Sign in to follow this  
Followers 0
AqeelAhmedWaqas

دیوبندی بھی رسول اکرم ﷺ کو نور اور اوّل المخلوقات مانتے ہیں

1 post in this topic

(bis)


 


 


کتاب:     نشر الطیْب فی ذکر النبی الحبیب


مصنف:     اشرف علی تھانوی دیوبندی وہابی


 


post-14217-0-98396500-1444745923_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-00932500-1444745937_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-19362200-1444745952_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-61024800-1444745974_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-91657400-1444745987_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-69315600-1444745995_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-96380800-1444746004_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-85736800-1444746489_thumb.gif


 


 


 


 


 


post-14217-0-62779400-1444746172_thumb.gif


Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now
Sign in to follow this  
Followers 0

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Similar Content

    • By aaftab
      As salam alaikum Quran e kareim mai jaha Nabi pak alaihisSalam ko noor farmaya gaya aur muttaiq alaih mufassireen nay jin aayat say noor likha tafaseer mai is kay scans ki darkhwast hai . mai nay forum pay search kia tu aksar jaga ahadees kay hawala jat buhat milay magar tafaseer kay scan nahe mil sakay jaisay tafseer Abdullah ibn e abbas raziAllah mai wo wali ayat jis ka mafhom hai kay tumharay pas Allah ki taraf say noor aur roshan kitab aai .
      was salam
       
    • By Brailvi Haq
      اس کتاب میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے سایہ کی نفی میں حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ کا قول نقل کیا گیا.....اس سند درکار ہے


    • By AqeelAhmedWaqas


       

      جَاءَ الْحَقّ (تصنیفِ حکیمُ الامّت مُفتی اَحمد یار خان نعیمی نوَّر اللہ مَرقَدہ) کی ایک عبارت پر نجدیوں وہابیوں کا مشہورِ زمانہ (لغْو) اعتراض ہے کہ اس عبارت میں مُفتی صاحب علیہ الرحمۃ نے (معاذ اللہ) قرآن مجید کی توہین کی ہے۔ عبارتِ جاء الحق نیچے ملاحظہ فرمائیں:۔

       

       



       

       

       

       



       

       

       

       

       

      اب دیکھیں کہ نجدیوں کی بیمار امت کے حکیمُ اشرف علی تھانوی نے اپنی کتاب نشر الطیْب میں کیا لکھا ہے:۔

       

       



       

       

       

       



       

       

       

       



       

       

       

       

      یہ بس ایک الزامی جواب تھا۔ نجدیوں کے اس اور اس جیسے تمام اعتراضات کے تحقیقی جوابات دئیے جا چکے ہیں جن کا نجدیوں کے پاس کوئی جواب نہیں ہے۔

       

      اب نجدیوں کو چاہیے کہ (مسلمانوں کو کافر کہنے کا اپنا پرانا شوق پورا کرتے ہوئے) جب جاء الحق کی اس عبارت محولہ بالا کی وجہ سے حکیم الامت قبلہ احمد یار خان صاحب رحمۃ اللہ علیہ کو گستاخ کہیں تو اپنے حکیم الامت اشرف علی تھانوی کو (اُسکی نشر الطیْب والی عبارت مد نظر رکھتے ہوئے) گستاخ ماننا ہرگز نہ بھولیں. لیکن اگر انکو اس عبارت میں کوئی گستاخی نظر نہیں آتی تو جاء الحق پر بے جا اعتراضات کا سلسلہ بھی روکنا چاہیے۔