Jump to content
IslamiMehfil

Recommended Posts

مسلمان اللہ عزوجل کی عبادت کرتے ہیں اور عبادت غیر اللہ کی مشرک کرتے ہیں مگر کیا اس سے کوئی نجدی یہ نتیجہ نکال سکتا ہے کہ فی نفسہ عبادت شرک ہے نعوذ باللہ۔

جو شرکیہ تعویز استعمال کرے وہ اسکا اپنا عمل ہے اس بیناد پر عامتۃ المسملمین پر کوئی الزام نہیں آتا۔

 

تعویز یا رقیہ جو کفار مکہ مشرکین استعمال کرتے تھے ان میں جادو ٹونہ سفلی شرکیہ باتیں ہوتی تھیں مسلمان جو تعویز پہنتے یا گھروں دکانوں میں لگاتے ہیں ہیں وہ اللہ عزوجل کے پاک کلام کی آیات یا انکا مبارک نقش ہوتا ہے۔ اسے نجدی گندا ذھن ہی شرک کہہ سکتا ہے کیونکہ ان میں نہ شرم و حیا ہے نہ دین۔ مسلمانوں پر شرک کے فتوے لگا کر نجدی اپنے منہ آپ مشرک کافر بنتے ہیں کیونکہ یہ فتوے ان پر ہی لوٹ جاتے ہیں۔

 

اوپر جو حدیث پاک نجدیوں نے پیش کی اس سے تو نبی کریم علیہ الصلاۃ والتسلیم کا علم بھی ثابت ہوتا ہے کہ جو شرکیہ تعویز بندے نے اندر پہن رکھا تھا سرکار علیہ الصلوۃ والسلام کو اس کا پہلے ہی علم تھا۔ جبکہ وہابی گندا عقیدہ ہے کہ نبی پاک علیہ السلام کو نعوذبااللہ دیوار کے پیچھے کا بھی علم نہیں ۔

Link to post
Share on other sites
  • 2 years later...

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Loading...
×
×
  • Create New...