Sign in to follow this  
Followers 0
kawwakhanimazhab

Gair Muqallideen K Aeterazat(Please Jawab Inayat Farmadein)

7 posts in this topic

Dear Friends

yeh aeterazat gair muqallid emails per chala rahe hain... agar aap log is k jawabat inayat farma dein to meherbani hogi...

or please duplication ko ignore kardijiega...

Allah pak Islamimehfil ki poori team ko JAZA e KHAIR ata farmae...

 

post-5461-0-39612100-1364755224.jpg

 

post-5461-0-47995400-1364755228.jpg

 

post-5461-0-80635000-1364755233.jpg

 

post-5461-0-30726100-1364755243.jpg

 

post-5461-0-50547200-1364755248.jpg

 

post-5461-0-56435200-1364755255.jpg

 

post-5461-0-80799100-1364755263.jpg

 

post-5461-0-75298600-1364755268.jpg

 

post-5461-0-54342200-1364755278.jpg

 

post-5461-0-94691400-1364755284.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

post-1668-0-82637700-1367581906_thumb.jpg

 

غیر مقلدین نے ہمیشہ کی طرح یہاں بھی لوگوں کو دھوکہ دیا اور آدھے حوالے پیش کئے اور نیچے کتاب کا حاشیہ نہیں دیا۔

 

حاشیہ میں مکمل وضاحت کی گئی ہے کہ امام ابو حنیفہ رح حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کے قول کو ترجیح دیتے تھے اور ان کی حدیث پہ فتوی دیتے تھے۔

 

اصول السرخصی میں (١ / ٣٤١) ہے: جو قیاس کے موافق ہے حضرت ابوہریرہ کی روایت میں سے، تو اس پر عمل ہے (امت کا تعامل ہے)، اور نہیں ہے وہ خلاف_قیاس، تو جب امت نے اسے قبول کیا، پس اس پر عمل جاری ہوا، اور قیاس_صحیح شرعاً مقدم ا اس روایت پر جس میں راۓ کا دروازه بند ہوتا ہے، اور فرمایا فخر الاسلام نے : خبر (حدیث) کا راوی فقیہ ہو یا غیر فقیہ ہو لیکن روایت کے جاننے والا ہو، یا غیر فقیہ ہو نہ جانتا ایک یا دو حدیثوں کو...تو فقیہ کی خبر مقبول ہوگی واجب ہوگا عمل اس کا اگرچہ خلاف_قیاس ہو، اور خبر غیر فقیہ کی جو معروف (و مشہور) ہو روایت کرنے میں وہ اسی طرح مقبول ہے، ترک کیا جاۓ گا اس (روایت) سے قیاس، سواۓ اس کے کہ اگر ہو وہ خلاف سب کے قیاس کے، اور وہ بند کرتا ہے دروازہ راۓ کلّی (سب کی راۓ) کا، اور یہ (بات) اختیار کردہ ہے امام عیسیٰ بن ابان، اور قاضی ابی زید کا، اور گئے اسی (راۓ کی) طرف شیخ ابو الحسن الکرخی جیسے (گئے) پہلے. اور بعض نے کہا اور وہ بحث کے عمل سے روکنا ((المصراة)) والی حضرت ابوھریرہ کی خبر (حدیث) میں : کہ حضرت ابوہریرہ غیر فقیہ ہیں ، اور حدیث کا مخالف ہونا اس پورے قیاس کو، اور ان کے قول میں (یہ بھی ہے کہ) : "ابوھریرہ غیر فقیہ ہیں"، دیکھتا ہے ظاہر (الفاظ) کو، وہ فقیہ مجتہد ہیں ان کی فقاہت میں کوئی شک نہیں، تحقیق وہ فتویٰ دیا کرتے تھے نبی صلی الله علیہ وسلم کے زمانہ میں اور اس کے بعد بھی، اور تھے ٹکراتے حضرت ابن عباس اور ان کے فتویٰ، جیسا کہ آئی ہے اس (بارے) میں صحیح خبر کہ خلاف کیا حضرت ابن عباس نے حاملہ کی عدت (کے بارے) میں جس کا شوہر وفات پاگیا ہو. وہاں حکم دیا ابن عباس نے کہ اس کی عدت دوعدتوں میں سے زیادہ عدت ہوگی (یعنی ولادت یا عدت کے چارماہ دس دنوں میں سے جس میں زیادہ دن ہوں گے وہی اس کی عدت ہے)، اور اس کا حکم وہ وضع حمل سے کرتے.
اور ابو حنیفہ رحمہ الله عمل کرتے حدیث_ابو ہریرہ پر : "جو شخص کھالے (روزہ کی حالت میں) بھول کر وہ پورا کرے اپنا روزہ " اس کے ساتھ قیاس ان کے نزدیک افطار کرنا (کھانا) تھا، پس ترک کیا قیاس کو ابو ہریرہ کی خبر کے سبب.
اور (مزید) دیکھئے جو لکھا ہے اس کو علامہ محمد بخیت المطيعي اپنے حاشیے میں (سلم الوصول) ٣ / ٧٦٧ ،
٧٦٩.

