Sign in to follow this  
Followers 0
Shizz

Kia Murday Suntay Hain...................

188 posts in this topic

(bis)

 

 

 

 

meray bhai humaray liya ibn kaseer ya ilama ibn qaiam koi hujjat nahin hai. kia aap kay liya aap kay ala hazrat ahmed raza brelvi hujjta hain.

 

 

jis kissi ki bhi bat quran ya sahih hadees say takray gee to thukra dee jaya gee.

 

ijmah ummat aur ijtihad quran aur sunnat kay mutabiq ho sakta hai.

 

 

 

kia aap kay ala hazrat kai jaga ganday bakwas ker gay hain kia woh aap kay liya hujjta hain.

 

 

bat ulma ki nahin bat quran aur sahih ahadees ki hai. hawaloon say bat karo. quran ya sahih hadees say. aur jo hadees bhi pesh kareen aus ka poora hawala bhi diya kareen.

 

jo bhi dunya say chila jata hai woh alam barzukh main hota hai humaian ais ka shour nahin hai.

 

 

ab hum quran ki bat manaian ya aap kay ala hazrat ki ya ibn kaseer ki ya kissi aur ki

Share this post


Link to post
Share on other sites

meray bhai sab say ghalti ho sakti hai.

 

 

 

imam abu hanifa

 

 

imam malik

 

 

imam shafi

 

 

imam ahmed bin humble

 

 

sab keh gaya hain keh hum say ghalti ho sakti hai.

 

 

khud faisla ker lain

post-13429-0-31266800-1334995851.jpg

post-13429-0-06133900-1334995856.jpg

post-13429-0-01716600-1334995861.jpg

post-13429-0-87322600-1334995864.jpg

Edited by hozaifamalik

Share this post


Link to post
Share on other sites

حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ جب تم قبرستان جاو تو ان کو سلام کرو

 

عن أبی ہریرۃ رضی اﷲ تعالیٰ عنہ قال : قال ابورزین یا رسول اﷲ ! إن طریقی علی الموتی فہل من کلام اتکلم بہ اذا مررت علیہم ؟ قال : قُلْ ألسَّلاَمُ عَلَیْکُمْ یَا أہْلَ الْقُبُوْرِ مِنَ الْمُسْلِمِیْنَ وَ الْمُؤمِنِیْنَ ، أنْتُمْ لَنَا سَلَفٌ وَ نَحْنُ لَکُمْ تَبِعٌ وَ اِنَّا اِنْ شَآءَ اللّٰہُ تَعَالیٰ بِکُمْ لاَ حِقُوْنَ ، قال ابو رزین : یا رسول اﷲ ! یسمعون ؟ قال : یَسْمَعُوْنَ وَ لٰکِنْ لاَّ یَسْتَطِیْعُوْنَ أنْ یُّجِیْبُوْا۔

۱۱۳۴

 

حضرت ابو ہریرۃ رضی اﷲ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ ابو رزین رضی اﷲ تعالیٰ نے عرض کیا : یا رسول اﷲ ! میرا راستہ مقابر پر ہے ۔ کوئی کلام ایسا ہے کہ جب ان پر گذروں کہا کروں ؟ فرمایا : یوں کہہ ، سلام تم پر اے قبر والو! اہل ایمان اور اہل اسلام سے، تم ہمارے آگے ہو اور ہم تمہارے پیچھے اور ہم انشااﷲ تم سے ملنے والے ہیں ابو زرین رضی اﷲ تعالیٰ عنہ نے عرض کی : یا رسول اﷲ ! کیا مردے سنتے ہیں ؟ فرمایا : سنتے ہیں لیکن جواب نہیں دیتے

 

ye hadees zaeif hai dekhne ke liye dekhiye روح المعاني (21/78) ، ومقدمة الألباني على كتاب « الآيات البينات في عدم سماع الأموات » ص (38

أخرجه العقيلي في « الضعفاء » (4/19) ، من طريق: محمد بن الأشعث ، عن أبي سلمة ، عن أبي هريرة ، به.

وأعله العقيلي بمحمد بن الأشعث ، حيث قال : « محمد بن الأشعث : مجهول في النسب والرواية ، وحديثه غير محفوظ » ثم ساق الحديث وقال : « ولا يعرف إلا بهذا اللفظ ، وأما السلام عليكم يا أهل القبور ، إلى قوله: وإنا إن شاء الله بكم لاحقون . فيروى بغير هذا الإسناد ، من طريق صالح ، وسائر الحديث غير محفوظ

Narrated by eloqaily in «vulnerable» (4/19), by: Muhammad Ibn Al-ash'ath, from Abu Salamah from Abu hurayrah, the.

And I support him by Muhammad Ibn Al-ash'ath eloqaily, said: «Mohammed Ibn ash'ath: anonymous in descent and novel, modern non-archive» and then stalk talk said: «is not known but this pronunciation, and either çáóáçã úáíßã Hey folks graves, saying: I am inshallah you later. It tells otherwise this attribution, by Saleh, and other modern non-archive.

آپ السلام علیکم یا اھل القبور کے الفاظ

 

نہیں مانتے تو مسلم شریف کی روایت مان لیں:۔

 

بحوالہ مشکوٰۃ البانی:۔

1764 - [ 3 ] ( صحيح )

وعن بريدة قال : كان رسول الله صلى الله عليه وسلم يعلمهم إذا خرجوا إلى المقابر : " السلام عليكم أهل الديار من المؤمنين والمسلمين وإنا إن شاء ا لله بكم للاحقون نسأل الله لنا ولكم العافية " . رواه مسلم

 

1766 - [ 5 ] ( صحيح )

وعن عائشة رضي الله عنها قالت : كان رسول الله صلى الله عليه وسلم كلما كان ليلتها من رسول الله صلى الله عليه وسلم يخرج من آخر الليل إلى البقيع فيقول : " السلام عليكم دار قوم مؤمنين وأتاكم ما توعدون غدا مؤجلون وإنا إن شاء الله بكم لاحقون اللهم اغفر لأهل بقيع الغرقد " . رواه مسلم

Share this post


Link to post
Share on other sites

meray bhai humaray liya ibn kaseer ya ilama ibn qaiam koi hujjat nahin hai. kia aap kay liya aap kay ala hazrat ahmed raza brelvi hujjta hain.

 

 

jis kissi ki bhi bat quran ya sahih hadees say takray gee to thukra dee jaya gee.

 

ijmah ummat aur ijtihad quran aur sunnat kay mutabiq ho sakta hai.

 

 

 

kia aap kay ala hazrat kai jaga ganday bakwas ker gay hain kia woh aap kay liya hujjta hain.

 

 

bat ulma ki nahin bat quran aur sahih ahadees ki hai. hawaloon say bat karo. quran ya sahih hadees say. aur jo hadees bhi pesh kareen aus ka poora hawala bhi diya kareen.

 

jo bhi dunya say chila jata hai woh alam barzukh main hota hai humaian ais ka shour nahin hai.

 

 

ab hum quran ki bat manaian ya aap kay ala hazrat ki ya ibn kaseer ki ya kissi aur ki

post-2742-0-48547500-1335007081.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

(bis)

 

 

loogoon ko dhooka do arabic kay pages laga ker

 

aadhay warq laga ker. pehlay yeh batao keh agar inbiya zinda hain dunya ki zindagi ki tarah to aun ko dafna kew diya. ghusal kew diya, kaffan kew diya.

 

aur hazrat fatima raziallah ko kissi nay muskaratay nahin dekha hazoor (saw)ki wafat kay baad.

