Jump to content
اسلامی محفل
Sign in to follow this  
Abdulsalam

Imam ke peechy Quran or Sure Fatiha ki tilawat nahin

Recommended Posts

(bis)

 

(bis)

 

Tamam Musalmanon ko Asslam-o-Alekum

 

Mera Nam Abdul Salam hai, main ne is site ko aik search (Masnaf-e abu-Ishaq) ki talash ke darmiyan paya,

 

ye pehlye hi batana zarori samaghta hon ke mera maslak Taqleed nahin hai..

 

1st, khair is silsilaye main, main kia meri bisat kia, sirf ye araz hai ke, yahan aik groh(Ahle Hadith) aik unnat ko jari karnye ke barain main tag-o-do kar raha hai, tu dosri taraf dosra groh (Dawat-e-Islami(Hanafi)) sunnat ko khatam karnye ki koshish kar raha hai,

jesa ke Hanafi hazraat ye mantye hain ke rafae' dain pehlye sunnat-e-Rasool-Allah (saw) thi, to phir is ke karnye se yaqeenan sawab hi ho satka hai na ke azab,

 

2nd, Rafae' Yadain karne ya na karnye se namaz ki sehat per koi asar nahin parta "namaz ho jati hai kio ke Rafae' Yadain sunnat hai faraz ya wajib nahin,(hanafi hazrat ke iqrar kar chukye hain), ahle Hadith ke nazdik bhi Rafae' Yadain choot janye ki soorat main sajda sehve (sahoo) lazim nahin,

 

3rd, humain jis masalye per hal ki talash hai wo aqeeda hai, na ke farooi masayel, or is ke ilawa is masalye ko dekhna chahiye jis se namaz ki sehat per asar perta ho.

 

main apni baat phir dohrata hon ke Rafae' Yadain koi khas masala nahin bulke zarori cheez hai "fateha khalf al imam"

humain ye hadith madd-e-nazar rakhni chahiye ke

 

Guzarish hai ke is per tehqeeq ker kye jawab marhamat farmayain

 

Asslam-o-Alekum

post-2536-1225470154.jpg

post-2536-1225470382.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

(bis)

Tamam Musalmanon ko Asslam-o-Alekum

Mera Nam Abdul Salam hai, main ne is site ko aik search (Masnaf-e abu-Ishaq) ki talash ke darmiyan paya,

ye pehlye hi batana zarori samaghta hon ke mera maslak Taqleed nahin hai..

Gumrahi chor kar taqleed pakro...

3rd, humain jis masalye per hal ki talash hai wo aqeeda hai, na ke farooi masayel, or is ke ilawa is masalye ko dekhna chahiye jis se namaz ki sehat per asar perta ho.

main apni baat phir dohrata hon ke Rafae' Yadain koi khas masala nahin bulke zarori cheez hai "fateha khalf al imam"

humain ye hadith madd-e-nazar rakhni chahiye ke

Guzarish hai ke is per tehqeeq ker kye jawab marhamat farmayain

Asslam-o-Alekum

 

323.gif

(saw)

324.gif

(saw)

325.gif

(saw)

326.gif

(saw)

327.gif

(saw)

328.gif

(saw)

329.gif

(saw)

330.gif

(saw)

331.gif

(saw)

332.gif

(saw)

333.gif

(saw)

334.gif

(saw)

335.gif

(saw)

 

 

Detailed Discussion on this issue can be found on follwoing link

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

Asslam-o-Alekum

Janab bohat bohat shukariya, aap ne itni tehqeeq is silsilye main ki,

meri guzarish hai ke main ne jo hadith quote ki thi wo Bukhari ki hadith thi jis mail saf likha hai ke

"jis ne fatiha nahin parhi is ki namaz nahi"

note karnye ki baat ye thi ke is main takhsees nahin thi ke,

 

1) imam ye muqtadi

2) Akela ya jamat ke sath

 

jab ke aap ne jitni ahadith pesh kin un main se siwaye hadith 32, 34, 24 or 49 ke tamam main qirat ki takhsees hai na ke fatiha ki, jesa ke aap ki pesh ki gai Imran bin husain (Radi Allah-o-Anhuma) ke hadith, (35 and 36) main qirat yani fatiha ke baad sorat ki qirat se rukne ka zikr hai,

 

Hadith 49 main lafz "kisi" ka zikar hai nake khas nam ka (Sanad)

 

Hadith 32, 34 and 24 tehqiq ke qabil hai (insha Allah agar sahi pai gain to zaroor rujoo karonga)

