Jump to content
IslamiMehfil

Leaderboard

Popular Content

Showing content with the highest reputation since 12/02/2021 in all areas

  1. حضرت ہندہ بنت عتبہ کا سید الشہداء اسداللہ واسدالرسول حمزہ بن عبدالمطلب رضی اللہ عنہما کا کلیجہ چبانا ثابت ہے اسے سند صحیح کے ساتھ امام احمد بن حنبل نے مسند میں روایت کیا جس میں جناب سیدنا حمزہ بن عبدالمطلب کا جگر چبانے کے واضح الفاظ ہے حَدَّثَنَا عَفَّانُ، حَدَّثَنَا حَمَّادٌ، حَدَّثَنَا عَطَاءُ بْنُ السَّائِبِ، عَنِ الشَّعْبِيِّ، عَنِ ابْنِ مَسْعُودٍ .......... فَنَظَرُوا فَإِذَا حَمْزَةُ قَدْ بُقِرَ بَطْنُهُ، وَأَخَذَتْ هِنْدُ كَبِدَهُ فَلَاكَتْهَا، فَلَمْ تَسْتَطِعْ أَنْ تَأْكُلَهَا فَقَالَ رَسُولُ اللهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: " أَأَكَلَتْ مِنْه
    2 points
  2. آداب ، اگر آپ (ص۔ع۔و) کے بعد کسی قسم کا بھی کوئی نبی آنا ہوتا تو احادیث کی روشنی میں مولا علی (ر۔ع) اور حضرت عمر (ر۔ع) سے بڑھ کر کوئی اور اس مرتبے کا مستحق نہیں تھا۔
    1 point
  3. جناب بہت بہت شکریہ الله پاک آپ کو عشق و محبت اور علم میں اور اعلی مقام عطا فرماۓ معزرت دیر سے جواب دینے کا مجھے لگا کہ شاید اب نہ ملے آج پھر سرچ کیا تو اپنی یہ پوسٹ ملی جس سے دل خوش ہو گیا
    1 point
  4. اس روایت کو امام دیلمی رحمہ اللہ نے مولا علی رضی اللہ عنہ سے منسوب کرکے بیان کیا مسند الفردوس میں حافظ ابن حجر عسقلانی رضی اللہ عنہ نے امام دیلمی سے اس کی سند بیان کی قال أبو عبد الرحمن السلمي حدثنا محمد بن مالك التميمي بمرو حدثنا أبو منصور الرباطي حدثنا محمد بن نهشل بن حميد حدثنا عبد الله بن رجاء عن إسرائيل عن أبي إسحاق عن الحارثعن علي رفعه "يأتي على الناس زمان همتهم بطونهم، وشرفهم متاعهم، وقبلتهم نساؤهم، ودينهم دارهم ودنانيرهم، أولئك شر الخلق، لا خلاق لهم عند الله" ( كتاب زهر الفردوس 8/335 ) ترجمہ :- لوگوں پر ایک زمانہ آئے گا کہ ان کا مقصد ان کا پیٹ ہوگا
    1 point
  5. اس کو احیاء العلوم میں ابو حامد غزالی رحمہ اللہ نے حضرت ابن عباس اور ابو ہریرہ رضی اللہ عنہما کی طرف منسوب کرکے نقل کیا پوسٹر میں بھی تخریج احیاءالعلوم مرتضی زبیدی کا حوالہ ہے فقد روي عن ابن عباس وأبي هريرة رضي الله عنهما إن من قرأ سورة الكهف ليلة الجمعة أو ليلة الجمعة أو يوم الجمعة أعطي نورا من حيث يقرؤها إلى مكة وغفر له إلى يوم الجمعة الأخرى وفضل ثلاثة أيام وصلى عليه سبعون ألف ملك حتى يصح وعوفي من الداء والدبيلة وذات الجنب والبرص والجذام وفتنة الدجال ابن عباس اور ابو ہریرہ سے مروی ہے کہ جو شخص شب جمعہ یا جمعہ کے روز سورہ کہف کی تلاوت کرتا ہے اسے ایک نور عطا کیا جاتا
    1 point