 

zinda hain lakin burzaq ki zindagi lakin humaian shaur nahin aus zindagi ka

 

aap loog qabrron per mathay tekhnay walay ho. allah kay ilawa ghous data mushkil kusha hajatr rawa bana rakhay hain .

 

aap ka main maqsad yeh hai keh sab ko allah kay ilawa pukaro . quran keh raha keh jis ko allah chahiya. lakin aap loog quran ko mano gay to humari bat ho gee.

Share this post


Link to post
Share on other sites

loogoon ko dhooka do arabic kay pages laga ker

 

aadhay warq laga ker. pehlay yeh batao keh agar inbiya zinda hain dunya ki zindagi ki tarah to aun ko dafna kew diya. ghusal kew diya, kaffan kew diya.

 

aur hazrat fatima raziallah ko kissi nay muskaratay nahin dekha hazoor (saw)ki wafat kay baad.

 

zinda hain lakin burzaq ki zindagi lakin humaian shaur nahin aus zindagi ka

 

aap loog qabrron per mathay tekhnay walay ho. allah kay ilawa ghous data mushkil kusha hajatr rawa bana rakhay hain .

 

aap ka main maqsad yeh hai keh sab ko allah kay ilawa pukaro . quran keh raha keh jis ko allah chahiya. lakin aap loog quran ko mano gay to humari bat ho gee.

post-2742-0-55476400-1335015369.jpg

post-2742-0-73567500-1335015385.jpg

post-2742-0-34481200-1335015577.jpg

post-2742-0-64450900-1335015591.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

توحیدی بھائی وہ کسی نے کیا خوب کہا تھا کہ شرم ہی تو ہے آئے آئے نہ آئے نہ آئے اور وہابیہ کو تو ہرگز نہیں آنی بالخصوص امت کے جمہور یعنی جب اکثریت پر شرک کا فتوٰی لگانا ہو تو یہ لوگ بے دھڑک مگر وہ عقید ہ اور عمل جب انکے کسی بڑے سے ثابت ہو تو محض غلطی اب کوئی بتلائے کہ ہم بتلائیں کیا ؟؟؟؟ بھلا وہ عقیدہ کہ جسے قرآن یا سنت شرک ٹھرائیں اور قرآن اس پر فتوٰی دے کہ شرک ناقابل معافی جرم ہے اسی عقیدہ کا ثبوت ابن قیم اور اب کثیر کے حق میں حضرت حذیفہ صاحب کہ اجتھاد کے مطابق محض غلطی ہے لاحول ولا قوة الا باللہ۔۔۔۔

اوہ خدا کے بندے بھلا وہ عمل یاعقیدہ جو آپکی نگاہوں میں شرک ہے اگر اسے بجا لانا بھی محض غلطی ہی ہے تو قرآن کی اس وعید کا کیا کرو گے کہ شرک ظلم عظیم ہے اور مشرک کی مغفرت نہ ہوگی ؟؟؟؟

یہ عجب طرفہ ہے ان وہابیہ کا کہ جب ان کے ممدوحین پر بات آتی ہے تو سادہ لوح عوام کو یہ کہہ دھوکا دیتے ہیں کہ ہمارے نزدیک کوئی بھی شخصیت حجت نہیں کیونکہ ہم کسی کی تقلید نہیں کرتے اور دوسری طرف جب انہی ممدوحین کی بعض عبارات اپنے حق میں دیکھتے ہیں تو انہی شخصیات کی سیرت پر بڑی کتابیں اور مضامین لکھتے ہیں کہ جن کے ٹائٹل پر انھے شیخ الاسلام اور حجت الاسلام اور نہ جانے کن کن القابات سے نوازتے ہیں بندہ ان سے پوچھے ایسے ہوتے ہیں تمہارے شیوخ الاسلام کہ جن سے شرک کا صدور بھی ثابت ہوتا ہے ؟؟؟ اور وہ محض تمہارے نزدیک غلطی کہلاتا ؟؟؟؟ فاعتبروا یا اولی الابصار

Edited by Aabid inayat

Share this post


Link to post
Share on other sites

loogoon ko dhooka do arabic kay pages laga ker

aadhay warq laga ker. pehlay yeh batao keh agar inbiya zinda hain dunya ki zindagi ki tarah to aun ko dafna kew diya. ghusal kew diya, kaffan kew diya.

 

aur hazrat fatima raziallah ko kissi nay muskaratay nahin dekha hazoor (saw)ki wafat kay baad.

 

zinda hain lakin burzaq ki zindagi lakin humaian shaur nahin aus zindagi ka

 

aap loog qabrron per mathay tekhnay walay ho. allah kay ilawa ghous data mushkil kusha hajatr rawa bana rakhay hain .

 

aap ka main maqsad yeh hai keh sab ko allah kay ilawa pukaro . quran keh raha keh jis ko allah chahiya. lakin aap loog quran ko mano gay to humari bat ho gee

اسلام علیکم توحیدی بھائی ۔۔

شرم انکو مگر نہیں آتی ۔۔۔ اور وہابیہ اور شرک کا تو بیر ہے۔۔۔

جب جواب نہیں بن پڑتا تو پھر الزام تراشی اور کوسنوں پر اتر آتے ہیں الزام تراشی یہ کے آپ نے آدھے ادھورے پیج لگائے ہیں اور کوسنے یہ کے اتنی لیاقت تو ہوتی نہیں کہ اُن پیجز کی عربی عبارات پڑھ سکیں اور پھر سمجھ سکیں لہذا یہ آسان ہے کہ فریق مخالف پر قبر پرستی اور غیراللہ کی الوہیت کہ اعتقاد کا کوسنا کس کر جان چھڑالو۔۔۔۔

ادھر دوسری طرف حالت انکی دیدنی ہوچکی ہے کیونکہ ہمارے احباب قرآن و سنت کہ واضح نصوص پیش کررہے ہیں اور یہ حضرت ان واضح نصوص کے مقابلہ میں اپنی عقل کے گھوڑے دوڑاتے ہوئے قیاس فاسدہ سے کام لے رہے ہیں حالانکہ ان کا تعلق اس طبقہ سے ہے جو کہ ہمیشہ قیاس صحیحہ کی بھی مذمت کرتا ہے اگرچہ وہ قیاس قرآن و سنت کے لاتعداد شواہدات و متابعات پر ہی مبنی کیوں نہ ہو؟؟؟

اب دیکھیئے ناں توحیدی بھائی قرآن کی تفسیر خود امہات التفاسیر کے حوالہ جات سے پیش کررہے ہیں اور پھر اوپر سے انھوں نے براہ راست احادیث بھی پیش فرمائی ہیں کہ مردے سنتے ہیں جبکہ خود رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم نے مقتولین بدر سے کلام فرمایا اور پھر عام مردوں کے لیے امت کو سلام کہنے کا مکلف ٹھرایا۔۔۔۔ لہذا یہ تو سبھی جانتے ہیں کہ شارع کا کلام کبھی بھی عبث نہیں ہوتا بلکہ ہمیشہ مبنی بر حکمت ہوتا ہے مگر جناب حذیفہ صاحب ہیں کہ ان نصوص کے مقابلے اپنے قیاس فاسدہ کو بروئے کار لاکر ان کا رد کررہے ہیں کہ اجی اگر مردے سنتے ہیں تو پھر دفن کیوں کرتے ہو؟؟؟ یہ کیوں کرتے ہو وہ کیوں کرتے ہو وٍغیرہ وگیرہ ؟؟؟؟ کوئی ان کو "مت " دے اور بتلائے کہ مردوں کے سننے کا حکم بھی شریعت سے ثابت اور اور انکے کفن و دفن کے احکام بھی شریعت سے ثابت دونوں میں آخر تفاوت کیا ہے ؟؟؟؟ ہم شریعت کے تمام احکامات پر عمل کرنے والے ہیں یہود کی طرح آدھا دین لینے والے نہیں کہ مرضی کا ہپ اور نہ مرضی کا تھو ۔۔۔

