Zulfi.Boy

Members
  • Content count

    483
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    17

Zulfi.Boy last won the day on July 14

Zulfi.Boy had the most liked content!

Community Reputation

62 Excellent

About Zulfi.Boy

  • Rank
    Makki Member

Profile Information

  • Gender

Previous Fields

  • Madhab
  1. امام اجل محدث جلیل حضرت ابو جعفر احمد بن محمد طحاوی رضی اللہ تعالٰی عنہ نے طحاوی شریف میں ان روایات کو نقل فرمایا ہے. 🕯عبیداللہ بن مقسم فرماتے ہیں: *ان ابن عمر قال لہ اذا صلیت وحدک فاقرا فی الرکعتین الاولین من الظهر و العصر بام القرآن و سودة سورة و فی الرکعتین الاخریین بام القرآن ...الخ* 📖 یعنی حضرت ابن عمر رضی اللہ تعالٰی عنهما نے ان سے فرمایا: جب تم تنہا نماز پڑهو تو ظہر اور عصر کی پہلی رکعتوں میں سورہ فاتحہ اور کوئی دوسری سورت پڑهو اور پچهلی دو رکعتوں میں صرف سورہ فاتحہ پڑهو ( شرح معانی الآثار المعروف طحاوی، باب القرآءة فی الظہر والعصر) اس کے علاوہ اور بهی روایات اسی باب میں موجود ہیں. 💡امام عبدالله بن محمد بن ابی شیبہ نے *مصنف* میں باب قائم کیا *من کان یقراء فی الاولیین بفاتحة الکتاب و سورة و فی الآخرين بفاتحة الکتاب* 🛢اس باب میں متعدد روایات نقل فرمائیں 🕯ابن سیرین رضی اللہ تعالٰی عنہ فرماتے ہیں : *نبئت ان ابن مسعود کان یقراء فی الظہر والعصر فی الرکعتین الاولین بفاتحة الکتاب و ما تیسر و فی الآخریین بفاتحة الکتاب* 📖 یعنی مجهے خبر دی گئی ہے کہ حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالٰی عنہ ظہر و عصر کی پہلی دو رکعتوں میں سورہ فاتحہ پڑهتے اور جتنا قرآن آسانی سے پڑهه سکیں ، اور بعد کی دو رکعتوں میں سورہ فاتحہ پڑهتے 📘 *( مصنف ابن ابی شیبہ، کتاب الصلوٰہ جلد 1 صفحہ 406)* 🕯اسی باب میں سیدنا فاروق اعظم، حضرت ابو درداء ، حضرت جابر ، ام المومنین سیدہ صدیقہ، شیر خدا علی المرتضی رضی اللہ تعالٰی عنهم کے معمول اور ارشادات درج ہیں جن کا خلاصہ یہی ہے کہ فرض نماز کی پہلی دو رکعتوں میں سورہ فاتحہ کے ساتھ کوئی سورت یا آیات کو پڑها جائے اور بعد کی دو رکعتوں میں فقط سورہ فاتحہ
  2. ye saare aetraaz Ja alhaq ka jawab jo wahabio ne likhi hai usme hai... aur iska bhi jawab Alhamdolillah likha ja chuka hai Nusratul Haq naam hai kitab ka,,, sirf nnaam likhe ge aur link ajaye ga net per... aur index per ap ye topic nikal kar parhle,,, sare jawab hai agar phir bhi samajh na aye to bataye
  3. IS riwayat ko mufassireen ne ayat ki tafseer me baghair kisi tanqeed ke likh dia hai, aur jab ek ahleilm ki jamaat kisi riwayat ko le, to unke nazdeek iski haqeeqat hoti hai, warna kam se kam unka apna aqeeda hi isse wazeh ho jata hai,ke unka aqeeda yehi hai... kuch mufasireen kazikr امام ابن جریر اطبری لکھتے ہیں ،وكان رجلاً يعلـم علـم الغيب قد علِّـم ذلك، وہ حضرت خضر علیہ السلام علم غیب جانتے تھے کہ انہوں نے جان لیا اسی طرح ملاحظہ ہو تفسير روح البيان اسماعيل حقي (ت 1127 هـ) مصنف و مدقق وعلمناه من لدنا علما کے تحت لکھا ہے کہ خاصا هو علم الغيوب والاخبار عنها باذنه تعالى على ما ذهب اليه ابن عباس رضى الله عنهما ا ترجمہ : حضرت خضر علیہ السلام کو جو لدنی علم سکھایا گیا وہ علم غیب ہے اور اس غیب کے متعلق خبر دینا ہے خدا کے حکم سے جیسا کہ اس طرف ابن عباس رضی اللہ عنہما گئے ہیں ۔ 