Sign in to follow this  
Followers 0
Brailvi Haq

حاضر ناظر سے متعلق جاءالحق کی ایک عبارت کی وضاحت چاہئے

43 posts in this topic

جاءالحق میں ایک عبارت ہے

 

حاضر ناظر کا شرعی مطلب یہ ہواکہ قوتِ قدسیہ والا ایک ہی جگہ رہ کر تمام عالم کو اپنے کف دست کی طرح دیکھے اور دور و نذدیک کی آواز سنے یا ایک آن میں عالم کی سیر کرے

 

کیا یہ ائمہ احناف کا قول ہے؟؟ پلیز اس کے متعلق وضاحت کردیں

1 person likes this

Share this post


Link to post
Share on other sites

یہ حدیث کے الفاظ تو ہیں نہیں اس لئے احناف کے ائمہ کے متعلق پوچھا ,, اور اصل مقصد یہی ہے کہ کیا حاضر ناظر کا شرعی مطلب یہی ہے ؟اگر ہے تو کسی امام یا حدیث سے ثابت کریں.....بہرحال جاءالحق کا پیج دے رہا ہوں صفحہ 66 ہے شائد

post-17574-0-09263600-1468154155_thumb.png

Share this post


Link to post
Share on other sites

اس کا جلد سے جلد جواب درکار ہے,,,ایک دیوبندی کہ رہا ہے کہ مفتی نعیمی نے یہ اپنی طرف سے غلط معنی پیش کئے ہیں اور یہ کہ اس کا کوئی ثبوت نہیں

Share this post


Link to post
Share on other sites

جاءالحق میں ایک عبارت ہے

 

حاضر ناظر کا شرعی مطلب یہ ہواکہ قوتِ قدسیہ والا ایک ہی جگہ رہ کر تمام عالم کو اپنے کف دست کی طرح دیکھے اور دور و نذدیک کی آواز سنے یا ایک آن میں عالم کی سیر کرے

 

کیا یہ ائمہ احناف کا قول ہے؟؟ پلیز اس کے متعلق وضاحت کردیں

Ghaliban yeh kissi Hadith say akhaz heh ... kaheen para thah ... milnay par paste kar doon ga.

Share this post


Link to post
Share on other sites

بے شک اللہ تعالیٰ نے میرے سامنے دنیا کو پیش فرمادیا ہے تو میں اسے اور جو کچھ اس میں قیامت تک ہونے والا ہے سب کو ایسے دیکھ رہا ہوں جیسے اپنی ہتھیلی کو دیکھتا ہوں

Share this post


Link to post
Share on other sites

Zulfi Boy,kia ap uper diay gaye Kanz ul ummal k page ka tarjuma ka page da skte hn,mujhe sakht zrurat h?

 

zulfi bhai ne kanz ul ummal ki hadith ka tarjima hi dya hay. arabi alfaaz pr ghour keren tu yahi tarjima lag raha hay. 

Share this post


Link to post
Share on other sites

جاءالحق میں ایک عبارت ہے

 

حاضر ناظر کا شرعی مطلب یہ ہواکہ قوتِ قدسیہ والا ایک ہی جگہ رہ کر تمام عالم کو اپنے کف دست کی طرح دیکھے اور دور و نذدیک کی آواز سنے یا ایک آن میں عالم کی سیر کرے

 

کیا یہ ائمہ احناف کا قول ہے؟؟ پلیز اس کے متعلق وضاحت کردیں

 

 

بے شک اللہ تعالیٰ نے میرے سامنے دنیا کو پیش فرمادیا ہے تو میں اسے اور جو کچھ اس میں قیامت تک ہونے والا ہے سب کو ایسے دیکھ رہا ہوں جیسے اپنی ہتھیلی کو دیکھتا ہوں

 

 

aik jaga se tamam kainaat ko apne hath per dekhna.. yeh hadith ka mafhoom hay or yahi hazir o nazir ki tareef mufti sahb ne ki hay.. apni taraf se nahi ki..

 

ab suwal wahabion se hay ke hazir nazir ki aisi tareef keren jo iske bar aks hay.. kya wahabi Allah ko hr jaga jism ke sath hazir o nazir mante hain? لاحول ولا قوۃ  ap wahabia se hazir o nazir ki tareef malom keren or sath men quran o hadith ka hawala mangen.

Share this post


Link to post
Share on other sites

Ye hi kaha tha bhai main ne bi,,,,,mgr Wahabi bole k hmen ye tarif harf ba harf sabit kr k dikhaen

 

wahabi se pehla mutaliba yeh keren ke hazir o nazir ki tareef kya hay.. phir uski di hoyi tareef pr quran o hadith se daleel mangen.. in wahabion se agr ap aise bat nahi keren ge tu ye aise fazool etarazat or zid se apka time barbaad keren ge.