اور اگر قیاس ہی کرنا ہے تو پھراپنے قیاس کے تمام باطل گھوڑے دوڑا کر میرے ایک سوال کا جواب تو دو ؟؟؟

اور وہ سوال یہ ہے کہ تم جو کہتے ہو کہ مردے نہیں سنتے تو بھلا بتلاؤ کہ آیا زندہ اور مردہ میں جو سننے کی صلاحیت یا قوت ہے کیا وہ تمہاری دین یا رہین منت ہے یا تمہاری محتاج ہے کہ زندہ تو سنتا ہو اور مردہ چونکہ مر کر منوںمٹی تلے دفن ہوگیا لہذااب تم میں وہ طاقت نہیں رہی کہ تم اسے سنوا سکو جبکہ حقیقت یہ ہے کہ چاہے کوئی زندہ ہو یا مردہ اسے سنواتا اللہ عزو جل ہی ہے اور اسے سننے کے صلاحیت و قوت اللہ ہی کی عطا کردہ ہے جو کہ بے نیاز ہے اس کے لیے برابر ہے کہ چاہے تو زندہ زی روح کو سنوا دے اور چاہے تو بے جان پتھروں یعنی جمادات اور نباتات کو بھی سنوا د ے حالانکہ حضرت انسان تو پھر صاحب روح ہے اگرچہ مردہ ہو یا زندہ ۔

مجھے سمجھ نہیں آتی ان وہابیہ کی بھونڈی عقل کی کہ یوں تو یہ توحید کے بڑے داعی و ٹھیکے دار بنتے ہیں مگر جب شان الوہیت کی باری آتی ہے تو اسے مخلوق پر قیاس کرتے ہیں اور اللہ کی صفات کو مخصوص و مقید ٹھراتے ہیں کہ فلاح حالت میں تو فلاں سن سکتا ہے حالانکہ در اصل وہ فلاں اس وقت بھی خود اپنے آپ نہیں سن رہا ہوتا بلکہ اللہ ہی کی دی ہوئی قوت و صلاحیت ہی سے سن رہا ہوتا اوروہی فلاں جب مر جاتا ہے تو یہ جھٹ سے شور مچا دیتے ہیں کہ اب نہیں سن سکتا بھلا بندہ پوچھے کہ جب تک وہ زندہ تھا تو تب اس کا خدا کوئی اور تھا جو اسے سنوا رہا تھا اور اب جو فوت ہوگیا ہے تو ا سکا خدا کوئی اور ہوگیا ہے کہ جس کہ پاس مردوں کو سنوانے کی طاقت بھی نہیں یا پھر تمہارا خدا کے بارے میں یہ عقیدہ ہے کہ وہ انسانوں کو سنوانے کے لیے پہلے ان کے اندر مجرد نفس حیات یعنی قوت حیات کا محتاج ہے چناچہ تبھی کہتے ہو کہ جب تک تو زندہ تھا اس وقت تک سنتا تھا اب مر گیا حیات نہ رہی لہذا اب اللہ اسے معاذ اللہ سنوا بھی نہیں سکتا؟؟؟؟

عجب توحید ہے تمہاری جو کہ زندہ اور مردہ کے گرد گھومتی ہے یعنی تمہارے نزدیک اصل علت یعنی ِ"علت العلل "خدا کا سنوا دینا نہیں بلکہ خود مردے میں محض نفس حیات کا پایا جانا ہے لا حول ولا قوۃ الا باللہ۔

یعنی تمہارا عقیدہ اللہ پر نہیں بلکہ نفس حیات پر ہے اور تم نے اللہ کو نہیں بلکہ مجرد حیات کو اپنا رب و الٰہ مان رکھا ہے تبھی توحقیقی مؤثراللہ کوبالذات نہیں بلکہ نفس حیات کو مؤثر بالذاتمان رہے ہو۔۔۔ اس بڑا شرک بھلا کیا ہوگا فاعتبروا یااولی الابصار۔۔۔۔

Edited by Aabid inayat

Share this post


Link to post
Share on other sites

کون کیا کر رہا ہے سب کو معلوم ہے . میری پوسٹ کو ڈیلیٹ کیا جا رہا ہے. کیوں کیا اس فورم کا یہ اصول

 

 

 

ہے کہ تم لوگ اپنی مرضی سے جو لکھو سب ٹھیک ہے اور ہم اپنی جو پوسٹ کریں وہ سب غلط

اور اس کو ایڈٹ کر کے پیش کیا جاتا ہے . ہمارے لیا نہ ابن کثیرحجت ہے نہ احمد رضا نہ کوئی اور

 

حجت صرف قرآن اور صحیح حدیث ہوتی ہے

 

اب اگر تم لوگ بندوں میں اسلام ڈھونڈو گے تو یہی حال ھو گا جو احمد رضا صاحب کا ہوا . اپنی کتابوں میں کفر لکھتے گۓ

 

بھائی اگر ابن کثیر یا احمد رضا صاحب کوئی غلط بات لکھ دیں تو کیا وہ اسلام بن گیا . نہیں ہر بندے کی بات غلط بھی ھو سکتی ہے اور صحیح بھی .

 

 

 

اگر ہر آدمی کی ہر بات صحیح ہوتی تو احادیث کو الگ الگ نہ کیا جاتا . اب اگر آپ فورم پر عربی کے کچھ ورق لگا دو گۓ تو

 

کیا سارے ممبر اس کو سمجھ جائیں گے. اگر عربی سے ترجمہ ضروری نہیں ہے تو احمد رضا صاحب کی قرآن کی تفسیر اور ترجمہ جو اردو میں ہے اس کا حوالہ کیوں دیتے ھو . احمد رضا صاحب کی عربی تفسیر اور عربی ترجمہ

یہاں دیا کرو .

 

 

 

کیا یہاں فورم میں کوئی ممبر یہ حق نہیں رکھتا کہ آپ نے اردو میں حوالہ طلب کرے. یہاں جو ممبر بھی آپ سے اردو میں حوالہ طلب کرتا ہے آپ اس کا مذاق اڑاتے ھو

Share this post


Link to post
Share on other sites

کون کیا کر رہا ہے سب کو معلوم ہے . میری پوسٹ کو ڈیلیٹ کیا جا رہا ہے. کیوں کیا اس فورم کا یہ اصول

 

 

 

ہے کہ تم لوگ اپنی مرضی سے جو لکھو سب ٹھیک ہے اور ہم اپنی جو پوسٹ کریں وہ سب غلط

اور اس کو ایڈٹ کر کے پیش کیا جاتا ہے

Aap ki post kerny per humain koi aitraaz nai lakin aager aap aisi images post kerin jin mai badmazhb logon ki websits k link mojod hn to un post ko delet kerna Zrori hy our is k liy aap ko warn bhe kia ja chuka hy

 

 

. ہمارے لیا نہ ابن کثیرحجت ہے نہ احمد رضا نہ کوئی اور

 

حجت صرف قرآن اور صحیح حدیث ہوتی ہے

 

اب اگر تم لوگ بندوں میں اسلام ڈھونڈو گے تو یہی حال ھو گا جو احمد رضا صاحب کا ہوا . اپنی کتابوں میں کفر لکھتے گۓ

 

بھائی اگر ابن کثیر یا احمد رضا صاحب کوئی غلط بات لکھ دیں تو کیا وہ اسلام بن گیا . نہیں ہر بندے کی بات غلط بھی ھو سکتی ہے اور صحیح بھی .

