Jump to content
IslamiMehfil

محمد حسن عطاری

Members
  • Content Count

    191
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    6

محمد حسن عطاری last won the day on April 16

محمد حسن عطاری had the most liked content!

Community Reputation

15 Good

3 Followers

About محمد حسن عطاری

  • Rank
    Ajmeri Member
  • Birthday 05/24/2002

Previous Fields

  • Hanafi
  • Maulana Ilyas Attar

Profile Information

  • Male
  • Interests
    دینی کتب کا مطالعہ

Recent Profile Visitors

279 profile views
  1. Deogandi Group Apne Akabir Thanvi par Kufr ka fatwa lago warna samj lo..
  2. دیوگندی گروپ اپنے کافر اکابر تھانوی کے خلاففتوی لکھو کیونکہ وہ قادیانیوں کو بھی کافر نہیں مانتا اور کلمہ پڑھ کر دوبارہ ایمان لاو یا تھانوی پر کفر کا فتوی لگاو کیونکہ اس نے کفر کا فتوی نہیں لگایا
  3. اعلی حضرت امام اہلسنت رحمۃ اللہ علیہ کے مشہور زمانہ کتاب حسام الحرمین پر جس شخصیت کی رائے کو سب سے زیادہ پرکھا گیا وہ پیر مہر علی شاہ صاحب رحمۃ اللہ علیہ کی ذات ہے دیوبندی علماء اس بات کا تاثر دیتے ہیں کہ پیر مہر علی شاہ صاحب رحمۃ اللہ علیہ نے اکابرین دیوبند کی تکفیر نہیں کی ہے اسکے متعدد جوابات لکھے گئے ہیں لیکن حقیقت یہ ہے کہ پیر مہر علی شاہ صاحب رحمۃ اللہ علیہ نے اکابرین دیوبندکی تکفیر کی ہے چناچہ مفتی منظور احمد فیضی صاحب رحمۃ اللہ علیہ کے والد علامہ محمد ظریف فیضی صاحب رحمۃ اللہ علیہ لکھتے ہیں الحاج غلام حیدر صاحب بھابھڑا مرید سید السادات پیر مہر علی شاہ گولڑوی اور شاگرد غلام مح
  4. اوپر کی متذکرہ عبارتوں سے یہ بات بالکل صاف اور واضح ہے کہ امام احمد رضا فاضل بریلوی کی شخصیت اکابر علماے دیوبند و اہل حدیث کے نزدیک معتبر و مسلم ہے اور آپ کی علمی سطوت اور آپ کے دینی ،تصنیفی اور اصلاحی خدمات کے ساتھ ساتھ،چاہے وہ مخالفین میں سے ہوں یا موافقین سے ہر کوئی آپ کی عظیم المرتبت شخصیت سے متأثر اور آپ کا مدح خواں تھا۔ مگر افسوس!ملت اسلامیہ کا وہ عظیم محسن حوادث ِزمانہ کا شکار ہوگیا۔اس کی دینی اور مثالی تصنیفی خدمات کو ایک منظم سازش کے تحت گمنامی کے پردے میں پوشیدہ کر دینے کی بے جا کوشش کی گئی ۔ اس پر طرہ یہ کہ ان کے عظیم خدمات پر داد تحسین دینے کے بجائے انہیں ایک اختلافی
  5. سید ابو الاعلیٰ مودودی (1903-1979) مولانا احمد رضا خان صاحب کے علم وفضل کا میرے دل میں بڑا احترام ہے ۔فی الواقع وہ علوم دینی پر بڑی نظر رکھتے ہیں اور ان کی فضیلت کا اعتراف ان لوگوں کو بھی ہے،جو ان سے اختلاف رکھتے ہیں۔نزاعی مباحث کی وجہ سے جو تلخیاں پیدا ہوئیں،وہی دراصل ان کے علمی کمالات اور دینی خدمات پر پردہ ڈالنے کا موجب ہوئیں‘‘۔(سفید و سیاہ،ص:112)
  6. حکیم الامت اشرف علی تھانوی (1863-1943)کا نظریہ خلیفہ تھانوی مفتی محمد حسن بیان کرتے ہیںکہ حضرت تھانوی صاحب نے فرمایا:’’اگر مجھے مولوی احمد رضا صاحب بریلوی کے پیچھے نماز پڑھنے کا موقع ملتا تو میں پڑھ لیتا‘‘۔ (اسوہ ٔاکابر،ص:7)۔ دیوبندی عالم کوثر نیازی لکھتے ہیں:مفتی اعظم پاکستان حضرت مولانا شفیع دیوبندی سے میں نے سنا کہ جب مولانا احمد رضا صاحب کی وفات ہو گئی تو حضرت مولانا اشرف علی تھانوی کو آکر کسی نے اطلاع کی۔مولانا تھانوی بے اختیار دعا کے لیے ہاتھ اٹھا دیے حاضرین مجلس ہی میں سے کسی نے پوچھا کہ وہ تو عمر بھر آپ کو کافر کہتے رہے اور آپ ان کے لیے دعائے مغ
  7. دیوبند کے حکیم الامت اشرف علی تھانوی کی وہ عبارت جس پر عرب کے 22 اور برصغیر پاک و ہند کے 300+ علما نے کفر کا فتویٰ لگایا اور بعد میں ان کی تعداد 500 سے بھی تجاوز کر گی۔ اعلی حضرت علیہ الرحمہ نے آٹھ سال تھانوی کو خطوط لکھے رجوع کر لو یا مناظرہ کر لو تو نہ اس نے مناظرہ کیا نہ رجوع۔ اس عبارت کی وجہ سے ہم اہلسنت تھانوی کو کافر مانتے ہیں اور اس کو بھی کافر مانتے جو ان الفاظ کو جاننے کے بعد تھانوی کو مسلمان جانتا ہو۔ پوری دیوبندیت پر اہلسنت کا کفر کا فتویٰ نہیں۔ بدمذہب ہیں دیوبندی لیکن کافر تب ہونگے جب تھانوی کی ان عبارات پڑھنے کے بعد بھی اسے مسلمان جانیں۔
×
×
  • Create New...