  6. اس طرح کی ایک راویت کو امام ابوالقاسم الزنجانی نے اپنی کتاب المنتقى من فوائد الزنجاني رقم 58 میں روایت کیا ہے جس کی سند اس طرح ہے أحمد بن سعيد الإخميمي، حدثنا أبو الطيب عمران بن موسى العسقلاني من حفظه، أخبرنا المؤمل بن إهاب، أخبرنا عبد الرزاق، أخبرني معمر، عن الزهري، عن سعيد بن المسيب، عن أبي هريرةقَالَ قَالَ رَسُول الله صلى الله عَلَيْهِ وَسلم: من دخل الْمَقَابِر ثمَّ قَرَأَ فَاتِحَة الْكتاب، و ( قل هُوَ الله أحد )، و ( أَلْهَاكُم التكاثر )، ثمَّ: اللَّهُمَّ إِنِّي جعلت ثَوَاب مَا قَرَأت من كلامك لأهل الْمَقَابِر من الْمُؤمنِينَ وَالْمُؤْمِنَات ؛ كَانُوا شُفَعَاء لَهُ إِلَى الله تَعَ
    1 point
  7. یہ ایک موضوع ( منگھڑت ) روایت ہے اس کو امام الحسن الخلال نے فضائل سورہ اخلاص میں اپنی سند کے ساتھ روایت کیا حدثنا أحمد بن إبراهيم بن شاذان، ثنا عبد الله بن عامر الطائي، حدثني أبي، ثنا علي بن موسى، عن أبيه، موسى، عن أبيه، جعفر، عن أبيه، محمد، عن أبيه، علي، عن أبيه الحسين، عن أبيه علي بن أبي طالب قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم «من مر على المقابر وقرأ قل هو الله أحد إحدى عشرة مرة، ثم وهب أجره للأموات أعطي من الأجر بعدد الأموات» كتاب فضائل سورة الإخلاص للحسن الخلال :- 54 ترجمہ :- علی بن ابی طالب سے مروی ہے کہ نبی علیہ الصلاۃ والسلام نے فرمایا
    1 point
  8. یہ ان الفاظ کے ساتھ مشہور ہے إن الزنا دين إذا أقرضته ... كان الوفا من أهل بيتك فاعلم بلاشبہ زنا ایک قرض ہے، اگر تم اس قرض میں مبتلا ہوئے ہو، تو یاد رکھو! اس قرض کی ادائیگی بھی تمہارے گھر ہی سے ہوگی نہ تو یہ حدیث ہے اور نہ ہی کسی بزرگ کا قول بلکہ یہ اصول شریعت کے بھی خلاف ہے کوئی کسی کے گناہ کا بوجھ نہیں اٹھاتا قرآن کی نص ہے وَلَا تَزِرُ وَازِرَةٌ وِّزْرَ اُخْرٰى ۚ اور کوئی بوجھ اٹھانے والی جان دوسرے کا بوجھ نہ اٹھائے گی سورۃ فاطر :- 18 یہ اشعار ناصر الحدیث امام محمد بن ادریس الشافعی رضی ال
    1 point
  9. اس قول کے مفہوم پر ملتی جلتی ایک روایت المستدرک للحاکم (ج4، 170، رقم 7258)ہے امام حاکم نے اس کی تصحیح کی لیکن امام ذہبی نے تضعیف کی ہے جس کا ثبوت یہ ہے حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ صَالِحِ بْنِ هَانِئٍ، ثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ أَبِي طَالِبٍ، ثَنَا يَحْيَى بْنُ حَكِيمٍ، وَإِسْحَاقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ الصَّرَّافُ، قَالَا: ثَنَا سُوَيْدٌ أَبُو حَاتِمٍ، عَنْ قَتَادَةَ، عَنْ أَبِي رَافِعٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: «عِفُّوا عَنْ نِسَاءِ النَّاسِ تَعِفَّ نِسَاؤُكُمْ وَبَرُّوا آبَاءَكُمْ تَبَرَّكُمْ أَبْنَاؤُكُمْ وَمَنْ
    1 point
  10. اس روایت کی سند میں حماد سے مراد حماد بن سلمہ ہی ہیں اس بات کی تصریح دوسری سند سے مل گئی ہے جس کا ثبوت یہ ہے قال أخبرنا عفان بن مسلم قال أخبرنا حماد بن سلمة قال أخبرنا عطاء بن السائب عن الشعبي عن بن مسعود قال قال أبو سفيان يوم أحد قد كانت في القوم مثلة وإن كانت لعن غير ملا مني ما أمرت ولا نهيت ولا أحببت ولا كرهت ساءني ولا سرني قال ونظروا فإذا حمزة قد بقر بطنه وأخذت هند كبده فلاكتها فلم تستطيع هند أن تأكلها فقال رسول الله صلى الله عليه وسلم أكلت منها شيئا قالوا لا قال ما كان الله ليدخل شيئا من حمزة النار الطبقات الکبری لابن سعد، ج 3، ص13
