Jump to content
اسلامی محفل
Sign in to follow this  
Bhai Jaan

صلوٰۃ وسلام کے متعلق اعتراض کا جواب چاہیے

Recommended Posts

السلام علیکم

اس کا جواب تفصیلی چاہیے بڑی مہربانی ہوگی

جزاک اللہ

photo_2017-08-01_21-37-50.jpg

Edited by Bhai Jaan

Share this post


Link to post
Share on other sites

جناب جیسا کہ یہان لفظ بدعت استعمال کیا گیا ہے وہ بری بدعت پر استعما کیا گیا ہے ۔ اور قرآن مین اللہ نبی پر درود و سلام پڑہنے کا حکم دیتا ہے لیکن وقت کو متعین کرنے کی قید نہیں لگائی۔ تو آزان سے پہلے یا بعد میں پڑہے میں کوئی مسلہ نہیں کیوں کہ  اس کی مخالفت نہیں آئی نہ قرآن میں اور نہ حدیث میں۔ باقی رہا کہ آزان سے پہلے یا بعد میں درود پڑہنا اچھا ہے یا برا تو اسکا تسلی بخش جواب لیجیئے۔۔۔۔۔۔۔۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

حضرت بلال نے اپنی زندگی  کبھی بھی اس عمل کو ترک نہ کیا ۔ اور نہ انکو نبی نے روکا نہ کسی صحابی نے کہ وہ آزان سے پہلے قریش کے لئے دعا کرتے ہیں ۔ تو ہم بھی صحابی کی اس سنت پر عمل کرتے ہوئے اب کسی  ایک قوم کلئے دعا تو نہیں کرتے بلکہ نبی کی زات پر درود و سلام بھیجتے ہیں۔  اور اس کو نہ آزان کا حصہ سمجھتے ہیں نہ ہی فرض۔ لیکن اسکو ہر روز اور ہر آزان سے پہلے یا بعد میں پڑہنے میں کوئی حرج نہیں بس اسکی حثیت مستحب ہے۔ جیسا حضرت بلال دعا کرتے تھے آزان سے پہلے ترک کیے ہمیشہ پڑہتے تھے ۔۔۔۔۔ مگر نہ فرض نہ سنت بلکہ  مستحب سمجھ کر ۔

Photex163.png

Share this post


Link to post
Share on other sites

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Loading...
Sign in to follow this  

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×
×
  • Create New...