ghulamahmed17

سیدنا علیؓ کو ممبروں پر گالیاں

83 posts in this topic

یہ کھیل تماشہ نہیں ہے محترم سعیدیصاحب 

اب کہانیاں بند کریں ۔

 ابن حجر کا قول ثابت کریں یا لکھیں کہ مجھ سے غلط بیانی ہوئی 

 

غلط بیانی ماننے کے بعد اس حدیث صحیح کو مانیں ۔

آپ بہت بری طرح جھوٹے ثابت ہو چکیں ہیں  ہاں آپ ابھی ابن حجر عسقلانی کے

قول کو ثابت کر کے خود کو سچا ثابت کر سکتے ہیں ۔

میں نے بار بار لکھا کہ ابن حجر نے صرف الزام کی بات کی ہے ، آپ یہ ڈرامہ بازی نہ کریں کہ

میں کیامانتا ہوں یا نہیں کیا نہیں مانتا ۔ پہلے آپ

" (کان شدید التشیع) "

ثابت کر لیں گے پھر وہ سوال کرنا کہ میں اس کو مانتا ہوں کہ نہیں

پہلے الزام ثابت فرمایئں یا لکھیں کہ ہم نے بار بار ابن حجر کے قول کا جھوٹ لکھا ۔

-------------------------------

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

جناب قاسم صاحب

آپ نے میرا مؤقف پڑھا ہوتا تومجھ پرجھوٹ نہ بولتے۔ شدیدالتشیع کے الفاظ پہلے ابن سعد نے  لکھے پھراُن سے علامہ ابن حجر عسقلانی نے لکھے اور فیصلہ رمی بالتشیع کا دیا اور ہمارا استدلال اس کے فیصلہ سے تھا ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

7 sept
 حضرت ام سلمہ ؓ   کی روایت کا مدار ابو عبداللہ الجدلی پر ہے اور

ابن حجر عسقلانی نے اس کے متعلق لکھا : رمی بالتشیع

محمد بن سعد نے اسے شدید التشیع قرار دیا۔

ایسے الزام علیہ کی ایسی روایت

جس سے وہ اپنے مذہب کی تائید کر رہا ہو،حجت نہیں ہوتی۔

8 sep

 ابوعبداللہ الجدلی

پر الزام بتانے والا مولانا محمد علی رضوی نہیں

بلکہ حافظ ابن حجر عسقلانی اور ابن سعد ہیں۔

9 sep

ابوعبداللہ الجدلی کو

طبقات ابن سعد میں پھر تہذیب التہذیب عسقلانی میں " کان شدید التشیع" لکھا ھے۔

پھر تقریب التہذیب عسقلانی میں " رمی بالتشیع" لکھا گیا ھے۔

حافظ ذھبی نے میزان الاعتدال میں اسے بغض رکھنے والا شیعہ(شیعی بغیض) کہا ھے۔

ابن قتیبہ نے المعارف میں اس کا شمار غالی رافضیوں میں کیا ھے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اب اگر خوف ِ خدا ہے تو جھوٹ بولنے سے باز آؤ۔

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

سعدی صاحب بار بار ایک ہی بات لکھنی پڑ رہی ہے 

لکھیں کہ میں  نے حافظ حجر عسقلانی کا قول ثابت نہ کر سکنے پر

اپنا جھوٹ قبول کیا ۔ 

پھر 

ابو عبداللہ الجعدلی کو غالی شیعہ لکھ دینے سے یا ایک دو بندے

کہ کہ دینے سا  یہ الزام ثابت نہیں ہو جائے گا ۔

اور اصل کتابوں سے الزام ثابت کرنا پڑے گا ، جس طرح اب تک میں چار کتابوں سے 

اس حدیث کو حدیث صحیح ثابت کر چکا ہوں ۔

آپ نے آب تک کتنی کتابوں سے الزام ثابت کیا ہے الٹا آپ کذاب ثابت ہو چکے ہیں ۔

--------------------------

Share this post


Link to post
Share on other sites

تم جھوٹ کے بغیر چل نہیں سکتے۔اور نہ ہی تم پوری بات پڑھتے ہو۔ ایک جگہ اجمال پکڑتے ہو اور دوسری جگہ تفصیل ہو،وہ تم چھوڑ دیتے ہو۔ یہ کوئی تحقیق نہیں۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

Quote

تم جھوٹ کے بغیر چل نہیں سکتے۔اور نہ ہی تم پوری بات پڑھتے ہو۔ ایک جگہ اجمال پکڑتے ہو اور دوسری جگہ تفصیل ہو،وہ تم چھوڑ دیتے ہو۔ یہ کوئی تحقیق نہیں۔

 