    1 point
  11. اس روایت کی مکمل سند تاریخ بغداد ( ج 15، ص 484) میں ہے جو کہ یہ ہے أَخْبَرَنَا علي بن المحسن المعدل، قَالَ: حَدَّثَنَا أَبُو بكر أَحْمَد بن مُحَمَّد بن يَعْقُوب الكاغدي، قَالَ: حَدَّثَنَا أَبُو مُحَمَّد عبد الله بن مُحَمَّد بن يَعْقُوب بن الحارث الحارثي البخاري ببخارى، قَالَ: حَدَّثَنَا أَحْمَد بن الحسين البلخي، قَالَ: حَدَّثَنَا حماد بن قريش، قال: سمعت أسد بن عمرو، يقول: صلى أَبُو حنيفة فيما حفظ عليه صلاة الفجر بوضوء صلاة العشاء أربعين سنة، فكان عامة الليل يقرأ جميع القرآن في ركعة واحدة، وكان يسمع بكاؤه بالليل حتى يرحمه جيرانه، وحفظ عليه أنه ختم القرآن في الموضع الذي توفي فيه سبعة آلاف م
    1 point
  12. *جس نے جان بوجھ کر ایک نماز چھوڑی اس کا نام جہنم کے دروازے پر لکھ دیا جاتا ہے جس میں وہ داخل ہوگا۔* 1 📕حدثنا إبراهيم بن محمد بن يحيى المزكي النيسابوري، في جماعة قالوا: ثنا محمد بن إسحاق الثقفي، ثنا أبو معمر صالح بن حرب , ثنا إسماعيل بن يحيى، عن مسعر، عن عطية، عن أبي سعيد، قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: «من ترك صلاة متعمدا كتب اسمه على باب النار فيمن يدخلها» تفرد به صالح , عن إسماعيل، عنه (حلیاۃ اولیاء و طبقات اصفیاء7/254) 2 :📕473 - أخبركم أبو الفضل الزهري، نا أبي، نا محمد بن غالب، نا صالح بن حرب، نا إسماعيل بن يحيى بن طلحة بن عبيد الله، عن مسعر، عن عطية، عن أبي سعيد الخد
    1 point
  13. بِسْــــــــــــــــــمِ ﷲِالرَّحْــــــمٰنِ الرَّحــــــِیـــــم کافی عرصے سے اس جھوٹ کو نبی علیہ الصلاۃ و السلام کی طرف منسوب کیا جا رہا ہے اور اکثر خطباء اور واعظین اس کو بڑے زور و شور سے بیان کر رہے ہیں سونے پر سہاگہ یہ کہ ایک مفتی صاحب نے اس کو ضعیف ثابت کرنے کے لیے ایک تحریر بھی لکھ دی اور اپنی ایک کتاب میں اس کو ضعیف ثابت کرنے کے لیے تھوڑی سی گفتگو بھی کی ہم نے اپنی درج ذیل پی ڈی ایف میں مفتی صاحب کے دلائل کا اصول محدثین کی روشنی میں تحقیقی و تنقیدی جائزہ لیا ہے اور اس روایت کو اصول محدثین پر موضوع یعنی منگھڑت ثابت کیا تمام احباب اس کا ضرور بضرور مطالعہ فرمائیں اور زیاد
    1 point
  14. Introduction: Shaykh Muhammad Ibn Abdul Wahhab started the evil Sunnah of saying beliefs of Muslims are same as Mushrikeen of Arabia because some practices outwardly resemble actions of Mushrikeen. And ever since those who have walked on his Khariji path have been busy accusing the Muslims of same. Article I am responding to is another extension of recycled Kharijism redirected toward members of Ahlus Sunnah Wal Jammah residing in and originating from Indian subcontinent (Pakistan, India, Bangladesh, Nepal, Sri Lanka, and Afghanistan) called Bareilwis. This refutation will expose Ibn Shaytan’
