Jump to content

حدیث چار چیزوں کو چار وجہ سے برا مت جانو ( چار فائدہ مند بیماریوں ) کی تحقیق


Recommended Posts

 

IMG_20220524_113533.jpg.3c1ad5c2d5062563891cf15492373fad.jpg 

یہ ایک موضوع روایت ہے جو کئی کتب احادیث میں موجود ہے درج ذیل سند کے ساتھ

 

..... يحيى بن زهدم، عن أبيه، حدثني أبي عن أنس بن مالك قال قال رسول الله ......

 

( كتاب شعب الإيمان - ط الرشد 11/426 )

 

( كتاب الطب النبوي لأبي نعيم الأصفهاني 1/369 )

 

( كتاب المشيخة البغدادية لأبي طاهر السلفي - مخطوط 3/106 )

 

( كتاب الموضوعات لابن الجوزي 3/204 )

 

 

روایت کا متن اس طرح ہے

 

لا تكرهوا أربعة فإنها لأربعة لا تكرهوا الرمد فإنه يقطع عروق العمى ولا تكرهوا الزكام فإنه يقطع عروق الجذام ولا تكرهوا السعال فإنه يقطع عروق الفالج ولا تكرهوا الدماميل فإنها تقطع عروق البرص

 

چار چیزوں کو چار وجہ سے برا مت جانو آشوب چشم کو برا مت جانو کیوں کہ وہ بینائی کی جڑ کاٹتی ہے زکام کو برا مت جانو کیوں کہ وہ جذام کی جڑ کاٹتا ہے کھانسی کو برا مت کہو کیونکہ وہ فالج کی جڑ کاٹتی ہے چہرے کے دانوں کو برا مت جانو کیوں کے وہ برس کی جڑ کاٹتے ہیں

 

 

امام ابن الجوزی رحمہ اللہ اپنی الموضوعات میں اسے نقل کرکے فرماتے ہیں :

 

هذا حديث موضوع

 

قال ابن حبان: يحيى عن أبيه نسخة موضوعة لا يحل كتبها إلا على التعجب

 

یہ حدیث موضوع منگھڑت ہے امام ابن حبان نے فرمایا یحیی بن زھدم نے اپنے باپ سے جھوٹی روایات کا نسخہ روایت کیا اس کی روایت کتابوں میں لکھنا جائز نہیں ما سوائے تعجب کہ

 

 

شیخ الاسلام امیر المؤمنین فی الحدیث حافظ ابن حجر عسقلانی رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں

 

هذا باطل

 

یہ ایک جھوٹی روایت ہے 

 

( كتاب لسان الميزان 6/255 )

 

 

دراصل مسئلہ یہ ہے کہ یحیی بن زھدم فی نفسہ تو صدوق ہے لیکن اس نے اپنے باپ سے زهدم بن الحارث سے موضوع روایات کا ایک نسخہ روایت کیا لہذا اس کے باپ سے اس کی روایات جھوٹی شمار ہوں گی جیسا کہ حافظ ابن حجر اور امام ابن الجوزی کا حکم واضح ہے

 

جیسا کہ امام ذہبی رحمہ اللہ نے بھی اس کا تذکرہ کیا :

 

يحيى بن زهدم الغفاري له نسخة موضوعة عن أبيه عن جده عن أنس

 

( تلخيص كتاب الموضوعات :- 895 ) 

 

 

لہذا اس جھوٹی روایت کی نسبت نبی علیہ الصلاۃ و السلام کی طرف کرنا حلال نہیں 

 

 

فقط واللہ و رسولہ اعلم باالصواب

 

خادم الحدیث النبوی ﷺ سید محمد عاقب حسین رضوی

Edited by Aquib Rizvi
Link to comment
Share on other sites

  • Aquib Rizvi changed the title to حدیث چار چیزوں کو چار وجہ سے برا مت جانو ( چار فائدہ مند بیماریوں ) کی تحقیق

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Loading...
×
×
  • Create New...