 

hum ne apni daleel hadith se de di hay.. ab us wahabi ke zimme hai ke isko ghalat sabit kere or apni nayi taref ko quran o hadith se sabit kere.

Share this post


Link to post
Share on other sites

(bis)

اس حدیث کو ابو نعیم بن حماد اور طبرانی دونوں نے سیدنا عبداللہ بن عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہما سے روایت کیا ہے

ضعف کا تعلق ابو نعیم کی روایت کے ساتھ ہے اور اسی سے متعلق ہے، پوری عبارت یہ ہے

ابو نعیم بن حماد فی الفتن عن ابن عمر وسندہ ضعیف

طبرانی کی روایت جسے حافظ علی متقی صاحب کنزالعمال نے لکھ کر طب حل عن ابن عمر لکھا اور

سند کے ضعف کا ذکر نہیں کیا، اگر دونوں روایتوں  میں فرق نہ ہوتا تو حافظ علی متقی ایک ہی جگہ ابو نعیم اور طبرانی کا حوالہ دے کہ وسندہ ضعیف کہہ دیتے ،تاکہ دونوں روایتوں کا ضعف معلوم ہوجاتا، لیکن انہوں نے ایسا نہیں کیا صرف ابو نعیم کی روایت کے ساتھ ضعیف لکھا، طبرانی کی روایت کے ساتھ ضعیف نہیں لکھا تاکہ معلوم ہوجائے کہ ضعف ابو نعیم کی روایت کے ساتھ خاص ہے ۔

طبرانی کی روایت ضعیب نہیں بلکہ صحیح ہے۔

rfa 1.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

Kia is hadis ki sanad zaif h?

Or kia aima ne ise sahee qirar dia

 

apne wahabi ki di hoyi tareef pesh nahi ki? uske nazdek hazir nazir ki kya taref hay?

Share this post


Link to post
Share on other sites

اللہ 

 

Edited by Qadri Sultani
ٹاپک سے ان ریلیٹد ہر پوسٹ ایڈٹ کی جائے گی۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

اللہ 

 

 

YE HARKAT TUMHRA KHULAY LAFZON AETRAFE SHIKAST HE, JESA K MENE LIKHA THA K BIDDATI MASLAE HAZIR O NAZIR AUR ILME GHAIB PAR BAT KARNE SE AESE BHAGTA HE JESE CHOOHA BILLI SE, YE UNRELATED KESE HOGAYA MENE YEHI LIKHA THA NA IN MASAIL KA TA'ALLUQ AQIDAY SE HE AUR AQIDA ZAEEF HADEES SE  TO KIA KHABRE WAHID SAHI HADEES SE AUR MURSAL RIWAYAAT SE BHI NAHI SABIT HO SAKTA, ME PHIR LIKH RAHA HOON PHIR DELETE KARDENA, 1. NASSUSE QATIA YANI QUR'AAN KI AYAT SE 2. HADEESE MUTWATRA SE YANI JO HADEES KAM AZ KAM 10 SAHABAE KARAAM SE SABIT HO, 3. IJMA MUTWATRA SE YANI US IJMA PAR TAMAM SAHABA KA,  TAMAM TABAEEN KA AUR TAMAM FUQAHAE KARAAM KA AMAL TAWATUR SE SABIT HO, YE AKABIR AUR FUQAHAE KARAAM KA MUSALLIMA USOOL HE, SAMJHE QADRI MIAN, YE ILMI BAAT TUM JESE KURH MAGHAZON KO KAHAN SAMAJH AYEGI, TUM TO APNE US BARELVI HAQ WALE BACHAY KI WAJA SE MERI TEHREERON KO DELETE KAR RAHE HO K KAHIN US KO HAQ BAAT NA MALOOM HOJAYE, SHARAM KARO 1 HAFTAY SE WO POOCH RAHA HE AUR TUM US KO SIRF 1 HADEES SENT KAR SAKE WO BHI ZAEEF, LO AB DEKHO DALAIL KA DHER. 1 USOOL AUR BHI TAMAM QARI AKABIR KA YAAD RAKHEN, WO YE K JAB BHI AAJ K ZAMANE KA KOI AALIM YE MAULVI QUR'AAN KI KISI AYAT KI TAFSEER PESH KARE TO US TAFSEER KO US WAQT K ULMA AUR MUFASSEREEN HAZRAAT KI TAFSEER SE PARKHO AUR MATCH KARO, K JAB YE DEVBANDI AUR BARELVI MASLA IS DUNYA ME NA THA K YE MASLA TO SIRF 150 SAAL PURANA HE, AGAR AAJ K AALIM KI TAFSEER AUR BATAYA GAYA MASLA US WAQT YANI IS IKHTILAAF SE PEHLE K ULMA SE MATCH KARE AUR UN K QAUL MUTABIQ HO TO US MASLE KO LELO WARNA RUD KAR K DEEWAR PAR MARDO.