    1 point
  15. *حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کا ایمان(یقین) امت سے بڑھ کے ہے* مختلف الفاظ کے ساتھ یہ حدیث موجود ہے کہیں جمیع المومنین کے الفاظ ہیں تو کہیں العالمین کے ہیں اور کہیں الناس کے ہیں کہیں اھل العرض کے الفاظ ہیں۔ یہ روایت معناََ صحیح ہے۔ لو وضع إيمان أبي بكر على إيمان هذه الأمة لرجح بها۔ ترجمہ: حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کا ایمان امت سے بڑھ کے ہے، اس کے شواھد و مطابعت موجود ہیں جس کی وجہ سے یہ حدیث درجہ حسن کی ہے بلک اس سے اوپر تک جا سکتی ہے۔ اور اسی مفہوم(مطابعت و شواھد) کی ایک موقوف روایت شعب الایمان میں موجود ہے سند کے ساتھ۔ 35: أخبرنا أبو عبد الله الحافظ، حدث
    1 point
  16. *ابو بکر سے محبت کرنا اور ان کا شکریہ ادا کرنا میری اُمت پر واجب ہے حدیث کی تحقیق* حُبُّ اَبِیْ بَکْرٍ وَشُکْرُہٗ وَاجِبٌ عَلٰی اُمَّتِی ابو بکر سے محبت کرنا اور ان کا شکریہ ادا کرنا میری اُمت پر واجب ہے۔ ✍️یہ روایت موضوع ہے اس کے دو طریق ہیں اور دونوں میں ایک کذاب راوی موجود ہے۔ *طریق نمبر 1:.* 2726 - أحمد بن محمد بن العلاء حدث عن عمر بن إبراهيم الكردي، روى عنه: ابن أخيه محمد بن عبيد الله بن محمد بن العلاء الكاتب 📕أخبرني الحسن بن أبي طالب، قال: حدثنا يوسف بن عمر القواس، قالا: حدثنا أبو جعفر محمد بن عبيد الله بن محمد بن العلاء الكاتب، قال: حدثني عمي أحمد بن محمد
    1 point
  17. عن محمد بن جعفر الشاشي: أخبرنا أبو صالح أحمد بن مزيد: أخبرنا منصور بن سليمان اليمامي: أخبرنا إبراهيم بن سابق: أخبرنا عاصم بن علي: حدثني أبي عن حميد الطويل عنه مرفوعا به دون قوله: " فمن أراد.... " وزاد: " وحلقتها معاوية! أخرجه محمد بن حمزة الفقيه في " أحاديثه " (214/2)
    1 point
  18. آذان سے پہلے اور بعد میں کیا پڑھیں اور کیا کیا پڑھ سکتے ہیں قرآن و حدیث کی روشنی میں. از قلم و طالب دعا: محمد عمران علی حیدری۔ بسم اللہ الرحمن الرحیم یا اللہ عزوجل یارسول اللہؐﷺ 🌹دورد ذات اقدس صلی اللہ علیہ وسلم اور آل و اصحاب پر بے شمار لاکھوں کروڑوں اربوں کھربوں کثیرا کثیرا بار❤️ صلی اللہ علیہ وآلہ اصحابہ وبارک وسلم القرآن المجید فرقان الحمید برہان العظیم میں اللہ وحدہ لاشریک کا انعام، بے مثل قرآن میں بےمثال فرمان :۔❤️❤️ 📖اِنَّ اللّٰہَ وَ مَلٰٓئِکَتَہٗ یُصَلُّوۡنَ عَلَی النَّبِیِّ ؕ یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا صَلُّوۡا عَلَیۡہِ
    1 point