 

Usoole Sarkhasi 1/341 me hai:
Jo Qiyas se muwafiqat kare Abu Huraira razi Allahu anhu ki riwayaat me se, to wo Mamool bih hai, aur Jo Qiyas ke Khilaaf ho, pas agar Ummat ne usey Talaqqi bil Qabool diya to wo (bhi) Mamool bih hai, warna Qiyas e Saheeh Shar’an Muqaddam hai unki Riwayat par jis me raai ka darwaza band hota hai Aur Fakhrul Islam ne farmaya: Hadees ka rawi Cahahe wo Faqeeh ho ya Ghair Faqeeh ho lekin Riwayat ke Zarye jana jata ho, Ya Ghair Faqeeh ho nahi jana jata magar ek Ya 2 Ahadis se… to faqeeh ki Khabar Maqbool hai us par Amal karna Wajib hai Agarche ke Wo Qiyas ke khilaf ho . aur Aise Ghair Faqeeh ki Hadees jo Riwayat ke Zarye Maroof hon Inki Riwayat bhi maqbool hogi aur uski wajeh se Qiyas chorda jayega, Illa ye ke jab Khilaaf ho tamam Qiyason ke. Aur Raai ka baab Band hota hai poora ka poora aur isko Ikhtyar kiya hai Imam ‘IISA BIN ABAAN, QAZI ABU ZAID ne aur Shaikh Abul Hasan Karkhi rah bhi pehle isi rai ki taraf gaye. Aur Baazon ne kaha hai aur wo rokti hai bahes ko Hazrat Abu Huraria razi Allahu anhu ki MUSARRAT wali Riwayat me : “ke Abu Huraira razi Allahu anhu GHAIR FAQEEH the”. Aur Hadees Qiyason ke Mukhalif hai BI ASARRIHA . Aur unke Qaul “ Abu Huraira razi Allahu anhu GHAIR FAQEEH hai” Zaahiran Nazar hai kyu ke Woh Razi Allah anhu FAQEEH aur MUJTAHID the unki FAQAHAT me koi Shak nahi, Chunanche Wo Nabi sallallahu alaihi wasallam ke zamane me aur unke baad FATWA diya karte the, aur woh Ibne Abbas Razi Allahu anhu aur unke Fatwe se Muariz hote. jaisa ke Hadees e Saheeh me aya hai ke unho ne Ibne Abbas razi Allahu nahu se Ikhtelaaf kiya Mutawaffa Shaqs ki Hamela Aurat ki IDDAT ke mamle me. Wahan Ibne Abbas Razi Allahu anhu ne hukum diya hai ke uski Iddat 2 Iddaton me se Ziada wali hogi(yani Wiladatya Iddat ke 4 Mahine dus dinon me se jisme Ziada Din din honge wahi uski iddat hai) Aur iska Hukum Wo Waz’e hamal karte.

Aur Abu haneefa Rahmatullahi alaih ne Abu Huraira Razi Allahu anhu ki Hadees par amal kiya:” Jo Bhool kar khaana khale use chahye ke apna roza Mukammal kare” Is baat ke bawajood ke Qiyas kehta hai ke Wo shaqs Iftar karle(yani Roza tod de), To unho ne Abu Huraira Razi Allahu anhu ki Hadees par Qiyas ko chord diya.

 

post-1668-0-48567900-1367582128_thumb.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

Asalam o alikum to all muslims

 

ان غیر مقلدین نے تو یہ قول بنا تحقیق کاپی پیسٹ کر دیا کہ
(((یعنی اس شخص پر ریت کے زروں کے برابر لعنتیں ہو جو ابو حنیفہ کے قول کو رد کرتا ہے۔)))))
اور ساتھ سکین بھی لگا دیا لیکن خود پڑھنا بھول گئے۔

 ان نام نہاد محققین  کو کسی نے یہ نہیں بتایا کہ یہ قول کس کا ہے۔
چلیں میں بتا دیتا ہوں۔
یہ قول حضرت عبداللہ ابن مبارک رح کا ہے اور ان کا رتبہ غیر مقلد اپنے سے بڑے محققین سے پوچھ سکتے ہیں۔

تو ان غیر مقلدین سے گزارش ہے کہ احناف پہ اعتراض کرنے سے پہلے ذرا ابن مبارک رح پہ فتوی لگا دینا جو یہ قول ارشاد فرما رہے ہیں۔
 کہ ''یعنی اس شخص پر ریت کے زروں کے برابر لعنتیں ہو جو ابو حنیفہ کے قول کو رد کرتا ہے۔''۔

 

 

 

post-1668-0-75216600-1376508512_thumb.jpg

 

 

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now
Sign in to follow this  
Followers 0

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.