 

rah gai baat is ke haq main (yani asbat main) to is ke liye mandraja zail pesh-e-khidmat hai

 

Is ke ilawa tamam ahadith se Qirat (Fatiha ke bad sura ki tilawat ya qirat) ka rukna sabit hai or main is ka qail bhi hon

 

 

Phir Milaingye

Asslam-o-Alekum

post-2536-1225534967.jpg

post-2536-1225534989.jpg

post-2536-1225535001.jpg

post-2536-1225535015.jpg

post-2536-1225535027.jpg

post-2536-1225535049.jpg

post-2536-1225535061.jpg

post-2536-1225535098.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

(bis)

 

(saw)

 

quran_ka_hukm_1.GIF

quran_ka_hukm_2.GIF

ab ke aap ne jitni ahadith pesh kin un main se siwaye hadith 32, 34, 24 or 49 ke tamam main qirat ki takhsees hai na ke fatiha ki, jesa ke aap ki pesh ki gai Imran bin husain (Radi Allah-o-Anhuma) ke hadith, (35 and 36) main qirat yani fatiha ke baad sorat ki qirat se rukne ka zikr hai,

 

Hadith 49 main lafz "kisi" ka zikar hai nake khas nam ka (Sanad)

 

Hadith 32, 34 and 24 tehqiq ke qabil hai (insha Allah agar sahi pai gain to zaroor rujoo karonga)

fatiha_k_nafi_mein_1.GIF

fatiha_k_nafi_mein_2.GIF

 

 

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

1_aitraz_bukhari.GIF

Asslam-o-Alekum

Janab bohat bohat shukariya, aap ne itni tehqeeq is silsilye main ki,

meri guzarish hai ke main ne jo hadith quote ki thi wo Bukhari ki hadith thi jis mail saf likha hai ke

"jis ne fatiha nahin parhi is ki namaz nahi"

note karnye ki baat ye thi ke is main takhsees nahin thi ke,

 

1) imam ye muqtadi

2) Akela ya jamat ke sath

Reply -1

1_reply_2.GIF

Reply -2

1_aitraz_reply_abu_daud.GIF

 

 

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

(bis)

 

Asslam-o-Alekum

Aap jawab detye hoye shaid ye bhool gaye the ke meri post (Attached) karda pages main Imam Novi se ye manqool he ke Imam Abu Hanifa, and Imam Muhammad ke ilawa tamam imam (Imam Shafai, Imam Malik) Fatiha Khalf-al-Imam ke qail hain

is ke ilawa Allam Shahrani hon ne bhi likha hai ke baad main Imam Muhammad and Imam Abu Hanifa dono ne apnye is puranye qol se rujou kar liya tha???

 

rest of all

 

aap ke tawaja chahta hon ke aap ko ye jawabat is waja se likh ker denye ke mehnat kari pari kion ke main ne ya kisi ahl-e-Hadith se ise hujjat mana hai (tawajja is taraf) jab tak aap apnye mukhalif ke kitabi (us ki strategy) ka mutalia nahin karain gye to baqol aap ke aap logon ki islah kesye karaingye

lehaza aap se guzarish hai ke zara listed site per ja kar in kitabon ka mutalia karian and apni raye se nawazain

 

***********************************************

*************************************************

 

is ke ilawa is site per tamam aqsam ki kitabian (ahl-e-Hadith, beshtar) mil jaingi leha za pehlye in ka mutalia kar lain to yaqinan kisi na kisi ki islah zaroor ho gaye gi

 

******

 

yahan downlload kernye ke liye account bananye ki zaroorat bilkul bhi nahin hai

han agar upload karnye ke liye account banan parye ga lakin free

 

 

 

aggar aap ke pass bhi koi aisi site ho to zaroor share karain

 

 

Abdul Salam

Asslam-o-Alekum

Phir Milaingye

Share this post


Link to post
Share on other sites

:lol:

 

post-393-1225821488.gif

(bis)

 

Asslam-o-Alekum

Ruko ki rikar ke liye main aik kitab post kar raha hon,

 

wesye hum ye hi mantye hain ke Sora Fatiha agar na mil saki to Rikat nahin hoti hai (chahye ruko mil jaye ha nahin)

 

 

 

 

 

 

Asslam-o-Alekum

Phir Milaingye

Edited by Ya Mohammadah
attached book removed due to containing biddati's site in footnote

Share this post


Link to post
Share on other sites
(ja) Saeedi bhai buhat achi sharing hai.