  19. آذان سے پہلے اور بعد میں کیا پڑھیں اور کیا کیا پڑھ سکتے ہیں قرآن و حدیث کی روشنی میں. از قلم و طالب دعا: محمد عمران علی حیدری۔ بسم اللہ الرحمن الرحیم یا اللہ عزوجل یارسول اللہؐﷺ 🌹دورد ذات اقدس اور آل و اصحاب پر بے شمار لاکھوں ارباں کروڑاں کھرباں بار❤️ صلی اللہ علیہ وآلہ اصحابہ وبارک وسلم القرآن المجید فرقان الحمید برہان العظیم میں اللہ وحدہ لاشریک کا انعام، بے مثل قرآن میں بےمثال فرمان :۔❤️❤️ 📖اِنَّ اللّٰہَ وَ مَلٰٓئِکَتَہٗ یُصَلُّوۡنَ عَلَی النَّبِیِّ ؕ یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا صَلُّوۡا عَلَیۡہِ وَ سَلِّم
    1 point
  20. Salam alaykum. Achi tara istinja aur Miswak istimal keren phir wuzu keren aur phir ghusul ba mutabik Sunnat keren. Saban istimal ghusul doran istimal nah keren Sar par pani. Kandoon par pani kay koee jism ka hissa aur baal sookha nah rahay. Phir donoon hathoon say sar say leh kar pahoon taq mal lenh ... Phir pani dalen phir ussee tareekeh say mallen. Phir tesri aakhri dafa pani dalen. Ghusul ho gaya. Tafseel say ghusul ka zikr nahin balkay aam heh. ghusul say aap ka jism paak saf ho gaya chahay safaid mail ho ya kali. Jis zamana mein ghusul ka hukum huwa us zamana
    1 point
  21. ایاک نعبد اور وایاک نسعین کا صحیح فہم کتب تفاسیر سے ایک آیت کی پانچ معتبر کتب تفسیر سے وضاحت کہ علماء نے اسے کیسے سمجھا اسکی تفصیل درج ذیل ہے۔ طالب دعا محمد عمران علی حیدری ✍️( درخواست ساری پوسٹ پڑھیں اور بزرگوں کو فالو کریں👏👏 ⛲أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم⛲ ⛲بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ⛲ یا اللہ جَلَّ جَلَالُہٗ یارسول ﷺ اَلصَّلٰوۃُ وَالسَّلاَمُ عَلَیْکَ یَا رَسُوْلَ اللّٰہ وعَلٰی اٰلِکَ وَ اَصْحٰبِکَ یَا حَبِیْبَ اللہ اَلصَّلٰوۃُ
    1 point
  22. اس موضوع پر پہلے بھی یہاں بحث ہو چکی ہے برائے مہربانی پہلے وہ موضوع دیکھ لیں
    1 point
  23. *عقیدہ حاضر و ناظر* *احادیث مبارکہ کی روشنی میں* حدثنا ابو نعیم: قال، حدثنا الاعمش، عن شفیق بن سلمۃ، قال: قال عبداللہ: کنا اذا صلینا خلف النبی ﷺ ، قلنا السلام علی جبریل، ومیکائیل، السلام علی فلان وفلان، فالتفت الینا رسول اللہ ﷺ فقال: ان اللہ ھو السلام ، فاذا صلی احدکم فلیقل التحیات للہ والصلوات والطیبات السلام علیک ایھاالنبی ورحمۃ اللہ وبرکاتہ السلام علینا وعلی عبادللہ الصالحین فانکم اذا قلتموھا اصابت کل عبداللہ صالح فی السماء والارض اشھد ان لا الہ الا اللہ واشھد ان محمد عبدہ ورسولہ 📘 (بخاری حدیث نمبر 831) جب ہم نبی کریم ﷺ کے پیچھے نماز پڑھتے تو کہتے سلام ہو جبرائیل اور میکائل
    1 point