ME KIN LOGON KI BAAT KAR RAHA HOON JESE PEERENE PEER RAHIMAHULLAH, IMAM RAZI, ALLAMA IBNE KASEER, FATAWA AALAMGIRIA, FATAWA QAZI KHAN, BEHRUR RAIQ, BAZZAZIA, QAZI AZDUDDIN, IMAM JURJANI, IMAM ABU HANIFA, IBNE TEEMIA, TAFSEER KHAZAN, TAFSEER KABEER, IMAM SHAMI. TO AB TAMAM SAGE SABZI MANDI AUR KALBE RAZA HAZRAAT SE GUZARISH HE K MASLE K SUBOOT ME IN ULMA AUR IN KI KITABON K HAWALE DENE HONGAY AUR AAP K BIDDATI AUR KAM ILM ULMA K HAWALE NAHI CHALEN GAY K BILA WAJA K AQLI GHORAY, FUZOOL KA QAYAAS, ZAEEF AHADEES, KHAWAB AUR BUZROGON KI IBARAAT NAHI CHALENGI, AUR MUJE MALOOM HE K IN QAYOOD K SATH TUM TO KIA TUMHARA BAWA NA CHAL SAKA TUM KIA BECHTAY HO, TUMHARE BAWA SE JAWAB NAHI BAN PARE HAMARE AKABIREEN K TO JAL BHUN KAR UN KI IBARAAT K KHUD TARASHEEDA GUMRAH KUN MATLAB PESH KAR K KHUD BHI GUMRAH HUA AUR TUM LOGON KO BHI GUMRAH KAR GAYA, YE ABHI THORAY DALAIL HEN BOHAT ZIADA IS K BAAD PESH KARUNGA.WO KHANJAR KAHAN GAYA KILKE RAZA KA, BAS KUND HOGAYA, 2 MARTABA TOPIC SE BHAG CHUKE HO SAMNA KARO MARD BANO, BIDDATI MAT BANO. 

post-17980-0-26594300-1468924412_thumb.jpg

post-17980-0-55196800-1468924431_thumb.jpg

post-17980-0-47202200-1468924444_thumb.jpg

post-17980-0-51618900-1468924456_thumb.jpg

post-17980-0-03524500-1468924469_thumb.jpg

post-17980-0-03655000-1468924481_thumb.jpg

post-17980-0-96148600-1468924493_thumb.jpg

post-17980-0-24117600-1468924499_thumb.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

دیوبندی جی


آپ جیسے کئی پہلے یہاں آئے اور ذلیل و خوار ہو کے گئے۔


مسئلہ علم غیب پر آپ نے نامور دیوبندی مناظر ساجد خان اور ناصر نعمان ذلیل رسوا ہو کے گئے یہاں سے اور آپ یہ دعویٰ کر رہے کہ ہم ان مسائل پر بات کرنے سے بھاگتے ہیں۔۔


سرفراز گکھڑوی کی کتاب کاپی پیسٹ کرنے سے کیا آپ مناظر بن گئے ہیں؟سرفراز گکھڑوی کے رد میں عبارات اکابر کا تنقیدی جائزہ،پھر اثبات علم الغیب ،مسٰئلہ علم و غیب و حاضر ناظر اور ملا علی قاری،توضیح البیان جیسی مایہ ناز کتب موجود ہیں۔اس کے علاوہ اور بھی کتب ہٰیں جنکا لنک اسی فورم میں موجود ہے۔


مسئلہ حاضرو ناظر پر بہترین کتاب تسکین الخواطر کا لنک موجو ہے۔آپ کی ہر بات کا جواب اس کتاب میں موجود ہے۔


 


http://www.islamimehfil.com/topic/19818-book-taskeen-ul-khatir-fil-masla-e-hazir-o-nazir/

Share this post


Link to post
Share on other sites

آپ نے حضور پیران پیر دستگیر رضی اللہ عنہ نے منسوب ایک عبارت نقل کی ہےجو شخص یہ اعتقاد رکھے کہ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم غیب جانتے تھے وہ کافر ہے۔۔۔


یہ فتویٰ تو آپ کے تھانوی کے پر ہی لاگو ہو رہا ہے جو کہ ہر پاگل،جانور وغیرھم تک کے لیے بھی علم غیب کے جواز کا قائل ہے۔۔۔الحمد للہ آپ کے پپش کردہ سکین سے آپ کا مولوی ہی کافر ٹھہرا۔۔۔


Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now
Sign in to follow this  
Followers 0

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.