 

(bis)

 

Assalm-o-Aleum to All Muslim

 

Janab e Man, Saeedi sahib

 

Apnye barye main to bata dain khud kia hain (Hanafi, Shafai, Maliki, Humbali, Shia, ya phir Ghair Muqallid (Jamat al Muslimeen)

 

Guzarish ye hai ke humarye liye Quran and Ahadith ke ilawa sirf wo hi kutum Hujjat hain jo ke Quran o Hadith ke ahkam se na takrati hon.

 

Quran and Sahi Ahadith se sabith kar chukka hon, baraye meharbani details pichli posts perh lain. Wesye bhi kuch ziyada pages nahin hain sirf aik hi page hai….

 

Dosri baat ye key aap ne ye post yaqeenan kisi risalye se hi daikh ker post ki hain warna yaqinan aap ko mere post kerda Bukhari ke pages, meri roman Urdu post, and last posted entry se hi aap ke bohat se sawalon ke jawabat mil saktye thye…. Na haq aap ne khud ko mushkil main dala,

 

“Fasaa’da” (Zaid) ki details already de ja chuki hai, Abada bin Samat ki hadith ki details bhi de sakta hon and is ke ilawa tamam sahaba e Ikram (ra), Tabaeen, Taba Tabeen, buzurgane deen ke amal bhi kitabon main dikha sakta hon (Insha Allah),

 

Lakin problem ye hai ke aap shaid apne aap ko ziyada ilm wala samajhtye hain, kion ke aap apnye aalim ke baat nahin man raye, main ab Janab Abdul Qadir Jilani(RAH) se bhi sabit karon to bhi nahin maningye….. to meri mehnat ka faida????

 

Aap ke nazdeek to Imam Bukhari (RAH) bhi naqis thehrye ke un per bhi ilzam ke Hanfiyat ki mukhalifat main hadith ko mukammal bayan nahin kia … Allah o Akbar kia jisarat hai.

 

Waswasa kis ne phelaya ya phelanye ki koshish kar raha hai?? Main ya aap????

 

Ab aik hi maslak reh jata hai jo is qisim ke batain kar sakta hai and wo merye nazdeeq Khariji hain, wo jinhon ne din e Haq se khorooj kia…..?

 

Bukhari Awal(1), muslim dom(2), ibne Maja, Sunnan Abi Dawood, Mishkwat Almasabih biltarteeb som (3) and chaharam (4) darjye ke kitabain hian,(Allah ghalati ko muaf karye)

 

Agar koi hadith Bukhari o Muslim main ho to in ki mukhalifat main kisi dom ya som darjye ke ahadith se istadlal nahin kia jata, is tarha agar koi hadith bukhari o muslim main isharatun (sign) warid hoi ho to kisi our hadith ki kitab se jiss main is hadith se related sarahatun (in details)mojood ho istadlal and is moaqaf ki taeed main istimal kar saktye hain (ye meri soch ghalat bhi ho sakta hai, lakin details ke liye ilm-e-Hadith ke hamil hazrat se pooch saktey hain)

 

Aap ki baton se to saf zahir hai ke jo baat aap ke mowafiqat main hia sirf wo sahi hai baqi sab mardood hai (Naooz o Billah)

 

Sofi Hazrat humarye nazdeek bilkul bhi Hadith ki Riwayat kiye janye ke qabil nahin hain and muhadatheen ke nazdeek bhi (jesa ke aap khud muslim ka hawala de rahye hain). Wo to aap ko sirf wo hi samajh aata hai jo inhon ne kaha ya kia hota hai.

 

Allama Shaa’rani ki kitab ka page scan bhi kardon to, lagta to ye hai ke aap us ko bhi nahin manyen gye

 

Ya sirf wo manna chahtye ho shaitan samjha raha hai…..

 

Ab agar aap ki kitab ka hawala de diya to kahogye ke is main mukhalif maslki hazrat ne dakhal dar makholat kar rakha hai and ye bayan musanif se sabit nahin……. To phir kaji (terha pan) to aap ke dil main hoa….