  24. Bidat Kya hai iss ki Mukhtasar W فرمانِ مصطفےٰ صلَّی اللہ علیہ واٰلہٖ وسلَّم ہے: مَنْ اَحْدَثَ فِيْ اَمْرِنَا هٰذَا مَا لَيْسَ مِنْهُ فَهُوَ رَدٌّ یعنی جس نے ہمارے اس دین میں ایسا طریقہ ایجاد کیا جس کا تعلّق دین سے نہیں ہےتو وہ مَرْدُود ہے۔(بخاری،ج2،ص211،حدیث:2697) یہ حدیثِ پاک ان احادیث میں سے ہے جو شریعتِ اسلامیہ کے لئے بنیادی ارکان اور بنیادی اُصول و ضَوابط کی حیثیت رکھتی ہیں۔ امام یحییٰ بن شَرف نَوَوی رحمۃ اللہ علیہ (سال وفات: 676ھ) فرماتے ہیں: ”هذا الحديث قاعدة عظيمة من قواعد الاسلام“ یعنی یہ حدیثِ پاک اسلام
    1 point
  25. یہ کہنا(معبود جھوٹ بول سکتا ہے) ایسے ھی ھے جیسے یہ کہنا کہ دیوبندیوں کا معبود خود کشی کر سکتا ہے مگر کرتا نہیں (تو جس کی موت و حیات ممکن ہو وہ تو ممکن الوجود ھے نہ کہ واجب الوجود)۔ یا جیسے یہ کہنا کہ دیو باندیوں کا معبود اتنا بھاری پتھر بنا سکتا ہے جسے وہ خود بھی نہ اٹھا سکے ۔ یا جیسے یہ کہنا کہ دیوبندیوں کا معبود چوری کر سکتا ہے، نہ کر سکے تو قدرت پر حرف آتا ہے اور کر سکے تو اس کی ملکیت سے کچھ چیزوں کو خارج ماننا پڑتا ہے جن کی وہ چوری کر سکے اور جن کے لئے کوئی اور مالک ومعبود ماننا لازم آتا ہے ۔ حقیقت میں سچا معبود سب کا ایک ھی ھے جیسا کہ سورۃ اخلاص
    1 point
  26. سبحٰن السبوح 1307ھ میں امکان کذب کے جدید مدعیان (براہین قاطعہ کے شروع میں امکان کذب کا دفاع کرنے والے صاحبان کو دہلوی کے مقتدی اور مدعیان جدید )لکھا تھا کہ "اِن مقتدیوں یعنی مدعیانِ جدید کو ابھی (1307ھ) تک مسلمان ھی جانتا ہوں اگرچہ ان کی بدعت و ضلالت میں شک نہیں "۔ تحذیرالناس کی تکفیر کی نفی یہاں سے اخذ کرنا ھرگز درست نہیں ہے ۔ سبحٰن السبوح سے ایک سال پہلے لکھی گئی کتاب اعلام الاعلام بان ھندوستان دارالاسلام (1306ھ) میں لکھا ہے ۔ "جو نجدی وہابی ۔ ۔ ۔ کہے آج تک جو صحابہ تابعین خاتم النبیین کے معنی آخر النبیین سمجھتے رہے خطا پر تھے، نہ پچھلا نبی ھونا حض
    1 point
  27. Get Accurate Sehr, Iftar & Islamic Prayer/Namaz Times Like Fajar, Sunrise, Zuha-E-Kubra, Zuhr, Asr, Maghrib, Isha, So You Can Save Your Salat/Salah. Here is some prayer times website. https://prayertimesnyc.com/ https://prayertimesdubai.net/ https://sydneyprayertimes.com/ https://torontoprayertimes.com/ https://melbourneprayertimes.com/ https://londonprayertimes.net/ https://qatarprayertimes.com/ https://prayertimesperth.com/ https://prayertimedubai.com/ https://riyadhprayertimes.com/ https://prayertimescairo.com/ https://prayertimesabudhabi.com/ https://prayertimeskuwait.com/ ht
    1 point
  28. جناب مفہوم مخالف پر استدلال کی بنیاد رکھنے والے صاحب کیا ہر جگہ مفہوم مخالف کے حجت ہونے پراجماع ہے؟ وَلَا تَقْتُلُوا أَوْلَادَكُمْ خَشْيَةَ إِمْلَاقٍ۔الإسراء31 لَا تَأْكُلُوا الرِّبَا أَضْعَافًا مُضَاعَفَةً۔آل عمران130 پہلی آیت میں ہے کہ اپنی اولاد کو فاقہ کے ڈر سےقتل نہ کرو۔ دوسری آیت میں ہے کہ دگنے پر دگنا سود نہ کھاؤ۔ کیا آپ یہاں پر اللہ تعالیٰ پر بھی الزام لگائیں گے کہ اُس نے فاقہ کے ڈر کے علاوہ میں قتل اولاد کی اجازت دی ہے۔ کیا آپ یہاں پر اللہ تعالیٰ پر یہ الزام بھی لگائیں گے کہ اُس نے سود کھانے کی اُس وقت تک اجازت دی ہے جب تک وہ دگنے پردگنا نہ ہو۔ جناب مفہوم مخ
