Sign in to follow this  
Followers 0
Nabi Pak ka Ishq

خالق کل نے آپ کو مالک کل بنا دیا ۔(اختیارات مصطفی ﷺ پر اعتراضات)۔

12 posts in this topic

توحیدی بھائی۔

برائے مہربانی اس حوالے سے راہنمائی فرما دیں کہ

نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے لئے مختار کل کی اصتلاح کا قدیم ترین ماخز کیا ہے؟

Share this post


Link to post
Share on other sites

نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے لئے مختار کل کی اصتلاح کا قدیم ترین ماخز کیا ہے؟

جب تقویۃ الایمان والے نے لکھا

 

کہ جس کا نام محمد یا علی ھے وہ کسی چیز کا مختار نہیں

 

تو اس کے ردعمل میں آپ ﷺ کے خلیفۃ اللہ کے طور پر

 

مختار کل ھونے کو واضح اور نمایاں کیا گیا۔

 

یہ دراصل

 

سیدالعالمین اور خلیفۃ اللہ کے لفظوں کی ایک تعبیر ھے

 

ولا مشاحۃ فی الاصطلاح۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

@ saeedi bhai

جب تقویۃ الایمان والے نے لکھا

 

کہ جس کا نام محمد یا علی ھے وہ کسی چیز کا مختار نہیں

 

تو اس کے ردعمل میں آپ ﷺ کے خلیفۃ اللہ کے طور پر

 

مختار کل ھونے کو واضح اور نمایاں کیا گیا۔

 

یہ دراصل

 

سیدالعالمین اور خلیفۃ اللہ کے لفظوں کی ایک تعبیر ھے

یعنی سلف صالحین اس مختار کل کی اصطلاح سے واقف نہیں تھے۔

برائے مہربانی اس حوالے سے بھی راہنمائی فرما دیں کہ خلیفتہ اللہ کی تعبیر مختار کل کے حوالے سے کرنے کا قدیم ترین ماخذ کیا ہے؟

Share this post


Link to post
Share on other sites

جناب سلف کے دورمیں اگرایک اصطلاح نہ ملتی ہو

مگراُس کا معنی ملتا ہو توبعد میں اُس معنی ومضمون

کو کسی نے بھی ایک اصطلاح دے دی ہوتو اس سے فرق نہیں پڑتا۔

اس کے پیچھے پڑنا ایک جاہلانہ حرکت ہے۔

دیکھیں

اللہ تعالیٰ کے لئے حاضرناظر کی اصطلاح بہت بعد میں شروع ہوئی

مگر اس کا معنی ومضمون پہلے سے

امت مسلمہ کا عقیدہ تھا

یونہی سرکارﷺ کے تصرف واختیار وملکیت کو دوررسالت سے ہی مانا جارہاتھا

مگرجب کسی چیز کامختار بھی نہ ماننے والا فرقہ پیدا ہؤا

تواہل سنت کو ہرچیز کامختار باذن اللہ کہنے ضرورت پیش آئی۔

نظریہ پرانااورمسنون ہے مگر اصطلاح نئی ضرورتاً لائی گئی۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

مصطفوی صاحب کیا اللہ کو آپ داتا ،غوث اعظم ، غریب نواز مانتے ہیں کہ نہیں

بلکہ یقینا مانتے ہیں تو کیا آپ بتانا پسند کریں گے کہ ان اصطلاحات کا قدیم ترین ماخز کیا ہے؟

اور اگر قدیم ترین ماخذ نہیں ملے گا تو کیا آپ ان کو تسلیم نہیں کریں گے؟؟

 

لہذا قبلہ سعیدی صاحب کی اس بات پر غور کیجیے

 