 

Jub pesh karda Quran, Hadith, Muhaditheen, Ulama ka ihtram nahin kar saktye to mujhye ilm nahin kis ka kar saktye ho…. Shaid Torah, Injeel, Zaboor, Awasta, Ramain, Geeta, waghera ka, kion ke aweeda to kahin na kahin un he se ja milta hai. (sofion ka bhi)

 

Alfaz ke meaning Ahadith ke silsilye main sirf wo liye jatye hain jis se Muhadatheen ne istadlal kia ho kahin kisi tarha and kahin kisi or karha is silsilye main again humain apni aqal laranye ke zaroorat nahin (ye lafz “Khaddaj” ke silsilye main hai)

 

Abu Huraira (ra) se marvi “meri aameen fot na honye paye” ka zikar achi jagha, jab koi istadlal na bacja to ye pesh kar diya, Huzoor ke zamnye main and un ke zamanye ke baad bhi jab tak saf sahi na ho jati namaz shoro nahin hoti thi, and ye amal Hazarat(RA) ye batanye ke liye kartye hongye ke abhi saf seedhi nahin hoi hai (Wallah Aalm bis sawab) (wesye ye mera khud ka istadlal hai) warna Hazrat Abu Huraira se marvi Sahi Hadith pesh ki jachuki hai

 

Is ke bawajood aap ne aik se zaid jaghon per dili tor per (Baghair zaban hilaye) fatiha ki farziyat mani hai…… jub ke ahnaf (aaj kal ke and taqleed e jamid ke hamil log) is ke bhi inkari hian. Jab ke main ne apni last post main ye bata diya tha ke awaz ke sath qirat-e-Fatiha ke hum bhi qayal nahin

 

Ab Jamat Dawat-e-Islami and Diobandi ke logon per munhasir hai kia kia manin(accept) kia na manyen (not accept)

 

 

“Beshak Allah hi Hidayat denye wala hai, humarye bas main kuch bhi nahin”

Asslam-o-Alekum

 

Abdul Salam

 

 

In sab ke ilawa mazeed aik post paste kar raha hon mulahiza karain

 

Is ke ilawa jawab zaroor marhamat farmain…

Share this post


Link to post
Share on other sites
(ja) Saeedi bhai buhat achi sharing hai.

 

 

(bis)

 

(salam)

 

نماز کے مسائل

 

مسائل نماز شیخ عبدالقادر جیلانی رحمہ اللہ کی زبانی

 

: قرآن کریم نے نماز کے لیے وضو کا حکم دیا ہے اور وضو کے ارکان کا ذکر فرماتے ہوئے سر کا مسح کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔ یہ مسح کیا ہے اور کیونکر کیا جاتا ہے؟

 

جواب: مسح چھونے یا ہاتھ پھیرنے کو کہتے ہیں اور اس کا طریقہ یہ ہے: (( ان یغمس یدیہ فی الماءثم یرفعھما فارغتین فیضعھما علی مقدم راسہ .... الی قفاہ ویعیدھا الی الموضع الذی بدءمنہ )) ( غنیة الطالبین باب اول فصل ارکان و واجبات نماز صفحہ 7 ) کہ وضو کرنے والا اپنے دونوں ہاتھ پانی میں ڈبو کر خالی باہر نکالے ( یا ویسے ہاتھوں میں پانی لے کر پانی کو گرا دے ) پھر اپنے سر پر سامنی جانب ( ماتھے کے اوپر بالائی کنارے ) سے ہاتھوں کو پھیرتا ہوا پچھلی طرف گدی تک لے جائے پھر وہاں سے اسی طرح واپس لوٹاتا ہوا وہیں آ کر چھوڑ دے جہاں سے اس نے مسح شروع کیا تھا۔

 

سوال: آپ نے ذرا آگے چل کر وضو کے مسنونات کے ذکر میں گردن کا مسح بھی شمار کیا ہے۔ مگر یہاں جب آپ نے مسح کا طریقہ بتایا ہے تو گردن کے مسح کا ذکر نہیں کیا۔ اس کی کیا وجہ ہے؟

 

 

 

جواب: ( بات دراصل یہ ہے کہ ) مسح کے لیے قرآن پاک میں صرف یہی وارد ہوا ہے کہ وامسحوا برو ¿سکم اپنے سروں پر مسح کرو۔ پس فرض امر صرف سر کا مسح ہی ہے۔ گردن کا مسح وضو کے فرائض میں داخل نہیں ہے۔

 

 

 

اذان

 

سوال: ہماری بعض مساجد میں تو اذان سے پہلے اور بعد درود شریف اور سلام کے نام سے یہ کلمات گا کر پڑھے جاتے ہیں: (( صل علی نبینا صل علی محمد اور الصلٰوة والسلام علیک یا رسول اللہ، الصلٰوة والسلام علیک یا حبیب اللہ )) اور بعض مساجد میں اذان اپنی اصلی شکل میں اللہ اکبر اللہ اکبر سے شروع ہو کر لا الہ الا اللہ پر ختم کر دی جاتی ہے۔ مسئلہ کی صحیح صورت کیا ہے؟

