1 post in this topic

(bis)


 


جَاءَ الْحَقّ (تصنیفِ حکیمُ الامّت مُفتی اَحمد یار خان نعیمی نوَّر اللہ مَرقَدہ) کی ایک عبارت پر نجدیوں وہابیوں کا مشہورِ زمانہ (لغْو) اعتراض ہے کہ اس عبارت میں مُفتی صاحب علیہ الرحمۃ نے (معاذ اللہ) قرآن مجید کی توہین کی ہے۔ عبارتِ جاء الحق نیچے ملاحظہ فرمائیں:۔


 


 


post-14217-0-24014700-1444758942_thumb.gif


 


 


 


 


post-14217-0-46380600-1444758579_thumb.gif


 


 


 


 


 


اب دیکھیں کہ نجدیوں کی بیمار امت کے حکیمُ اشرف علی تھانوی نے اپنی کتاب نشر الطیْب میں کیا لکھا ہے:۔


 


 


post-14217-0-93218500-1444758710_thumb.gif


 


 


 


 


post-14217-0-36451000-1444758695_thumb.gif


 


 


 


 


post-14217-0-48312500-1444758732_thumb.gif


 


 


 


 


یہ بس ایک الزامی جواب تھا۔ نجدیوں کے اس اور اس جیسے تمام اعتراضات کے تحقیقی جوابات دئیے جا چکے ہیں جن کا نجدیوں کے پاس کوئی جواب نہیں ہے۔


 


اب نجدیوں کو چاہیے کہ (مسلمانوں کو کافر کہنے کا اپنا پرانا شوق پورا کرتے ہوئے) جب جاء الحق کی اس عبارت محولہ بالا کی وجہ سے حکیم الامت قبلہ احمد یار خان صاحب رحمۃ اللہ علیہ کو گستاخ کہیں تو اپنے حکیم الامت اشرف علی تھانوی کو (اُسکی نشر الطیْب والی عبارت مد نظر رکھتے ہوئے) گستاخ ماننا ہرگز نہ بھولیں. لیکن اگر انکو اس عبارت میں کوئی گستاخی نظر نہیں آتی تو جاء الحق پر بے جا اعتراضات کا سلسلہ بھی روکنا چاہیے۔


Edited by AqeelAhmedWaqas

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now
Sign in to follow this  
Followers 0