Jump to content
IslamiMehfil

ممرزا انجینئر کہتا ہے کہ غوث اعظم رحمۃ اللہ علیہ کتاب " غنیہمۃ الطالبین " میں انہوں نے لکھا ہے کہ اہل حدیث اصل اہل سنت ہیں تو کیا براۓ مہربانی کوئی اس کا جواب عنایت کر سکتا ہے؟ں


Recommended Posts

Link 1

https://masailworld.com/guniyatut-talibeen-kis-ki-kitab-hain/

Link 2

https://faizahmadchishti.blogspot.com/2017/12/blog-post_90.html?m=1

 

 

غنیۃ الطالبین حضور غوث پاک کی کتاب ہے یا نہیں ؟ اس میں علماےکرام کا اختلاف ہے, بعض محقق علماے کرام (جیسے شیخ محقق عبدالحق محدث دہلوی رحمۃ اللہ علیہ اور علامہ عبدالعزیز پرہاروی رحمۃ اللہ علیہ وغیرہ) کے نزدیک یہ حضور غوث پاک رضی اللہُ تعالیٰ عنہ کی کتاب نہیں ہے بلکہ آپ رضی اللہ عنہ کی طرف منسوب کردی گئی ہے جبکہ بعض علماےکرام (جیسے امام ابنِ حجر مکی رحمۃ اللہ علیہ وغیرہ ) کے نزدیک یہ حضور غوث پاک رضی اللہ عنہ کی ہی کتاب ہے مگر بعض ظالموں نے اس کتاب کے اندر الحاقات کردیے ہیں (یعنی اپنی طرف سے کچھ باتیں بڑھادی ہیں) اور سیدی اعلحضرت امام احمد رضا خان رحمۃ اللہ علیہ کا بھی رجحان اسی جانب لگتا ہے.

شیخ عبدالحق محدث دہلوی رحمۃ اللہ علیہ تحریر فرماتے ہیں :

"ھرگز نہ ثابت شدہ کہ اس تصنیف آنجناب است اگرچہ انتساب باآنحضرت”

یعنی ہرگز ثابت نہیں ہو سکا کہ یہ (غنیۃ الطالبین) حضور غوث پاک رضی اللہ عنہ کی تصنیف ہے, اگرچہ منسوب ان کی طرف ہے ۔

(امام الاولیاء صفحہ 85 بحوالہ حاشیہ نبراس مکتبہ اعلحضرت)

حضرت علامہ عبدالعزیز پرہاروی رحمۃ اللہ علیہ تحریر فرماتے ہیں :
"ولا یغرنک وقوعہ فی غنیۃ الطالبین منسوبتہ الی الغوث اعظم عبدالقادر جیلانی قدس سرہ العزیز غیر صحیحۃ والاحادیث الموضوعۃ وفیھا وافرۃ”

یعنی تجھے یہ بات دھوکے میں نہ ڈالے کہ (احناف کے خلاف) بعض مسائل, اس غنیۃ الطالبین میں واقع ہیں جو حضور غوث اعظم عبدالقادر جیلانی قدس سرہ العزیز کی طرف منسوب ہے (اور یہ منسوب ہونا) درست نہیں ہے. اور موضوع (من گھڑت) احادیث اس میں وافر (کافی) مقدار میں موجود ہیں.

(امام الاولیاء بحوالہ النبراس علی شرح العقائد صفحہ 86 مکتبہ اعلحضرت)

سیدی اعلحضرت امام احمد رضا خان رحمۃ اللہ علیہ تحریر فرماتے ہیں :
اولاً کتاب غنیۃ الطالبین شریف کی نسبت , حضرت شیخ عبدالحق محدث دہلوی رحمۃ اللہ علیہ کا تو یہ خیال ہے کہ وہ سرے سے حضور پرنور سیدنا غوث اعظم رضی اللہ تعالٰی عنہ کی تصنیف ہی نہیں مگر یہ نفی مجرد ہے۔

اور امام حجر مکی رحمۃ اللہ علیہ نے تصریح فرمائی کہ اس کتاب میں بعض مستحقینِ عذاب نے الحاق کردیا ہے،