 

 

 

aap k liy Kuch bhe hujjjat ho ya na ho humain is sy koi Faraq nai Perta lakin Masla ye h k Jub tum loog Ahle sunnat ki kisi baat ko dekh ker shirk o bidat ka ftwa lagaty ho to Lakin jub wohi baat tumhary apny kisi molvi sy saaabit ho jaiy to tub tumhari boolti kio band ho jati hy tum tum loog shirk k fatwy kio nai lagaty ??? Kitni baar tum sy Toheedi bhai ny Is bary sawal kio lakin tum ny jawab deny ki bajaiy Mazeed new posting ki firing ki

Masly ko samjhnay samjhnay ki bajay Bus aap ki taraf sy new posts ki firing hi nazar aai hy abi tak k aap humari kisi post ka jawab dain shukeria ?

 

اگر ہر آدمی کی ہر بات صحیح ہوتی تو احادیث کو الگ الگ نہ کیا جاتا . اب اگر آپ فورم پر عربی کے کچھ ورق لگا دو گۓ تو

 

کیا سارے ممبر اس کو سمجھ جائیں گے. اگر عربی سے ترجمہ ضروری نہیں ہے تو احمد رضا صاحب کی قرآن کی تفسیر اور ترجمہ جو اردو میں ہے اس کا حوالہ کیوں دیتے ھو . احمد رضا صاحب کی عربی تفسیر اور عربی ترجمہ

یہاں دیا کرو .

 

 

 

کیا یہاں فورم میں کوئی ممبر یہ حق نہیں رکھتا کہ آپ نے اردو میں حوالہ طلب کرے. یہاں جو ممبر بھی آپ سے اردو میں حوالہ طلب کرتا ہے آپ اس کا مذاق اڑاتے ھو

 

 

Jo Hawala Arabic mai hy usy Arabic mai hi dia Jaiy ga na jub Humary pass us Hawaly ka Urdu Virson ho gy to aap ko wo bhe send ker dain gy ager aap ko arabic nai aati to apny kisi Aalim sy hi samjh lia kerin k ye Hawala Arabic mai hy isy Samjha dain kia ye waqi theek hy ,humari baaat to aap samjhny sy rahy .

Share this post


Link to post
Share on other sites

کون کیا کر رہا ہے سب کو معلوم ہے . میری پوسٹ کو ڈیلیٹ کیا جا رہا ہے. کیوں کیا اس فورم کا یہ اصول

 

Muhtaram , Yahan jo post delete hoti hay Super Moderator/admin k samny visible hoti hay , bahut koshish k bawjood mujhay delete shuda post nazar naheen aa rahi.. means mujhay koi suboot naheen mil raha keh aap ki post delete ki gayi hay.

 

Lihaza next time aap post karnay k bad Us ka print lay kar save kar lain takeh bad main agar post bila wja delete ki jaye to aap suboot k tor par paish kar sakain.

 

Yahan Baghair Waja k Kisi Ki bhi post delete Naheen ki jati. Aap apnay dawa ka suboot paish ki jiay , agar to waqeay kisi nay bila wja aap ki post delete ki to aap ki post restore kar di jaye gi. Shukria

 

 

Next time Proof k baghair kisi par post delete karnay ka ilzam mat lgaeay ga.

.

Aap nay Uooper Post 82 main Taqleed k mutaliq kuch paish kia , aap khud hi btain kia is topic main ham Taqleed par behs kar rhay hain???? yeh post is topic say ghair mutaliqq naheen hay??

is post ko delete hona chaheay keh naheen??? Kionkeh aap ko ijazat hay keh yeh post mutaliqa topic mian post kar sakain,

 

Jab ham nay ap ki topic say ghair mutaliqa post delete naheen ki to topic say mutaliqa post kion delete krain ge??behrhal aap apni bat ka suboot dijiay,

 

 

Muhtarna Shiz Sahiba:

 

Aap nay meri posts par tabsra kia hay laikin Bari khoobsoorti say aik jumla hazam kar gayi :

 

Teesri bat yeh keh Ab apnay Molvion ki bhi sunain , aor phir unkay leay bhi wohi alfaz istemal krain jo hmaray leay keay hain:

 

http://www.islamimeh...wahabi-aor-sag/

 

Is ka jwab , aor apnay doosray jwab MUTALIQA TOPICS main post kar dain to kia hi acha ho. Is topic main ghair mutaliqa jwab mat post kijiay ga. Shukria

Share this post


Link to post
Share on other sites

(bis)

(bis)

مس یا مسز شِز

کیا واقعی علامہ ابنِ کثیر اور ابنِ قیم مُشرک تھے؟ آپ نے جو کچھ کہا تو جو فتویٰ آپ لوگوں کی جانب سے لگے گا وہ اُن پر بھی لازمی آئیگا۔

پلیز، ضرور بتایئے کہ کیا یہ دونوں علماء مُشرک ہوئے؟

کیا یہ دونوں علماء مُشرک ہوئے؟

کیا یہ دونوں علماء مُشرک ہوئے؟

جزاک اللہ

 

 

aap donon is ka jawab to de do, yeh ab tak aap logon per udhaar hai, Toheedi Bhai ki post ka ab tak jawab nahin diya or behes ka rukh morr ker apni jaan bacha rahe ho.

:o :o ;) [/right]

کیا واقعی علامہ ابنِ کثیر اور ابنِ قیم مُشرک تھے؟ آپ نے جو کچھ کہا تو جو فتویٰ آپ لوگوں کی جانب سے لگے گا وہ اُن پر بھی لازمی آئیگا۔

پلیز، ضرور بتایئے کہ کیا یہ دونوں علماء مُشرک ہوئے؟

کیا یہ دونوں علماء مُشرک ہوئے؟

کیا یہ دونوں علماء مُشرک ہوئے؟

 

Please aap ab to jawab de hi dein is ka .... kyun k aap ne likkha "koi thread start krti hon us k mutalliq agar koi sawal krta hai to us ko jawab bhi deti hon"

جزاک اللہ خیراً توحیدی بھائی

 

 

شرم اِن کو مگر نہیں آتی۔۔۔

لیجئے اب تو تین ہو گئے، پہلے علامہ ابنِ کثیر اور ابنِ قیم اور تیسرے صدیق حسن بھوپالی، جناب آپ دونوں کچھ تو شرم کریں ایک سوال کئ مرتبہ پوچھا گیا کہ یہ مشرک ہوئے کہ نہیں مگر بے شرمی کی انتہاء ہے کہ اس کا جواب دے ہی نہیں رہے۔

(bis)

(bis)

(bis)

 

اسلام علیکم توحیدی بھائی ۔۔

شرم انکو مگر نہیں آتی ۔۔۔ اور وہابیہ اور شرک کا تو بیر ہے۔۔۔

جب جواب نہیں بن پڑتا تو پھر الزام تراشی اور کوسنوں پر اتر آتے ہیں الزام تراشی یہ کے آپ نے آدھے ادھورے پیج لگائے ہیں اور کوسنے یہ کے اتنی لیاقت تو ہوتی نہیں کہ اُن پیجز کی عربی عبارات پڑھ سکیں اور پھر سمجھ سکیں لہذا یہ آسان ہے کہ فریق مخالف پر قبر پرستی اور غیراللہ کی الوہیت کہ اعتقاد کا کوسنا کس کر جان چھڑالو۔۔۔۔

