YaRasoolAllah1

Hazrat Ameer Muavia(R.a) Par Aitraz

7 posts in this topic

Aitraz:

jab muavia ko mere mmber par beth huwa dekho to use qatal kar dena(nabi e kareem (saw)).

 

ref:

tarikh e tabri jild 11 safah 357.

is aitraz ka jawab zarorat hai..

Share this post


Link to post
Share on other sites

tareekh e tabri moatbar kutab mein sumar nae hotien zayda tr rawaiyat zaif hain , ibne jareer khud is k muqadmay mein likhtein hain k unho ny begair tahqeeq k rawait lien ,

so dont trust on it

Share this post


Link to post
Share on other sites

hanfi brailvi bhai ap kis ka etraz kar rahe hain ya jawab mang rahe hain jab ke ap ne irani mulk shiya rafzi nusairi ghaalio ke mulk ke flag ki dp set hui hai id par apni....

Share this post


Link to post
Share on other sites

ایک اور روایت پیش کی جاتی ہے علامہ ابن عدی کی کتاب سے

 

حدثنا علي بن سعيد حدثنا الحسين ابن عيسى الرازي حدثنا سلمة بن الفضل ثنا حدثنا محمد بن إسحاق عن محمد بن إبراهيم التيمي عن أبي أمامة بن سهل بن حنيف عن أبيه قال: قال رسول الله صلى الله عليه وآله وسلم : ((إذا رأيتم فلاناً على المنبر فاقتلوه). 

(الکامل لابن عدی 6/112)

اس روایت میں محمد بن اسحاق بن یسار تیسرے طبقہ کا مدلس راوی ہے اور اس روایت میں اس نے سماع کی تصریح نہیں کی عن سے روایت کر رہا ہے لہذا یہ روایت بھی ضعیف ہے۔اور اس روایت میں فلانا کا لفظ ہے نام کی تصریح موجود نہیں۔

اس کے علاوہ محمدبن اسحاق کا شاگرد سلمہ بن الفضل الأبرش بھی کثیر الغلط راوی ہے۔

 

ایک اور روایت بھی پیش کی جاتی ہے

حديث جابر بن عبدالله 
روى سفيان بن محمد الفزاري عن منصور بن سلمة (ولا بأس بمنصور) عن سليمان بن بلال (ثقة) عن جعفر بن محمد
(وهو ثقة) عن أبيه (ثقة) عن جابر بن عبدالله رضي الله عنه مرفوعاً (إذا رأيتم فلاناً 

اس روایت میں حضرت معاویہ رضی اللہ عنہ کا نام نہیں فلانا کا لفظ ہے ۔اس کے علاوہ سفیان بن محمد الفزاری سخت ضعیف ہے

 

حدثني إبراهيم بن العلاف البصري قال، سمعت سلاماً أبا المنذر يقول: قال عاصم بن بهدلة حدثني زر بن حبيش عن عبد الله بن مسعود قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم : "إذا رأيتم معاوية بن أبي سفيان يخطب على المنبر فاضربوا عنقه

أنساب الأشراف (5/130) برقم (378) 

اس روایت میں ابراہیم بن العلاف بصری مجہول ہے اس کی توثیق امام ابن حبان کے علاوہ کسی امام نے نہیں کی۔اور امام بن حبان کی توثیق کرنے میں متساہل ہیں۔

حدثنا يوسف بن موسى وأبو موسى إسحاق الفروي ، قالا : حدثنا جرير بن عبد الحميد ، حدثنا إسماعيل والأعمش ، عن الحسن ، قال : قال رسول الله صلى الله عليه وسلم : "إذا رأيتم معاوية على منبري فاقتلوه"، فتركوا أمره فلم يفلحوا ولم ينجحوا.