 

جواب: حدیث پاک میں ہے:

(( اما دخول الوقت فبعلمہ یقینا.... ثم یوذن فیقول اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر )) کہ جب اذان کا صحیح وقت دریافت ہو جائے تو موذن یوں اذان شروع کرے۔ اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر اللہ اکبر ( آخر تک ) اور آخری کلمہ اللہ اکبر اللہ اکبر لا الہ الا اللہ کہہ کر اذان ختم کر دے۔ ( غنیة الطالبین صفحہ 9 )

( یعنی حدیث پاک کے مطابق اذان کے ان مقررہ کلمات کے سوا اور کوئی زائد کلمہ اذان کے ساتھ پہلے یا بعد شامل نہیں ہے۔ یہ سب کچھ بعد کی پیداوار ہے )

 

صف بندی

 

سوال: نماز کی جماعت کھڑی ہو تو صف میں کس طرح کھڑا ہونا چاہیے۔ آیا الگ الگ ایک دوسرے سے فاصلے پر یا خوب مل، کر اور کندھے سے کندھا ملا کر؟

 

جواب: (( ینبغی للامام.... یلتفت یمینا وشمالا فیسوی الصفوف فیقول استووا.... ویامرھم بسد الفرج وتسویة المناکب ودنو بعضھم من بعض حتی یتماس مناکبھم لان اختلاف المناکب واعوجاج الصفوف نقص فی الصلٰوة وحضور الشیاطین وقیامھم مع الناس فی الصفوف )) ( غنیة الطالبین صفحہ764 ) یعنی امام کے لیے لازم ہے کہ ( نماز کی نیت باندھنے سے پہلے ) اپنے دائیں بائیں دیکھ کر صفوں کا جائزہ لے، صفوں کو سیدھا کرے اور نمازیوں کو ہدایت کرے کہ اپنے درمیانی فاصلے دور کر کے ایک دوسرے سے اتنے زیادہ قریب ہو جائیں کہ آپس میں کندھے سے کندھا خوب مل جائے۔ کیونکہ یہ درمیانی فاصلے اور صفوں کا ٹیڑھا ہونا نماز کا نقص ہے اور ان فاصلوں میں شیاطین گھس جاتے ہیں اور لوگوں کے ساتھ صفوں میں کھڑے ہو جاتے ( تا کہ قریب ہو کر وسوسے ڈالیں اور دل کو نماز سے اچاٹ کر دیں )

 

نماز کی نیت

 

سوال: نماز کی نیت باندھتے وقت بہت سے لوگ نیت الفاظ پکارتے ہیں۔ مثلا فجر کی نماز ہے تو یوں کہیں گے: دو رکعت نماز فرض، فرض اللہ تعالیٰ کے، پیچھے اس امام کے، منہ طرف کعبہ شریف، اللہ اکبر۔ نیت کے لیے ایسے الفاظ کہنے کے بارے میں کیا حکم ہے؟

 

جواب: دخل فی الصلوٰة بقول اللہ اکبر لا یجزئہ غیرہ من الفاظ التعظیم ( غنیة الطالبین صفحہ 10 ) یعنی نماز میں داخل ہونے کے لیے صرف اللہ اکبر ہی کہنا چاہیے۔ اس کلمہ کے سوا نیت کے لیے کوئی بھی دوسرا کلمہ زبان سے کہنا جائز نہیں ہے۔ کیونکہ النیة فمحلھا القلب ( ص 9 ) یعنی نیت دل کا فعل ہے، زبان کا فعل نہیں ہے ( اس لیے دل کا ارادہ ہی نیت ہے زبان سے کچھ کہنا درست نہیں ہے )

 

اقامت

 

سوال: بعض لوگ اقامت بھی اذان کی طرح دوہرے کلموں کے ساتھ ہی پکارتے ہیں اور بعض اکہری کہتے ہیں۔ صحیح مسئلہ کیا ہے؟

 

جواب: جب اذان کے بعد جماعت کھڑی ہو تو موذن اس طرح اقامت پکارے۔ اللہ اکبر اللہ اکبر اشھد ان لا الہ الا اللہ اشھد ان محمد الرسول اللہ حی علی الصلوٰة حی علی الفلاح قدقامت الصلوة قد قامت الصلوة اللہ اکبر اللہ اکبر لا الہ الا اللہ۔ ( غنیة الطالبین صفحہ 9 )