3rd ibne kaseer agar phir bi nahi... to Allah Ka farman to maan le, وَعَلَّمْنَاهُ مِن لَّدُنَّا عِلْمًا ilm e ludni kya hai?? تفسير البيضاوي (ت 685 هـ) ہم نے ان کو اپنا علم لدنی عطا کیا ،حضرت خضر کو وہ علم سکھائے جو ہمارے ساتھ خاص ہیں بغیر ہمارے بتائے کوئی نہیں جانتا اور وہ علم غیب ہے rahi baat laghvi aur shryi ki to ALa hazrat ne ye farmaya علم جب کہ مطلق بولا جائے خصوصا جب کہ غیب کی طرف مضاف ہو تو اس سے مراد علم ذاتی ہوتا ہے ye inki istelah hai, ibne kaseer ki ye istelah nahi, unke nazdeek ilm ghaib, sharyi ghaib hi hai, warna istelah ki daleel de unki... kyu ke Ala hazrat ka aqeeda ye hai حضور صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم قطعاً بے شمار غیوب و ماکان مایکون کے عالم ہیں umeed hai samajh ayi hogi,,, baki ahleilm jesa kahe
  4. میرا علم میری وفات کے بعد ایساہی ہے جیسا میری زندگی میں ye hadees zaeef hai.... iski sanad me zaeef ravi hai.... kya kisi alim ne iski tehqeeq likhi hai??ke ye kisi shawahid ke bina per sahi ya hasan ho
  5. isi ayat me jawab dia ja chuka hai... "me to isi ka tabe ho jo mujhe wahi hoti hai" aur wahi ghaib hai... baki mufassireen ka jawab agli post me dekhe
  6. Sahibe Qabar ka surah mulk parhna......
  7. agar ammi ya behan nahi to, kisi aur rishtedaar se baat kare... khala, phoophi, bhabhi, koi cousin etc... koi to rishtedaar honge... bhai aesi baat karna jaiz na hoga...
  8. wazahat kis cheez ki?? Kisi wafatshuda ko pukarna sahi hai... ke qabrustan me ja kar salam ke saath unko pukara jata hai... agar madad ke liye wazahat chahiye... to ye thread bhi zabardast hai http://www.islamimehfil.com/topic/19950-%D9%86%D8%A8%DB%8C-%D9%BE%D8%A7%DA%A9-%D8%A7%D9%88%D8%B1-%D8%AD%D8%B6%D8%B1%D8%AA-%D8%B9%D9%84%DB%8C-%D8%B3%DB%92-%D9%85%D8%AF%D8%AF-%DA%A9%DB%8C%D9%88%DA%BA-%D9%85%D8%A7%D9%86%DA%AF%DB%8C%DA%BA%D8%9F/ baqi aap ka jo sawal ya confusion hai wo bata de...
  9. Labbaik ya Hussain kehna theek hai... matam karna haram hai
  10. is riwayat ki 3 sanad hai...jis ki waja se ye riwayat zaeef na rahi... shawahid ke bina per.. قال أحمد بن عبد اللَّه الغدافي أخبرنا عمرو بن أبي عمرو عن محمد بن السائب عن أبي صالح عن ابن عباس رضي اللَّه عنه: لم يكن لرسول اللَّه ظل، ولم يقم مع شمس قط إلا غلب ضوء الشمس، ولم يقم مع سراج قط إلا غلب ضوءه على ضوء السراج (امتاع الاسماع عبدالرزاق عن ابن جریج قال اخبرنی نافع ان ابن عباس لم يكن لرسول اللَّه ظل، ولم يقم مع شمس قط إلا غلب (ضوؤء الشمس، ولم يقم مع سراج قط إلا غلب ضوءه على ضوء السراج (عبدالرزاق أخرج الْحَكِيم التِّرْمِذِيّ من طَرِيق عبد الرَّحْمَن بن قيس الزَّعْفَرَانِي عَن عبد الْملك بن عبد الله بن الْوَلِيد عَن ذكْوَان ان رَسُول الله صلى الله عَلَيْهِ وَسلم لم يكن يرى لَهُ ظلّ فِي شمس وَلَا قمر خصائص الکبری
  11. ye log ase hi hai... is se sirf ye poocho itni saddiyo se Allama Aloosi aur imam qurtubi o ibn kaseer per kis ne shirk ka fatwa lagaya?? sirf ek hawala... aur agar kisi ne nahi lgaya to tumhare bare log bhi mushrik hue ya nahi??
  12. Imam jalal uddin syuti ne bohut si sanad yaha zikr ki hai... aur likha bhi hai, is ki sanad bohut hai.. akhri page