 أنساب الأشراف (5/128)

اس راویت میں  اسماعیل بن ابی خالد اور امام اعمش کا سماع  امام حسن بصری سے محل نظر ہے۔اس کے علاوہ یہ روایت مرسل ہے کیونکہ امام حسن بصری کا سما ع آپ علیہ السلام سے نہیں ہے۔

 

حدثنا الساجي قال : ثنا بندار قال : ثنا سليمان قال : ثنا حماد بن زيد قال : قيل لأيوب إن عمراً روى عن الحسن عن النبي صلى الله عليه وسلم قال [ إذا رأيتم معاوية على المنبر فاقتلوه ] قال أيوب كذب

الكامل (5/103)

اس راویت میں عمرو بن عبید بن باب کذاب ہے خود اسی راویت میں امام ایوب  کیسان السختیانی نے جرح کی۔

Edited by Raza Asqalani
2 people like this

Share this post


Link to post
Share on other sites

ایک اور روایت پیش کی جاتی ہے علامہ ابن عدی کی کتاب سے

 

حدثنا علي بن سعيد حدثنا الحسين ابن عيسى الرازي حدثنا سلمة بن الفضل ثنا حدثنا محمد بن إسحاق عن محمد بن إبراهيم التيمي عن أبي أمامة بن سهل بن حنيف عن أبيه قال: قال رسول الله صلى الله عليه وآله وسلم : ((إذا رأيتم فلاناً على المنبر فاقتلوه). 

(الکامل لابن عدی 6/112)

اس روایت میں محمد بن اسحاق بن یسار تیسرے طبقہ کا مدلس راوی ہے اور اس روایت میں اس نے سماع کی تصریح نہیں کی عن سے روایت کر رہا ہے لہذا یہ روایت بھی ضعیف ہے۔اور اس روایت میں فلانا کا لفظ ہے نام کی تصریح موجود نہیں۔

اس کے علاوہ محمدبن اسحاق کا شاگرد سلمہ بن الفضل الأبرش بھی کثیر الغلط راوی ہے۔

 

ایک اور روایت بھی پیش کی جاتی ہے

حديث جابر بن عبدالله 
روى سفيان بن محمد الفزاري عن منصور بن سلمة (ولا بأس بمنصور) عن سليمان بن بلال (ثقة) عن جعفر بن محمد (وهو ثقة) عن أبيه (ثقة) عن جابر بن عبدالله رضي الله عنه مرفوعاً (إذا رأيتم فلاناً 

اس روایت میں حضرت معاویہ رضی اللہ عنہ کا نام نہیں فلانا کا لفظ ہے ۔اس کے علاوہ سفیان بن محمد الفزاری سخت ضعیف ہے

 

حدثني إبراهيم بن العلاف البصري قال، سمعت سلاماً أبا المنذر يقول: قال عاصم بن بهدلة حدثني زر بن حبيش عن عبد الله بن مسعود قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم : "إذا رأيتم معاوية بن أبي سفيان يخطب على المنبر فاضربوا عنقه

أنساب الأشراف (5/130) برقم (378) 

اس روایت میں ابراہیم بن العلاف بصری مجہول ہے اس کی توثیق امام ابن حبان کے علاوہ کسی امام نے نہیں کی۔اور امام بن حبان کی توثیق کرنے میں متساہل ہیں۔

حدثنا يوسف بن موسى وأبو موسى إسحاق الفروي ، قالا : حدثنا جرير بن عبد الحميد ، حدثنا إسماعيل والأعمش ، عن الحسن ، قال : قال رسول الله صلى الله عليه وسلم : "إذا رأيتم معاوية على منبري فاقتلوه"، فتركوا أمره فلم يفلحوا ولم ينجحوا.

 أنساب الأشراف (5/128)

اس راویت میں  اسماعیل بن ابی خالد اور امام اعمش کا سماع  امام حسن بصری سے محل نظر ہے۔اس کے علاوہ یہ روایت مرسل ہے کیونکہ امام حسن بصری کا سما ع آپ علیہ السلام سے نہیں ہے۔

 

حدثنا الساجي قال : ثنا بندار قال : ثنا سليمان قال : ثنا حماد بن زيد قال : قيل لأيوب إن عمراً روى عن الحسن عن النبي صلى الله عليه وسلم قال [ إذا رأيتم معاوية على المنبر فاقتلوه ] قال أيوب كذب