( یعنی اذان کے دو دو کلمے اور اقامت کا ایک ایک کلمہ ہی سنت ہے۔ حدیث پاک میں ایسا ہی وارد ہوا ہے )

 

ہاتھ کہاں باندھے جائیں

 

سوال: نماز کی نیت کرتا ہوا نمازی اپنے ہاتھ کہاں باندھے۔ ناف پر یا زیر ناف یا کہیں اور؟

 

جواب: وضع الیمین علی الشمال فوق السرة ( غنیة الطالبین، صفحہ 11 ) کہ نماز میں ہاتھ نہ ناف پر باندھے جائیں نہ زیر ناف بلکہ ناف سے اوپر لے جا کر اپنا دایاں ہاتھ بائیں ہاتھ پر باندھا جائے۔

Share this post


Link to post
Share on other sites
(ja) Saeedi bhai buhat achi sharing hai.

 

(bis)

 

(salam)

 

فاتحہ خلف الامام

 

سوال: نماز باجماعت میں امام کے پیچھے سورہ فاتحہ پڑھی جائے گی یا نہیں؟

 

جواب: سورہ فاتحہ امام کے پیچھے بھی پڑھی جائے گی۔ کیونکہ فان قرائتھا فریضة وھی رکن تبطل الصلوة بترکھا۔ ( غنیة الطالبین ص853 ) یعنی نماز میں سورہ فاتحہ کا پڑھنا فرض ہے۔ کیونکہ یہ نماز کا رکن ہے اور اس کو ترک کرنے سے نماز باطل ہو جاتی ہے۔

 

سوال: ایک جگہ آپ نے فرمایا ہے کہ واذ قرءفانصتوا۔ ( غنیة الطالبین ص871 ) کہ جب امام قراة کرے تم خاموش رہو۔ ایسی صورت میں تو نماز کا یہ رکن مقتدی سے رہ جائے گا اور اس کی نماز باطل ہو گی، اس مشکل کا کیا حل ہے؟

 

جواب: واضح رہے کہ نماز کے پندرہ ارکان ہیں۔

( 1 ) قیام ( 2 ) تکبیر تحریمہ ( 3 ) سورہ فاتحہ ( 4 ) رکوع ( 5 ) رکوع میں اطمینان ( 6 ) قومہ ( 7 ) قومہ میں اطمینان سے کھڑا ہونا ( 8, 9 ) دو سجدے (10 ) سجدوں میں اطمینان ( 11 ) جلسہ ( دونوں سجدوں کے درمیان بیٹھنا ) ( 12 ) جلسہ میں اطمینان ( 13 ) آخری تشہد ( 14 ) درود اور (15 ) آخر میں سلام۔ ( غنیة الطالبین صفحہ 10 )

 

رکن کے بارے میں یہ بات یاد رہے کہ ان ترک عامدا او ساھیا بطلت ( غنیة الطالبین صفحہ 12 ) کہ کوئی رکن خواہ دانستہ ترک کر دیا جائے یا وہ بھول کر چھوٹ جائے۔ دونوں صورتوں میں نماز باطل ہو جاتی ہے۔

 

حضرت کا مطلب یہ ہے کہ جس طرح رکوع اور سجدہ وغیرہ نماز کے رکن ہونے کی وجہ سے ہر شخص کے لیے خواہ وہ امام ہو یا مقتدی اپنے اپنے الگ ہی درکار ہیں اور اگر کوئی شخص رکوع یا سجدہ نہیں کرے گا تو اس کی نماز باطل ہو گی، ٹھیک ایسے ہی ایک رکن نماز کی حیثیت سے سورہ فاتحہ بھی ہر شخص کے لیے خواہ وہ امام ہو یا مقتدی اپنی اپنی الگ ہی درکار ہے اور اگر سورہ فاتحہ ترک ہو جائے گی تو نمازی خواہ امام ہو یا مقتدی، اس کی نماز ٹھیک ایسے ہی باطل ہو گی جس طرح سجدہ یا رکوع وغیرہ نہ کرنے سے نماز باطل ہو جاتی ہے۔

 

ایک وضاحت

 