سعیدی صاحب کیا آپ نے اللہ کو جان نہیں دینا ؟ کیا  جو جھوٹا دفاع کرنے کوشش آپ کر رہے ہیں کیا آپ نہیں جانتے کہ سچ کیا ہے ؟

کیا آپ کو اس الزام کی حیقت کا کوئی علم نہیں کہ اس الزام کی اصل حیقت کیا ہے ؟

 

کیا میں نہیں جانتا کہ جناب سعیدی صاحب آپ  وقت گزاری کر رہے ہیں ،  ورنہ آپ ابو عبداللہ الجدلی پر الزام کی حقیقت سے  بےخبر ہرگز نہیں ہیں ۔

 اس لیے میں بار بار آپ کو لکھ رہا ہوں کہ یا تو ابن حجر عسقلانی کا قول

پیش کر دیں ۔

یا ابو عبداللہ الجدلی پر الزام کو  کتابوں سے ثابت کر دیں 

یا پھر روایت کو صحیح مان لیں جو آخر کار آپ کو ماننا ہے ۔

بندہ کب تک حیلہ بہانہ کر سکتا ہے ۔

سعیدی صاحب  آپ جھوٹ کو سچ ثابت نہیں کر پارہے اس لیے اس روایت کو مان لیں ۔

جناب آپ کو یہ تو ہر قیمت پر لکھنا پڑے گا کہ ابن حجر عسقلانی کا یہ قول

" (کان شدید التشیع) "

ہے کہ نہیں ہے ۔ چلیں جھوٹ کو چھوڑ دیں آپ غلطی تو مانیں جناب

 کہ مجھے غلطی لگی ہے ۔

00.png.40ce32e793905297246ba4611c93829e.png

Share this post


Link to post
Share on other sites

1-کیا  ابن حجر عسقلانی نے ابن سعد والی شدید التشیع کی جرح لکھی یا نہیں؟

2-  کیا اسی جرح کی بنیاد پر رمی بالتشیع کا فیصلہ لکھا یا نہیں؟ 

3-رمی بالتشیع ھونے کے بعد اس کی تشیع پرور روایت کی کیا حیثیت رہ جاتی ہے؟

Share this post


Link to post
Share on other sites
Quote

 

1-کیا  ابن حجر عسقلانی نے ابن سعد والی شدید التشیع کی جرح لکھی یا نہیں؟

2-  کیا اسی جرح کی بنیاد پر رمی بالتشیع کا فیصلہ لکھا یا نہیں؟ 

3-رمی بالتشیع ھونے کے بعد اس کی تشیع پرور روایت کی کیا حیثیت رہ جاتی ہے؟

 

کہانی نہیں سنائیں محترم

مجھے فقط

" (کان شدید التشیع) "

ابن حجر عسقلانی کا یہ قول دیکھائے

یا لکھیں کہ میں نے جھوٹ بولا تھا ۔

صرف اس قول کا جواب لکھیں ؟

ابن حجر کا ہے یا نہیں ہے ؟

 

آپ کی کسی کہانی پر بھی بغیر کتاب کے کوئی یقین نہیں ، اپنا لکھا ہوا ثابت کر دیں ۔

-------------

Share this post


Link to post
Share on other sites

Posted (edited) · Report post

On 9/26/2019 at 9:55 PM, ghulamahmed17 said:

کہانی نہیں سنائیں محترم

مجھے فقط

" (کان شدید التشیع) "

ابن حجر عسقلانی کا یہ قول دیکھائے

یا لکھیں کہ میں نے جھوٹ بولا تھا ۔

صرف اس قول کا جواب لکھیں ؟

ابن حجر کا ہے یا نہیں ہے ؟

 

آپ کی کسی کہانی پر بھی بغیر کتاب کے کوئی یقین نہیں ، اپنا لکھا ہوا ثابت کر دیں ۔

-------------

کہانی اور بحث کا فرق کرو، پھر یہ ارشاد سنانا۔

میں نے ابوعبداللہ الجدلی کے متعلق ابن حجر عسقلانی کا فیصلہ پہلے تقریب التہذیب کے حوالے سے لکھا تھا (رمی بالتشیع)

بعد کی پوسٹ میں اس دعویٰ کی دلیل میں (کان شدید التشیع) کا قول پیش کیا جو ابن حجر ھی نے لکھا اور ابن سعد کے حوالے سے لکھا۔

آپ کو بات سمجھ نہیں آتی یا دھوکہ دہی کے جذبہ نے آپ کو نا سمجھ کر دیا ہے ۔ کیا آپ کو پہلے ابن سعد اور پھر ابن حجر کے الفاظ میرے کلام میں نظر نہیں آتے؟

Edited by Saeedi

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.