Sign in to follow this  
Followers 0
Zeeshan Raza

Mihajio Ke Talluq Se Sharayi Hukm

5 posts in this topic

Asslama Alaikum 
 
Jaisa ki Mashoor Hai Dr. Tahir ul Padri gumrah hai or Bhut se ulma ne us per hukm e kufar ka Fatwa Diya Hai
 
Sawal Bargah me ye pesh Hai 
 
Jin Wajuhaat ke bina per usper hukm e Kufar lgaya gya h wo wajuhat ko jaan kr Zaid uski beja Taweel kr k use bade bade Alqabat se nawzta hai....!!! 
 
Or wo mureed Hazrat Ilyas Attar Qadri Sahab Se hai
 
Or Dawate Islami Ke Fatwo ko is masle me nhi manta Hai Baki kuch kuch masail me Dawate Islami wa marakz e Bareily shareef ke fatawo ko manta Hai...
 
Kya ye whabi sifat nhi ...?
 
Puri trah se Kisi bhi bahazir hayat aqabir ulma ko nhi mante hai ksi ka kuch lena to kisi ka kuch lena....
 
To Aise Shaks Ke Upar Sharah Ka Kya Hukm hai Or usse Salam dua krna Sath Khana pina wagairah krna kaisa Hai...?
 
Tahreeri Fatwa jald az jald Inayat Farmaye Jisse zaid tak Pauhchaya Ja Saken...
 
Jazak Allah...!!!

 

Edited by Zeeshan Raza

Share this post


Link to post
Share on other sites

اگر تو ڈاکٹرطاہر کے متنازعہ عقائد، اقوال و اعمال سے واقف ہو کر بھی انہیں صحیح  سمجھتا ہے تو اس پر وہی فتویٰ ہوگا جو ڈاکٹرطاہر پر ہے۔ علیحدہ فتوٰی کی ضرورت ہی نہیں۔ کسی کے ماننے یا نہ ماننے سے فتوٰی کی صحت پر کوئی اثر نہیں پڑتا۔


Share this post


Link to post
Share on other sites

وہی فتویٰ ہوگا جو ڈاکٹرطاہر پر ہے

Kuch Ulma ka Kufar Ka hai To Kuch ka Gumrah Ka Us shaks ke upar kya Hukm ayega ?
1 Gumrah 
2 Kufar

 

علیحدہ فتوٰی کی ضرورت ہی نہیں۔ کسی کے ماننے یا نہ ماننے سے فتوٰی کی صحت پر کوئی اثر نہیں پڑتا

Fatwa Ki Sehat Per Kalam hi nhi hai Balke Zaid Ke Amal ke upar Fatwa Chahye Agr ye fatwa Pauhchaya jaye shaid Uski Islah Ho Jaye...!!!!

Share this post


Link to post
Share on other sites

ڈاکٹرطاہر پر اولاً گمراہی کا فتوی ہی تھا پھر حدِ کفر تک جانے پر کفر کا فتویٰ دیا گیا۔ ہو سکتا بعض علماء جنہوں نے صرف گمراہی کا فتویٰ ان تک حدِ کفر کی خبر نہ پہنچی ہو اس لئے ان کی جانب سے کفر کا فتویٰ نہ آیا ہو۔ بہرحال جیسا کہ میں نے پہلے عرض کیا کہ اگر تو زید ڈاکٹرطاہر کے عقائدِ باطلہ سے واقف ہونے کے باوجود اسے ٹھیک سمجھتا ہےتو فتویٰ وہی ہوگا جو ڈاکٹرطاہر پر ہے۔ اب وہ فتویٰ گمراہی کا ہو یا کفر کا۔ مثلاً حضور  تاج الشریعہ کی جانب سے فتویٰ کفر دیا گیا تو فتویٰ کفر لگے گا۔ اسی طرح کسی اور مفتی کی جانب سے اگر صرف گمراہی کا فتویٰ ہے تو اس مفتی کی جانب سے


زید پر بھی صرف گمراہی کا فتویٰ لگے گا۔


 


 


رہی بات علیحدہ سے سائل کے لئے فتویٰ حاصل کرنے کی تو یہ آپ پہلے ہی بتا چکے  کہ زید اس مسئلہ میں دعوت اسلامی کے فتاوی کو نہیں مانتا۔ تو ایسا شخص تو اسی طرز پر کسی بھی فتویٰ کا انکار کرسکتا ہے کہ جی میں تو اس فتویٰ کو بھی نہیں مانتا۔ باقی آپ ضروری سمجھتے ہیں تو دار الافتاء سے اس مسئلے پر فتویٰ حاصل کرنے کی کوشش کریں۔ 


Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now
Sign in to follow this  
Followers 0

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.