حضرت شیخ عبدالقادر جیلانی رحمہ اللہ نے جو امام کے پیچھے خاموش رہنے کی بات کی ہے تو اس سے یہ نہیں سمجھنا چاہیے کہ اس سے مقصود مقتدی کو امام کے پیچھے سورہ فاتحہ پڑھنے سے روکنا ہے۔

 

ایسا نہیں ہے بلکہ شیخ کا مقصد وہی ہے جو حدیث پاک میں وارد ہو چکا ہے کہ خاموشی سے مطلوب بلند آواز سے نہ پڑھنا ہے جس سے امام کے لیے غلطی کا احتمال ہوتا ہے، ورنہ فاتحہ کا ترک مقصود نہیں ہے۔ چنانچہ خود رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو بھی ایک بار ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نماز پڑھا رہے تھے کہ اٹکنے بھولنے لگے۔ نماز ختم ہوئی تو اصحاب سے مخاطب ہو کر فرمایا۔ کیا تم اپنے امام کے پیچھے پڑھتے ہو؟ انہوں نے اثبات میں جواب دیا، تو فرمایا میں بھی کہتا تھا کہ مجھ سے نماز چھینی کیوں جا رہی ہے۔ پھر ہدایت کی کہ آئندہ کے لیے یاد رکھو جب میں قراة کر رہا ہوں تو میرے پیچھے سوائے ( پست آواز میں ) سورہ فاتحہ کے کچھ نہ پڑھا کرو۔ کیونکہ سورہ فاتحہ کے بغیر نماز نہیں ہوتی۔ ( ابوداود، ترمذی، نسائی )

 

حضرت ابوہریرہؓ نے ایک روز اپنی مجلس میں مسئلہ بیان کیا کہ نماز میں سورہ فاتحہ کی قراة سے کبھی کوتاہی نہ کرنا۔ کیونکہ سورہ فاتحہ کے بغیر نماز نہیں ہوتی۔ حاضرین میں سے ایک بزرگ نے بات اٹھائی کہ ابوہریرہؓ! ہم کبھی امام کے پیچھے ہوتے ہیں، وہ قراة کر رہا ہوتا ہے تو ایسی صورت میں سورہ فاتحہ کا پڑھنا کیونکر ممکن ہے؟ اس پر حضرت ابوہریرہؓ نے فرمایا: اقرابھا فی نفسک کہ ( سورہ فاتحہ کا پڑھنا لازم امر ہے ) ایسی صورت میں تم اس کو اپنے جی میں پڑھ لیا کرو۔ ( ابن ماجہ )

 

حضرت عبادہؓ حضرت مکحولؓ سے نقل کرتے ہیں کہ وہ فرماتے تھے۔ امام کی اقتداءکی حالت میں سورہ فاتحہ کو امام کے سکتوں میں پڑھ لیا کرو یعنی امام جب ایک آیت ختم کر کے اگلی شروع کرنے لگے تو اس وقفہ میں تم وہ آیت پڑھ لو۔ ( ابوداود )

 

ایسے ہی ہمارے احناف اہل علم بزرگوں میں کچھ بزرگ اسی مسلک کو صحیح سمجھتے ہیں چنانچہ مولانا عبدالحئی لکھنوی تحریر فرماتے ہیں کہ امام کے سکتوں میں سورہ فاتحہ کا پڑھنا واذا قری القران فاستمعوا لہ وانصتوا کے خلاف نہیں پڑتا اور ہم میں سے جو لوگ اس کے خلاف رائے رکھتے ہیں، ان کے پاس کوئی دلیل موجود نہیں ہے۔ ( امام الکلام حضرت لکھنوی )

 

ٹھیک یہی مسلک حضرت شیخ عبدالقادر جیلانی رحمہ اللہ کا بھی ہے اور وہ وقفوں اور سکتوں یا پست آواز میں امام کے پیچھے سورہ فاتحہ پڑھنے کے خلاف نہیں ہیں ورنہ وہ اس کو نماز کا رکن کیوں قرار دیتے۔ جو ہر حالت میں ہر شخص کے لیے ہی بلا امتیاز مقتدی اور منفرد لازم ہے۔

 

سوال: کہا گیا ہے کہ سورہ فاتحہ کے نہ پڑھنے سے نماز کا باطل ہونا منفرد یعنی اکیلے نمازی کے لیے ہے مقتدی کے لیے نہیں۔

 

جواب: یہ بات غلط ہے بلکہ لکل مصل ان یقدم النیة لصلاتہ ( غنیة الطالبین صفحہ 852 )