فتاوٰی حدیثیہ میں فرماتے ہیں:

"وایّاک ان تغتربما وقع فی الغنیۃ لامام العارفین و قطب الاسلام والمسلمین الاستاذ عبدالقادر الجیلانی رضی اللہ تعالٰی عنہ فانہ دسہ علیہ فیہا من سینتقم اﷲ منہ والا فہو برئ من ذلک” ۔

یعنی خبردار دھوکا نہ کھانا اس سے جو امام اولیاء سردارِ اسلام و مسلمین حضور سیدنا شیخ عبدالقادر جیلانی رضی اللہ تعالٰی عنہ کی غنیہ میں واقع ہوا کہ اس کتاب میں اسے حضور پر افتراء کرکے ایسے شخص نے بڑھا دیا ہے کہ عنقریب اللہ عزوجل اس سے بدلہ لے گا ، حضرت شیخ رضی اللہ تعالٰی عنہ اس سے بَری ہیں۔

(الفتاوی الحدیثیۃ صفحہ 148 مطبعۃ الجمالیہ مصر)

ثانیاً اسی کتاب میں تمام اشعریہ یعنی اہلسنت و جماعت کو بدعتی ، گمراہ ، گمراہ گر لکھا ہے کہ:

"خلاف ماقالت الاشعریۃ من ان کلام اﷲ معنی قائم بنفسہ واﷲ حسیب کل مبتدع ضال مضل”

بخلاف اس کے جو اشاعرہ نے کہا کہ اﷲ تعالٰی کا کلام ایسا معنی ہے جو اس کی ذات کے ساتھ قائم ہے اور اﷲ تعالٰی ہر بدعتی، گمراہ و گمراہ گر کے لیے کافی ہے۔(ت)

(غنیۃ الطالبین جلد 1 صفحہ 91 دار احیاء التراث العربی بیروت)

کیا کوئی ذی انصاف کہہ سکتا ہے کہ معاذ اﷲ یہ سرکار غوثیت کا ارشاد ہے جس کتاب میں تمام اہلسنت کو بدعتی ، گمراہ گمراہ گر لکھا ہے اس میں حنفیہ کی نسبت کچھ ہو تو کیا جائے شکایت ہے۔ لہذا کوئی محلِ تشویش نہیں۔ (الخ)

(فتاوی رضویہ جلد 29 صفحہ رضا فاؤنڈیشن لاہور)

واللہ اعلم ورسولہ اعلم عزوجل وصلی اللہ علیہ والہ وسلم

Link to post
Share on other sites
  • 2 weeks later...

Ghunya mein Ahle Hadith bil muqabil Ahle Ra'ee heh ... yehni joh aqli goray dora kar Quran ko samajtay hen un kay khilaaf Ahle Hadith yehni Ahle Sunnat.

Aik zamana thah jab philosophy mantiq waghayra kay zor say logoon ko Quran ko samajna shoroon keeya aur inneeh ko Sunnat/Hadith par tarjeeh denay lagay. yahan par ghayr muqallid Wahhabi ahle hadith murad nahin balkay woh murad hen jo Sunnat par chaltay thay. aur woh sab hi muqallid aur imamoon ko follow kartay thay.

Ghayr muqallidiyat toh 150/200 saal purani heh. Wahhabiyun nay Ahle Hadith ka title apna leeya jistera mein aik Jammat e Sahaba bana loon Sahabi ka lakab na-haq apna upoor laga loon aur phir jitni hi Sahaba ki shaan mein Hadith hen apnay upar aur meray peechay chalnay waloon par fit karna shoroon ho jahoon. Toh aisa karnay say mein aur peray gumra perokar Sahabiat kay darjay par faiz hen? Nahin nah! Is'see tera Wahhabiyun ka Ahle Hadith ka title apna lenay say woh Ahle Hadith nahin.

Link to post
Share on other sites
  • 2 weeks later...
  • 1 month later...

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Loading...
  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×
×
  • Create New...