    1 point
  29. Radd E Wahabi Deobandi 4000 Scan Refence Form Deoband Books For Internet Facebook And Twiter Etc have folders like this its a very big collection of anti wahabi and deobandi scan books and quotes [CLICK HERE] for download
    1 point
  30. mien yahan per talib ilm ki hasiyat say hee ata hooon. or mera maksad yahan per ilm seekhna hee hay. or mien kisi ahle khabsee ya deogandi ko khud say kuch reply nahi kerta. bulkay app jaisay ilmi hazrat say rujoo kerta hooon. jo app boltay ho to wohi baaat agay bolta hoooon. or khud bhi samjhta hooon kay aisa kiun hay or waisa kiun hay. or jo galiyaaan day rahey hotay hien muhj say berdasht nahi hoti kay kisi sunni ko kuch bola jai. ab muhjay app say aik point mila. kay sunan abu daoon ki jo hadith hay . AHLE KHABEEES nay gahlat tajerma keeya hay. us may BAAZ QABAIL ka ziker hee nahi hay
    1 point
  31. کھودا پہاڑ، نکلا چوھا جناب والا! بات بڑے چھوٹے فتنہ کی نہیں ھے بلکہ اُس نے بریلوی نزاع چھوڑنے کی وجہ بھی خود ھی بتا دی تھی کہ اُدھر کفریات نہیں ھیں۔ اور اِدھر شیعہ کے یہاں کفریات ھیں۔ عقل سے کون فارغ ھے اور کون نہیں؟ اِس بات کا عقلمند قارئین خود فرما سکتے ھیں۔
    1 point
  32. یہ ایک جواب شیر کر رہا ہوں ۔۔۔اس کو بھی دیکھ لیجے۔۔
    1 point
  33. رد علی اباطیل البانی.pdf
    1 point
  34. Ya Hadees main nay akk Website pr read ki hy, main ya jaana chahta hon, ky kia ya sahee Hadees hay, aor mugy ya bhe pata karna hay ky, akk bar jab SARKAR SALLAHO ALAHY WALY WASLEM ny akk baar Ijzaat day di, aor un Sahabi ny nikah bhe kar lia, Pheer kasy again usko azaad karwa kar khud nikah main lay lia, mari Naqs Aqal main ya baat ajeeb lag rahi hy, Please ap Islah famrain, Jazak ALLAH صحیح بخاری کتاب الصلوٰۃ ( نماز کے احکام و مسائل ) باب : ران سے متعلق جو روایتیں آئی ہیں حدیث نمبر : 371 حدثنا يعقوب بن إبراهيم، قال حدثنا إسماعيل ابن علية، ق
    1 point
  35. دیدار الہی اور تطبیق روایت عایشہ صدیقه رضی الله عنہا مزید تفصیل کی لیے غزالی زمان علامہ سید احمدسعید کاظمی رحمت الله علیہ کے مقالات کا مطالعہ فرمائیں .جو کہ آن لائن بھی دستیاب ہیں . مقالات کاظمی جِلد ١ باب معراج النبی صلی الله علیہ و سلم و ''درالتاج فی مسئلۃ المعراج'' کا مطالعہ نہایت ہی سود مند رہے گا - جزاک الله عزوجل
    1 point
  36. علامہ محمّد نجم مصطفائی کی کتاب وفا کا سفر سے اقتباس Kitab Mwahib Ul Ladunya Say : Sharah Saheeh Muslim Shareef Say :
    1 point
×
×
  • Create New...