الكامل (5/103)

اس راویت میں عمرو بن عبید بن باب کذاب ہے خود اسی راویت میں امام ایوب  کیسان السختیانی نے جرح کی۔



رضا عسقلانی بھائی ان آحادیث کے ترجمے بھی لکھ دیتے تو ہم لوگوں کے لئے آسانی ہوتی۔۔۔


Sent from my iPhone using Tapatalk

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Similar Content

    • By فقیرقادری
      السلام علیکم بھائیو
      اس اعتراض کا جواب درکار ہے۔
      اخبرنی ابن رزق قال:حدیثآ                     احمد بن سلمان بن الفقیہ بالنجاد قال :حدیثآ عبداللہ بن احمد بن حنبل قال حدیثآ                        مھنی بن یحیی قال سمت احمد بن حنبل یقول ماقول ابی حنیفہ والبعر عندی الاسواء
      تاریخ بغداد 569/51 وسند صحیح
      اس کا ترجمہ جو وہابیہ نے کیا : امام احمد بن حنبل فرماتے ہیں میرے نزدیک جانوروں کی گندگی اور ابو حنیفہ کا قول یکساں ہے۔
      ---------------
      الحمدُللہ۔
      فقیر نے حوالہ تلاش کر لیا ہے۔وہابی نے جھوٹ سے کام لیا ہے۔ثابت ہوا کے وہابی جھوٹا ہے۔


      -----------------
      فقیر نے جو ترجمہ  (لفظی نہیں محاورتاََ)      کیا ہے وہ یہ ہے : اسناد مھنی تک صحیح ہے۔اور مھنی ثقہ ہے،عبد اللہ رحمہ اللہ نے یہ اپنے والد محترم سے نہیں سنا۔انہوں نے یہ مھنی سے لیا۔میں عربی میں کمزور ہوں اسلامی بھائی   غلطی پر اصلاح فرمائیں۔مسئلہ تو کافی واضع ہو گیا مگر کوئی بھائی یہ بتا دے کے اسماء رجال کے تحت کیا حکم ہوگا مجھے اصول اسناد کا  بھی علم نہیں ہے۔
    • By Gyasuddin Quazi
      As salamo Alaiqum hazraat. 
      kisi ne aitraz kia hai ke JA AL HAQ me Ambia ko nisyanan gunahe kabira o sagira ka murtaqib mana gaya hai. 
      maine ja al haq me aisi ibarat pdi hai jo isse milti julti hai.
       
      ambia kiram kis trh gunah kr skte hai jab ke ham sunni ambia ko masoom mante hai..
       
      aur bhuul kar gunaah karne ka aqeeda chahe sagira hi kyu na ho kya ye kisi dalil se sabit hai..? kya ye gustakhi nahi ? 
       
      ummid hai is aitraz ka jawab jald se jald dekar confusion dur kia jayenga..
       
      jazakAllah...

    • By shahabuddin quazi
      AS SALAMO ALAIQUM YE AITRAZ DEOBANDRO NE KIA HAI KI 
       
      TUM BARELVI BAHISHTI ZEWAR JILD 2 ME THANVI KI NAJASAT CHATNE WALI IBARAT KA MAZAK BANATE HO BALKE ULMA E AHNAAF NE BHI YEHI FATWADIA HAI KI NAJASAT CHAT KAR SAF KRO  TO UNGLI PAK HO JAYENGI ..  AUR FATWA E RIZVIA ME BHI YE HI MSLA LIKHA HAI...
       
      kya ye fatwa sahi hai aur thanvi ka najasat chatne ka fatwa aur alahazrt ke fatwe me kya farq hai


    • By Allahbakash
      Ameerkisko kahthe hai. Ameer kaise honichahiye. Ameer ka kya zimma hai. Ameer ka kya huquq hai.
    • By Bhai Jaan
      Hazrat Owaisi Sahab par aitraz ka jo jawab dia hai us main akhri jo baat ki gai hai. K janabat k 2 juzz hote hain is ka hawala manga ja raha hai.
       
      Plz Help Karen