ادھر دوسری طرف حالت انکی دیدنی ہوچکی ہے کیونکہ ہمارے احباب قرآن و سنت کہ واضح نصوص پیش کررہے ہیں اور یہ حضرت ان واضح نصوص کے مقابلہ میں اپنی عقل کے گھوڑے دوڑاتے ہوئے قیاس فاسدہ سے کام لے رہے ہیں حالانکہ ان کا تعلق اس طبقہ سے ہے جو کہ ہمیشہ قیاس صحیحہ کی بھی مذمت کرتا ہے اگرچہ وہ قیاس قرآن و سنت کے لاتعداد شواہدات و متابعات پر ہی مبنی کیوں نہ ہو؟؟؟

اب دیکھیئے ناں توحیدی بھائی قرآن کی تفسیر خود امہات التفاسیر کے حوالہ جات سے پیش کررہے ہیں اور پھر اوپر سے انھوں نے براہ راست احادیث بھی پیش فرمائی ہیں کہ مردے سنتے ہیں جبکہ خود رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم نے مقتولین بدر سے کلام فرمایا اور پھر عام مردوں کے لیے امت کو سلام کہنے کا مکلف ٹھرایا۔۔۔۔ لہذا یہ تو سبھی جانتے ہیں کہ شارع کا کلام کبھی بھی عبث نہیں ہوتا بلکہ ہمیشہ مبنی بر حکمت ہوتا ہے مگر جناب حذیفہ صاحب ہیں کہ ان نصوص کے مقابلے اپنے قیاس فاسدہ کو بروئے کار لاکر ان کا رد کررہے ہیں کہ اجی اگر مردے سنتے ہیں تو پھر دفن کیوں کرتے ہو؟؟؟ یہ کیوں کرتے ہو وہ کیوں کرتے ہو وٍغیرہ وگیرہ ؟؟؟؟ کوئی ان کو "مت " دے اور بتلائے کہ مردوں کے سننے کا حکم بھی شریعت سے ثابت اور اور انکے کفن و دفن کے احکام بھی شریعت سے ثابت دونوں میں آخر تفاوت کیا ہے ؟؟؟؟ ہم شریعت کے تمام احکامات پر عمل کرنے والے ہیں یہود کی طرح آدھا دین لینے والے نہیں کہ مرضی کا ہپ اور نہ مرضی کا تھو ۔۔۔

اور اگر قیاس ہی کرنا ہے تو پھراپنے قیاس کے تمام باطل گھوڑے دوڑا کر میرے ایک سوال کا جواب تو دو ؟؟؟

اور وہ سوال یہ ہے کہ تم جو کہتے ہو کہ مردے نہیں سنتے تو بھلا بتلاؤ کہ آیا زندہ اور مردہ میں جو سننے کی صلاحیت یا قوت ہے کیا وہ تمہاری دین یا رہین منت ہے یا تمہاری محتاج ہے کہ زندہ تو سنتا ہو اور مردہ چونکہ مر کر منوںمٹی تلے دفن ہوگیا لہذااب تم میں وہ طاقت نہیں رہی کہ تم اسے سنوا سکو جبکہ حقیقت یہ ہے کہ چاہے کوئی زندہ ہو یا مردہ اسے سنواتا اللہ عزو جل ہی ہے اور اسے سننے کے صلاحیت و قوت اللہ ہی کی عطا کردہ ہے جو کہ بے نیاز ہے اس کے لیے برابر ہے کہ چاہے تو زندہ زی روح کو سنوا دے اور چاہے تو بے جان پتھروں یعنی جمادات اور نباتات کو بھی سنوا د ے حالانکہ حضرت انسان تو پھر صاحب روح ہے اگرچہ مردہ ہو یا زندہ ۔

مجھے سمجھ نہیں آتی ان وہابیہ کی بھونڈی عقل کی کہ یوں تو یہ توحید کے بڑے داعی و ٹھیکے دار بنتے ہیں مگر جب شان الوہیت کی باری آتی ہے تو اسے مخلوق پر قیاس کرتے ہیں اور اللہ کی صفات کو مخصوص و مقید ٹھراتے ہیں کہ فلاح حالت میں تو فلاں سن سکتا ہے حالانکہ در اصل وہ فلاں اس وقت بھی خود اپنے آپ نہیں سن رہا ہوتا بلکہ اللہ ہی کی دی ہوئی قوت و صلاحیت ہی سے سن رہا ہوتا اوروہی فلاں جب مر جاتا ہے تو یہ جھٹ سے شور مچا دیتے ہیں کہ اب نہیں سن سکتا بھلا بندہ پوچھے کہ جب تک وہ زندہ تھا تو تب اس کا خدا کوئی اور تھا جو اسے سنوا رہا تھا اور اب جو فوت ہوگیا ہے تو ا سکا خدا کوئی اور ہوگیا ہے کہ جس کہ پاس مردوں کو سنوانے کی طاقت بھی نہیں یا پھر تمہارا خدا کے بارے میں یہ عقیدہ ہے کہ وہ انسانوں کو سنوانے کے لیے پہلے ان کے اندر مجرد نفس حیات یعنی قوت حیات کا محتاج ہے چناچہ تبھی کہتے ہو کہ جب تک تو زندہ تھا اس وقت تک سنتا تھا اب مر گیا حیات نہ رہی لہذا اب اللہ اسے معاذ اللہ سنوا بھی نہیں سکتا؟؟؟؟

عجب توحید ہے تمہاری جو کہ زندہ اور مردہ کے گرد گھومتی ہے یعنی تمہارے نزدیک اصل علت یعنی ِ"علت العلل "خدا کا سنوا دینا نہیں بلکہ خود مردے میں محض نفس حیات کا پایا جانا ہے لا حول ولا قوۃ الا باللہ۔

یعنی تمہارا عقیدہ اللہ پر نہیں بلکہ نفس حیات پر ہے اور تم نے اللہ کو نہیں بلکہ مجرد حیات کو اپنا رب و الٰہ مان رکھا ہے تبھی توحقیقی مؤثراللہ کوبالذات نہیں بلکہ نفس حیات کو مؤثر بالذاتمان رہے ہو۔۔۔ اس بڑا شرک بھلا کیا ہوگا فاعتبروا یااولی الابصار۔۔۔۔

dekhye imam abu Hanifa se hme kafi maslon mai ikhtilaf hai ku k ahdees ka or un k qoul ka apas mai kafi maslon mai takraao hai magar hm kabi un k khilaf koi ghalat bat nhi kehtay iski bari waja ye hai k unho ne kabhi nhi kaha k quran or hadees ko chhor kr meri bat mano bal k unho ne kaha k meri bat ko chhor quran or hadees ki bat mano, ap apni misal lelen charon imamon k qoul mai bhi tazad paya jata hai magar ap sirf abu Hanifa ko hi follow krtay hain magar un 3 imamon k lye kabhi koi galat alfaz nhi kahengay akhir ku?? is ka koi jawab hai ap logon k pas??

ye tamam shakhsiat hmare lye qabil e ehetram hain, ye sb insan hain in se galati ho sakti hai agar ye bat ap log samajh rahay hotay to kabhi taqleed na krtay..

kia hm pr imam abu Haneefa ya Imam shafaee ya imam hunbal ya imam Maliki ya ibn e kaseer ya phr ksi or ki ata,at farz kr di gai hai???

