب حسین
×
×
  • Create New...