جناب سلف کے دورمیں اگرایک اصطلاح نہ ملتی ہو

مگراُس کا معنی ملتا ہو توبعد میں اُس معنی ومضمون

کو کسی نے بھی ایک اصطلاح دے دی ہوتو اس سے فرق نہیں پڑتا۔

اس کے پیچھے پڑنا ایک جاہلانہ حرکت ہے۔

Edited by Burhan25

Share this post


Link to post
Share on other sites
دیکھیںاللہ تعالیٰ کے لئے حاضرناظر کی اصطلاح بہت بعد میں شروع ہوئی

مگر اس کا معنی ومضمون پہلے سے

امت مسلمہ کا عقیدہ تھا

جناب سعیدی صاحب اپ نے اچھا نکتہ بیان کیا ہے۔

اپ نے درست فرمایا کہ حاضر ناظر کی اصتلاح بہت بعد میں شروع ہوئی مگر اس کا معنی و مفہوم اور مضمون پہلے سے موجود تھا۔

ایک بات کی طرف میں بھی اپ کی توجہ مبذول کروانا چاہتا ہوں کہ

اگرچہ حاضر ناظر کی اصتلاح بعد میں شروع ہوئی مگر اس کا معنی و مضمون پہلے سے موجود تھا تو عرض ہے کہ

حاضر ناظر کا جو معنی و مفہوم اور مضمون موجود تھا تو اس معنی و مضمون کو بھی ادا کرنے کے لئے الفاظ یقینا موجود تھے

مثلا شہید، بصیر، سمیع وغیرہ۔

 

تو اسی طرح مختار کل کے لئے بھی کوئی نہ کوئی الفاظ تو ضرور ہوں گےجن سے مختار کل کے معنی اور مضمون کو ادا کیا جاتا ہو گا تو اپ سے گزارش ہے زرا ان الفاظ کی نشاندہی فرما دیں۔

 

مصطفوی صاحب کیا اللہ کو آپ

داتا ،غوث اعظم ، غریب نواز

مانتے ہیں کہ نہیں

بلکہ یقینا مانتے ہیں تو کیا آپ بتانا پسند کریں گے کہ ان اصطلاحات کا قدیم ترین ماخز کیا ہے؟

 

جناب یہ سب غیر عربی الفاظ ہیں سوائے ایک کے اور ان کے مترادف الفاظ یقینا موجود ہوں گے

Share this post


Link to post
Share on other sites

صاحب Mustafvi

 

جناب ہیرا پھیری سے کیوں کام لے رہے ہیں؟ایک اصول بناتے بھی ہیں اور جب خود پر بات آتی ہے تو اس سے راہ فرار بھی اختیار کرتے ہیں۔

جب آپ مان چکے کہ یہ غیر عربی الفاظ ہیں تو کیا یہ اس بات کا واضح ثبوت نہیں کہ ان اصطلاحات کا ثبوت و وجود نہیں تھا ۔ بلکہ بعد میں استعمال کیے گے لہذا جو ضابطہ آپ نے مختار کل کے لیے پیش کیا تھا وہ آپ کی اپنی زبانی رد ہو گیا۔الحمد للہ عزوجل

اب آپ نے اصطلاح کے لفظ سے راہ فرار اختیار کرتے ہوے مترادف الفاظ کی بحث شروع کر دی ہے ۔آخر کیوں؟؟اصطلاح والے مطالبے سے دسبتردار کیوں ہو گے ہیں؟؟؟؟؟

پھر الحمد للہ عزوجل مبارک ہو کہ آج حق آپ کی زبان سے نکل ہی گیا آپ نے کہا کہ حاضر وناظر کا معنی و مفہوم اور مضمون موجود تھا تو اس معنی و مضمون کو بھی ادا کرنے کے لئے الفاظ یقینا موجود تھےمثلا شہید، بصیر، سمیع وغیرہ۔

تو پھر یہی بات قرآن نے ہمارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم کے بارے میں بیان فرمای تو آپ کے بیان کردہ معنی و مفہوم کے مطابق آپ صلی اللہ علیہ وسلم حاضر و ناظر ٹھہرے ۔۔۔سبحان اللہ عزوجل