یعنی یہ حکم ہر اس شخص کے لیے ہے جو نماز کی نیت سے کھڑا ہو اور خوب یاد رکھو۔ ھذا الذی ذکرنا یشترک فیہ الامام والماموم والمنفرد۔ ( غنیة الطالبین صفحہ 858 )

کہ ہم نے یہ جو کچھ بیان کیا ہے اس میں امام مقتدی اور اکیلا نمازی سارے شامل ہیں۔

 

آمین پکارنا

 

سوال: نماز کے اندر سورہ فاتحہ کے خاتمہ پر آمین آہستہ کہنی چاہیے یا بلند آواز سے پکار کر؟

 

جواب: والجھر بالقراة وامین والا سراربھما۔ ( غنیة الطالبین ص11 )

یعنی جب امام سورہ فاتحہ بلند آواز سے پڑھ رہا ہو تو آمین بھی بلند آواز سے ہی پکاری جائے گی اور جب وہ آہستہ پڑھ رہا ہو ( جیسے ظہر اور عصر کی نمازوں میں ہوتا ہے ) تو آمین بھی ( ولا الضالین پر پہنچ کر ہر شخص اپنی اپنی جگہ ) آہستہ ہی کہے گا۔

 

رفع الیدین

 

سوال: رفع الیدین کیا ہے؟ کیونکر کی جاتی ہے اور کہاں کہاں کی جاتی ہے۔ اس کے کرنے یا نہ کرنے کے بارے میں کیا حکم ہے؟

 

جواب: رفع الیدین عند الافتتاح والرکوع والرفع منہ وھو ان یکون کفاہ مع منکبیہ ( غنیة الطالبین صفحہ11 )

رفع الیدین دونوں ہاتھوں کے بلند کرنے کو کہتے ہیں۔ نماز میں اس سے مراد دونوں ہاتھوں کا کندھوں کے برابر تک بلند کرنا ہے۔

پس اس غرض سے پہلی بات نماز کے لیے کھڑے ہو کر تکبیر تحریمہ کے ساتھ ہی کندھوں تک دونوں ہاتھ بلند کےے جائیں۔ پھر رکوع کے لیے جھکنے سے پہلے اور پھر رکوع سے اٹھتے ہوئے یہی عمل دہرایا جائے۔

Share this post


Link to post
Share on other sites
(ja) Saeedi bhai buhat achi sharing hai.

 

(bis)

 

Qutub ki tareef.............

Lehaza kia ye ho sakta hai ke aik kitab jo ke un se hi mansoob hai us main kesi ghalati ya koi aur kesye us main dakhal kar sakta hai???…. Changes kar sakta hai???

Jab aap ke peeran-e-Peer ye kehrayhye hain ke (ahl-e-Hadith) namaz ye hi sahi to phir inkar ki waja…..?

Sochain……………………..!

Asslam-o-Alekum

 

Abdul Salam

post-2536-1228220136.jpg

post-393-1228378116.gif

post-393-1228378131.gif

post-393-1228378162.gif

 

 

 

Edited by Ya Mohammadah
Use gif or Jpeg format for uploading images

Share this post


Link to post
Share on other sites

(bis)

 

Qutub ki tareef.............

Lehaza kia ye ho sakta hai ke aik kitab jo ke un se hi mansoob hai us main kesi ghalati ya koi aur kesye us main dakhal kar sakta hai???…. Changes kar sakta hai???

Jab aap ke peeran-e-Peer ye kehrayhye hain ke (ahl-e-Hadith) namaz ye hi sahi to phir inkar ki waja…..?

Sochain……………………..!

Asslam-o-Alekum

 

Abdul Salam

 

Janab Abdul Salam tumhy ghuniyat ultaliben par pehly hi jawab diya ja chuka hai kyu beja apni or humari energy waste karty ho...

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

Wahabi Hazraat jo kehty hein ky Imam ky peechy Fatiha parne lazim hai unn say mein aik Question karna cahta hon ky aghar koi banda thora late ho jata hai aur woh Rukko mein Milta hai tu uss ki namaz ho jai gi ya nahi ?

Aghar hoo jai gi tu phir uss ne tu Surah Al-Fatiha nahi parhi aur aghar woh Surah Al-Fatiha Parne lag jata hai aur itne time mein Imam Rukko say uth kar sajda mein bhi chala jata hai tu aise soorat mein kya karna cahiye zara iss ki tafseel bata dein. :unsure:

Share this post


Link to post
Share on other sites

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Loading...
Sign in to follow this  

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×
×
  • Create New...