Share this post


Link to post
Share on other sites

اس بات پر سب کا اتفاق ھے کہ روحیں زندہ ھیں۔

 

اور

 

اس بات پر بھی اتفاق ھے کہ زندہ سنتے ھیں۔

 

پس ثابت ھوا کہ

روحیں زندہ اور سنتی ھیں۔

mai ne kb kaha k rooh zinda nhi rehti ??? rooh to zinda rehti hai magar jb wo insan k jism se juda hoti hai to insan mar jata hai...

agar naik rooh hai to wo jannat mai jayegi agar buri hai to wo dozakh mai jayegi.. agar jannat mai gai to jannat to aisi jaga hai k wo rooh kabhi dunia mai wapas ane ki khuwahish nhi kregi agar buri rooh hai to woh dozakh se nikalna chahe gi pr farishtay usay nikalne nhi denday...

Edited by Shizz

Share this post


Link to post
Share on other sites

(bis)

agar ye alfaz mai ap k lye istemal krti to hr giz is mai "ma,azrat k saath" ka izafa nhi krti ku k jis cheez pr yaqeen ho us pr ma,azrat kis bat ki bhala???or us ki yehi wajah hai k ap se musalsal kaha ja rha hai k ksi ki bat bhi mat manye sirf quran or Hadees ko dekhye, un ki kitabon se zaroor faida uthaye magar jahan un mai se ksi ki bat quran or hadees k khilaf nazar aye chhor den usay...

Edited by Shizz

Share this post


Link to post
Share on other sites

تو یہ ہے کہ آپ کا درجہ اجتھاد کہ آپکو ابھی بنیادی عربی بھی نہیں آتی اور آپ ابھی طلب علم میں ایام طفولیت سے گرز رہیں یعنی اس قدر بھی لیاقت نہیں کہ ٹو دی پوائنٹ عربی عبارات کا ترجمہ بھی خود سمجھ سکیں مگر شوق اجتھاد چرایا ہے لہذا ہر دوسرے فورم پر جاکر لوگوں پر شرک شرک فتوے لگائے جارہے ہیں جب حالت آپ کی یہ ہے کہ آپکو بنیادی عربی بھی نہیں آتی جبکہ قرآن وسنت کہ تمام علوم کی بنیادی اور مرکزی زبان ہی عربی ہے اور آپ ابھی عربی سیکھنے کے مراحل میں ہیں تو پھر آپ کو کس چیز نے برانگیختہ کیا کہ آپ دوسری جگہ جاکر اختلافی موضوعات پر تھریڈ بنائیں اورپھر جواب نہ بن پڑنے پر اپنی طالب علمی کا رونا رونے بیٹھ جائیں بی بی ابھی وقت ہے علوم کا مطالعہ کیجیئے بنیادی عربی اور دیگر اسلامک کلاسیکل علوم کو سیکھیئے پھر ریسرچ کیجیئے جو کہ کمپیرٹو اسٹڈی پر مشتمل ہو پھر کہیں جاکے میدان مناظرہ میں اتریئے تاکہ آپکو منہ کی نہ کھانی پڑھے ۔۔والسلام اور فاعتبروا یااولی الالبا

( ٨٠ ) ﺑﯿﺸﻚ ﺁﭖ ﻧﮧ ﻣﺮﺩﻭﮞ ﻛﻮ ﺳﻨﺎ ﺳﻜﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻧﮧ ﺑﮩﺮﻭﮞ ﻛﻮ ﺍﭘﻨﯽ ﭘﲀﺭ ﺳﻨﺎ ﺳﻜﺘﮯ ﮨﯿﮟ, (٤) ﺟﺒﻜﮧ ﻭﮦ ﭘﯿﭩﮫ ﭘﮭﯿﺮﮮ ﺭﻭﮔﺮﺩﺍﮞ ﺟﺎ ﺭﮨﮯ ﮨﻮﮞ

(٥) ﯾﻌﻨﯽ ﻭﮦ ﺣﻖ ﺳﮯ ﻣﻜﻤﻞ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﮔﺮﯾﺰﺍﮞ ﺍﻭﺭ ﻣﺘﻨﻔﺮ ﮨﯿﮟ ﻛﯿﻮﻧﻜﮧ ﺑﮩﺮﮦ ﺁﺩﻣﯽ ﺭﻭ ﺩﺭ ﺭﻭ ﺑﮭﯽ ﻛﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﺳﻦ ﭘﺎﺗﺎ ﭼﮧ ﺟﺎﺋﯿﻜﮧ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﺳﻦ ﺳﻜﮯ ﺟﺐ ﻭﮦ ﻣﻨﮧ ﻣﻮﮌ ﻟﮯ ﺍﻭﺭ ﭘﯿﭩﮫ ﭘﮭﯿﺮﮮ ﮨﻮﺋﮯ ﮨﻮ ۔ ﻗﺮﺁﻥ ﻛﺮﯾﻢ ﻛﯽ ﺍﺱ ﺁﯾﺖ ﺳﮯ ﯾﮧ ﺑﮭﯽ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮨﻮﺍ ﻛﮧ ﺳﻤﺎﻉ ﻣﻮﺗﯽ ﰷ ﻋﻘﯿﺪﮦ ﻗﺮﺁﻥ ﻛﮯ ﺧﻼﻑ ﮨﮯ ۔ ﻣﺮﺩﮮ ﻛﺴﯽ ﻛﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﺳﻦ ﺳﻜﺘﮯ ۔ ﺍﻟﺒﺘﮧ ﺍﺱ ﺳﮯ ﺻﺮﻑ ﻭﮦ ﺻﻮﺭﺗﯿﮟ ﻣﺴﺘﺜﻨﲐ ﮨﻮﮞ ﮔﯽ ﺟﮩﺎﮞ ﺳﻤﺎﻋﺖ ﻛﯽ ﺻﺮﺍﺣﺖ ﻛﺴﯽ ﻧﺺ ﺳﮯ ﺛﺎﺑﺖ ﮨﻮﮔﯽ ۔ ﺟﯿﺴﮯ ﺣﺪﯾﺚ ﻣﯿﮟ ﺁﺗﺎ ﮨﮯ ﻛﮧ ﻣﺮﺩﮮ ﻛﻮ ﺟﺐ ﺩﻓﻨﺎ ﻛﺮ ﻭﺍﭘﺲ ﺟﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺗﻮ ﻭﮦ ﺍﻥ ﻛﮯ ﺟﻮﺗﻮﮞ ﻛﯽ ﺁﮨﭧ ﺳﻨﺘﺎ ﮨﮯ ( صحيح بخاري نمبر ٣٣٨ ، صحيح مسلم نمبر ٢٢٠١ ) ﯾﺎ ﺟﻨﮓ ﺑﺪﺭ ﻣﯿﮟ ﰷﻓﺮ ﻣﻘﺘﻮﻟﯿﻦ ﻛﻮ ﺟﻮ ﻗﻠﯿﺐ ﺑﺪﺭ ﻣﯿﮟ ﭘﮭﯿﻨﻚ ﺩﯾﺌﮯ ﮔﺌﮯ ﺗﮭﮯ ۔ ﻧﺒﯽ ﹲ ﻧﮯ ﺧﻄﺎﺏ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ, ﺟﺲ ﭘﺮ ﺻﺤﺎﺑﮧ ﻧﮯ ﻛﮩﺎ ﹾ ﺁﭖ ﹲ ﺑﮯ ﺭﻭﺡ ﺟﺴﻤﻮﮞ ﺳﮯ ﮔﻔﺘﮕﻮ ﻓﺮﻣﺎ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ ۔ ﺁﭖ ﹲ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﻛﮧ ﯾﮧ ﺗﻢ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﻣﯿﺮﯼ ﺑﺎﺕ ﺳﻦ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ ۔ ﯾﻌﻨﯽ ﻣﻌﺠﺰﺍﻧﮧ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﺍﹴ ﺗﻌﺎﻟﲐ ﻧﮯ ﺁﭖ ﻛﯽ ﺑﺎﺕ ﻣﺮﺩﮦ ﰷﻓﺮﻭﮞ ﻛﻮ ﺳﻨﻮﺍ ﺩﯼ ( صحيح بخاري نمبر ١٣٠٧

 

bhai dekhna to zara k saudia arab walon ne is ayat ka tarjuma kia nikala hai or uski tafseer kia likhi hai.... agar wo arbi achay se bol or samajh letay hain ,arbi k mahir hain or arbi unki apni zuban hai... to kia hua hmare touheedi bhai or ap kia kam hain ksi se jb touheedi bhai ne kaha hai k yahan sunne se murad samaa e qabool murad hai to un ko kia pari thi k is k tarjumay ki tafseer alag likhtay hai na????