Share this post


Link to post
Share on other sites

@ burhan 25

جناب ہیرا پھیری سے کیوں کام لے رہے ہیں؟ایک اصول بناتے بھی ہیں اور جب خود پر بات آتی ہے تو اس سے راہ فرار بھی اختیار کرتے ہیں۔

جب آپ مان چکے کہ یہ غیر عربی الفاظ ہیں تو کیا یہ اس بات کا واضح ثبوت نہیں کہ ان اصطلاحات کا ثبوت و وجود نہیں تھا ۔ بلکہ بعد میں استعمال کیے گے لہذا جو ضابطہ آپ نے مختار کل کے لیے پیش کیا تھا وہ آپ کی اپنی زبانی رد ہو گیا۔الحمد للہ عزوجل

اب آپ نے اصطلاح کے لفظ سے راہ فرار اختیار کرتے ہوے مترادف الفاظ کی بحث شروع کر دی ہے ۔آخر کیوں؟؟اصطلاح والے مطالبے سے دسبتردار کیوں ہو گے ہیں؟؟؟؟؟

 

اپ نے غالبا میری پوسٹ کو صحیح طریقے سے نہیں پڑھا دو بارہ پڑھ لیں اپ کو جواب مل جائے گا۔

میں نے لکھا تھا

 

اپ نے درست فرمایا کہ حاضر ناظر کی اصتلاح بہت بعد میں شروع ہوئی مگر اس کا معنی و مفہوم اور مضمون پہلے سے موجود تھا۔

ایک بات کی طرف میں بھی اپ کی توجہ مبذول کروانا چاہتا ہوں کہ

اگرچہ حاضر ناظر کی اصتلاح بعد میں شروع ہوئی مگر اس کا معنی و مضمون پہلے سے موجود تھا تو عرض ہے کہ

حاضر ناظر کا جو معنی و مفہوم اور مضمون موجود تھا تو اس معنی و مضمون کو بھی ادا کرنے کے لئے الفاظ یقینا موجود تھے

مثلا شہید، بصیر، سمیع وغیرہ۔

 

تو اسی طرح مختار کل کے لئے بھی کوئی نہ کوئی الفاظ تو ضرور ہوں گےجن سے مختار کل کے معنی اور مضمون کو ادا کیا جاتا ہو گا تو اپ سے گزارش ہے زرا ان الفاظ کی نشاندہی فرما دیں۔

 

 

 

اور جہاں تک داتا غوث الاعظم وغیرہ الفاظ کا تعلق ہے تو ان الفاظ کا معنی و مفہوم بھی موجود ہے مثلا المعطی، المستعان، الوہاب وغیرہ۔

 

پھر الحمد للہ عزوجل مبارک ہو کہ آج حق آپ کی زبان سے نکل ہی گیا آپ نے کہا کہ حاضر وناظر کا معنی و مفہوم اور مضمون موجود تھا تو اس معنی و مضمون کو بھی ادا کرنے کے لئے الفاظ یقینا موجود تھےمثلا شہید، بصیر، سمیع وغیرہ۔

تو پھر یہی بات قرآن نے ہمارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم کے بارے میں بیان فرمای تو آپ کے بیان کردہ معنی و مفہوم کے مطابق آپ صلی اللہ علیہ وسلم حاضر و ناظر ٹھہرے ۔۔۔سبحان اللہ عزوجل

اشتراک لفظی سے خوش نہ ہوں۔ قران میں انسان کے لئے بھی شھید کا لفظ استعمال ہوا ہے اور تمام مسلمانوں کے لئے بھی یہ لفظ استعمال ہوا ہے۔ بہرحال یہ تھریڈ اس بحث کے کئے موزوں نہیں ہے۔

Edited by Mustafvi

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now
Sign in to follow this  
Followers 0

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.