Share this post


Link to post
Share on other sites

آپ کی دیگر یاوہ گوئی کا تو کوئی جواب نہیں دوں گا رہا اس فورم پر جاکر آپ کے کسی مخصوص تھریڈ کو پڑھنا تو آپ ایک مہربانی کیجیئے کہ اس تھریڈ کو یہاں ہی منتقل کردیجیئے دیکھ لیتے ہیں کہ آپ نے اپنے ذاتی اجتھاد کے نام پر کیا گل کھلائیں ہیں اگر ایسا بخوشی کرسکتی ہیں تو ٹھیک ہے ورنہ اس تھریڈ کا لنک ہی مجھے پی ایم کردیجیئے میں با دل نخواستہ وہیں جاکر پڑھ کر خبر لیتا ہوں ۔۔۔والسلام

mai link apko baad mai PM kr dongi or ye bataye k khabar ap kis ki lengay meri ya meray thread ki???

Share this post


Link to post
Share on other sites

ufff o, yehi ke khuda ne bhi hukm dia murdo ko pukarne ka, simple aur kya, aap ne kuch jawab nahi dia

plz iska jawab zaroor do

( ٢٦٠ ) ﺍﻭﺭ ﺟﺐ ﺍﺑﺮﺍﮨﯿﻢ ( ﹳ ) ﻧﮯ ﻛﮩﺎ ﻛﮧ ﺍﮮ ﻣﯿﺮﮮ ﭘﺮﻭﺭﺩﮔﺎﺭ ! ﻣﺠﮭﮯ ﺩﻛﮭﺎ ﺗﻮ ﻣﺮﺩﻭﮞ ﻛﻮ ﻛﺲ ﻃﺮﺡ ﺯﻧﺪﮦ ﻛﺮﮮ ﮔﺎ؟ (١) ( ﺟﻨﺎﺏ ﺑﺎﺭﯼ ﺗﻌﺎﻟﲐ ﻧﮯ ) ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ، ﻛﯿﺎ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺍﯾﻤﺎﻥ ﻧﮩﯿﮟ؟ ﺟﻮﺍﺏ ﺩﯾﺎ ﺍﯾﻤﺎﻥ ﺗﻮ ﮨﮯ ﻟﯿﻜﻦ ﻣﯿﺮﮮ ﺩﻝ ﻛﯽ ﺗﺴﻜﯿﻦ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﯽ، ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﭼﺎﺭ ﭘﺮﻧﺪ ﻟﻮ، ﺍﻥ ﻛﮯ ﭨﻜﮍﮮ ﻛﺮ ﮈﺍﻟﻮ، ﭘﮭﺮ ﮨﺮ ﭘﮩﺎﮌ ﭘﺮ ﺍﻥ ﰷ ﺍﯾﻚ ﺍﯾﻚ ﭨﻜﮍﺍ ﺭﻛﮫ ﺩﻭ ﭘﮭﺮ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﭘﲀﺭﻭ، ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﭘﺎﺱ ﺩﻭﮌﺗﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺁﺟﺎﺋﯿﮟ ﮔﮯ ﺍﻭﺭ ﺟﺎﻥ ﺭﻛﮭﻮ ﻛﮧ ﺍﹴ ﺗﻌﺎﻟﲐ ﻏﺎﻟﺐ ﮨﮯ ﺣﻜﻤﺘﻮﮞ ﻭﺍﻻ ﮨﮯ،

 

(١) ﯾﮧ ﺍﺣﯿﺎﺋﮯ ﻣﻮﺗﯽ ﰷ ﺩﻭﺳﺮﺍ ﻭﺍﻗﻌﮧ ﮨﮯ ﺟﻮ ﺍﯾﻚ ﻧﮩﺎﯾﺖ ﺟﻠﯿﻞ ﺍﻟﻘﺪﺭ ﭘﯿﻐﻤﺒﺮ ﺣﻀﺮﺕ ﺍﺑﺮﺍﮨﯿﻢﹳ ﻛﯽ ﺧﻮﺍﮨﺶ ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﻛﮯ ﺍﻃﻤﯿﻨﺎﻥ ﻗﻠﺐ ﻛﮯ ﻟﺌﮯ ﺩﻛﮭﺎﯾﺎ ﮔﯿﺎ ۔ ﯾﮧ ﭼﺎﺭ ﭘﺮﻧﺪﮮ ﻛﻮﻥ ﻛﻮﻥ ﺳﮯ ﺗﮭﮯ؟ ﻣﻔﺴﺮﯾﻦ ﻧﮯ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﻧﺎﻡ ﺫﻛﺮ ﻛﺌﮯ ﮨﯿﮟ ﻟﯿﻜﻦ ﻧﺎﻣﻮﮞ ﻛﯽ ﺗﻌﯿﯿﻦ ﰷ ﻛﻮﺋﯽ ﻓﺎﺋﺪﮦ ﻧﮩﯿﮟ، ﺍﺱ ﻟﺌﮯ ﺍﹴ ﻧﮯ ﺑﮭﯽ ﺍﻥ ﻛﮯ ﻧﺎﻡ ﺫﻛﺮ ﻧﮩﯿﮟ ﻛﺌﮯ ۔ ﺑﺲ ﯾﮧ ﭼﺎﺭ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﭘﺮﻧﺪﮮ ﺗﮭﮯ ۔ فَصُرْهُنَّ ﻛﮯ ﺍﯾﻚ ﻣﻌﻨﯽ أَمِلْهُنَّ ﻛﺌﮯ ﮔﺌﮯ ﮨﯿﮟ ﯾﻌﻨﯽ ﺍﻥ ﻛﻮ ﹾﮨﻼﻟﮯﹿ ( ﻣﺎﻧﻮﺱ ﻛﺮﻟﮯ ) ﺗﺎﻛﮧ ﺯﻧﺪﮦ ﮨﻮﻧﮯ ﻛﮯ ﺑﻌﺪ ﺍﻥ ﻛﻮ ﺁﺳﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﭘﮩﭽﺎﻥ ﻟﮯ ﻛﮧ ﯾﮧ ﻭﮨﯽ ﭘﺮﻧﺪﮮ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻛﺴﯽ ﻗﺴﻢ ﰷ ﺷﻚ ﺑﺎﻗﯽ ﻧﮧ ﺭﮨﮯ ۔ ﺍﺱ ﻣﻌﻨﯽ ﻛﮯ ﺍﻋﺘﺒﺎﺭ ﺳﮯ ﭘﮭﺮ ﺍﺱ ﻛﮯ ﺑﻌﺪ ﺛﻢ قَطِّعْهُنَّ ( ﭘﮭﺮ ﺍﻥ ﻛﻮ ﭨﻜﮍﮮ ﭨﻜﮍﮮ ﻛﺮﻟﮯ ) ﻣﺤﺬﻭﻑ ﻣﺎﻧﻨﺎ ﭘﮍﮮ ﮔﺎ ۔ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﻣﻌﻨﯽ ﻗﻄﻌﮭﻦ ( ﭨﻜﮍﮮ ﭨﻜﮍﮮ ﻛﺮﻟﮯ ) ﻛﺌﮯ ﮔﺌﮯ ﮨﯿﮟ ۔ ﺍﺱ ﺻﻮﺭﺕ ﻣﯿﮟ ﻛﭽﮫ ﻣﺤﺬﻭﻑ ﻣﺎﻧﮯ ﺑﻐﯿﺮ ﻣﻌﻨﯽ ﮨﻮﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ۔ ﻣﻄﻠﺐ ﯾﮧ ﮨﮯ ﻛﮧ ﭨﻜﮍﮮ ﭨﻜﮍﮮ ﻛﺮﻛﮯ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﭘﮩﺎﮌﻭﮞ ﭘﺮ ﺍﻥ ﻛﮯ ﺍﺟﺰﺍ ﺑﺎﮨﻢ ﻣﻼ ﻛﺮ ﺭﻛﮫ ﺩﮮ، ﭘﮭﺮ ﺗﻮ ﺁﻭﺍﺯ ﺩﮮ ﺗﻮ ﻭﮦ ﺯﻧﺪﮦ ﮨﻮ ﻛﺮ ﺗﯿﺮﮮ ﭘﺎﺱ ﺁﺟﺎﺋﯿﮟ ﮔﮯ ۔ ﭼﻨﺎﻧﭽﮧ ﺍﯾﺴﺎ ﮨﯽ ﮨﻮﺍ ۔ ﺑﻌﺾ ﺟﺪﯾﺪ ﻭﻗﺪﯾﻢ ﻣﻔﺴﺮﯾﻦ ﻧﮯ ( ﺟﻮ ﺻﺤﺎﺑﮧ ﻭﺗﺎﺑﻌﯿﻦ ﻛﯽ ﺗﻔﺴﯿﺮ ﺍﻭﺭ ﺳﻠﻒ ﻛﮯ ﻣﻨﮩﺞ ﻭﻣﺴﻠﻚ ﻛﻮ ﺍﮨﻤﯿﺖ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﯾﺘﮯ ) فَصُرْهُنَّ ﰷ ﺗﺮﺟﻤﮧ ﺻﺮﻑ ﹾﮨﻼﻟﮯﹿ ﰷ ﻛﯿﺎ ﮨﮯ ۔ ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﻛﮯ ﭨﻜﮍﮮ ﻛﺮﻧﮯ ﺍﻭﺭ ﭘﮩﺎﮌﻭﮞ ﭘﺮ ﺍﻥ ﻛﮯ ﺍﺟﺰﺍ ﺑﻜﮭﯿﺮ ﻧﮯ ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺍﹴ ﻛﯽ ﻗﺪﺭﺕ ﺳﮯ ﺍﻥ ﻛﮯ ﺟﮍﻧﮯ ﻛﻮ ﻭﮦ ﺗﺴﻠﯿﻢ ﻧﮩﯿﮟ ﻛﺮﺗﮯ ۔ ﻟﯿﻜﻦ ﯾﮧ ﺗﻔﺴﯿﺮ ﺻﺤﯿﺢ ﻧﮩﯿﮟ، ﺍﺱ ﺳﮯ ﻭﺍﻗﻌﮯ ﻛﯽ ﺳﺎﺭﯼ ﺍﻋﺠﺎﺯﯼ ﺣﯿﺜﯿﺖ ﺧﺘﻢ ﮨﻮﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﻣﺮﺩﮮ ﻛﻮ ﺯﻧﺪﮦ ﻛﺮ ﺩﻛﮭﺎﻧﮯ ﰷ ﺳﻮﺍﻝ ﺟﻮﮞ ﰷ ﺗﻮﮞ ﻗﺎﺋﻢ ﺭﮨﺘﺎ ﮨﮯ ۔ ﺣﺎﻻﻧﻜﮧ ﺍﺱ ﻭﺍﻗﻌﮧ ﻛﮯ ﺫﻛﺮ ﺳﮯ ﻣﻘﺼﻮﺩ ﺍﹴ ﺗﻌﺎﻟﲐ ﻛﯽ ﺻﻔﺖ ﺍﺣﯿﺎﺋﮯ ﻣﻮﺗﯽ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﻛﯽ ﻗﺪﺭﺕ ﰷﻣﻠﮧ ﰷ ﺍﺛﺒﺎﺕ ﮨﮯ ۔ ﺍﯾﻚ ﺣﺪﯾﺚ ﻣﯿﮟ ﮨﮯﻧﺒﯽ ﹲ ﻧﮯ ﺣﻀﺮﺕ ﺍﺑﺮﺍﮨﯿﻢﹳ ﻛﮯ ﺍﺱ ﻭﺍﻗﻌﮯ ﰷ ﺗﺬﻛﺮﮦ ﻛﺮﻛﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ "نَحْنُ أَحَقُّ بِالشَّكِّ مِنْ إِبْرَاهِيمَ" (صحيح بخاري، كتاب التفسير) ﹾﮨﻢ ﺍﺑﺮﺍﮨﯿﻢﹳ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺷﻚ ﻛﮯ ﺣﻖ ﺩﺍﺭ ﮨﯿﮟ ۔ ﹿ ﺍﺱ ﰷ ﯾﮧ ﻣﻄﻠﺐ ﻧﮩﯿﮟ ﻛﮧ ﺍﺑﺮﺍﮨﯿﻢﹳ ﻧﮯ ﺷﻚ ﻛﯿﺎ، ﻟﮩﺬﺍ ﮨﻤﯿﮟ ﺍﻥ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺷﻚ ﻛﺮﻧﮯ ﰷ ﺣﻖ ﭘﮩﻨﭽﺘﺎ ﮨﮯ ۔ ﺑﻠﻜﮧ ﻣﻄﻠﺐ ﺣﻀﺮﺕ ﺍﺑﺮﺍﮨﯿﻢﹳ ﺳﮯ ﺷﻚ ﻛﯽ ﻧﻔﯽ ﮨﮯ ۔ ﯾﻌﻨﯽ ﺍﺑﺮﺍﮨﯿﻢ ﹳ ﻧﮯ ﺍﺣﯿﺎﺋﮯ ﻣﻮﺗﯽ ﻛﮯ ﻣﺴﺌﻠﮯ ﻣﯿﮟ ﺷﻚ ﻧﮩﯿﮟ ﻛﯿﺎ ﺍﮔﺮ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺷﻚ ﰷ ﺍﻇﮩﺎﺭ ﻛﯿﺎ ﮨﻮﺗﺎ ﺗﻮ ﮨﻢ ﯾﻘﯿﻨﺎﹰ ﺷﻚ ﻛﺮﻧﮯ ﻣﯿﮟ ﺍﻥ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺣﻖ ﺩﺍﺭ ﮨﻮﺗﮯ ( ﻣﺰﯾﺪ ﻭﺿﺎﺣﺖ ﻛﮯ ﻟﺌﮯ ﺩﯾﻜﮭﯿﮯ ﻓﺘﺢ ﺍﻟﻘﺪﯾﺮ ۔ ﻟﻠﺸﻮﰷﻧﯽ )

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now
Sign in to follow this  
Followers 0

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.